آفٹر شاکس سے اہل روندو پریشان ،سکردو روڈ پر دھر نا کی دھمکی دیدی

g1-8.jpg

روندو (نمائندہ بادشمال) روندومیں آئے روز زلزلے کی شدت میں آضافہ ہوتا جارہا ہے صوبائی حکومت آنکھیں بند کئے اس حساس مسئلہ کہ جانب اپنی توجہ مبذول کرنے سے گریزاں ہیں اس سلسلے میں اتوار کے روز روندو کے زلزلہ متاثرین کے سرکردگان کا ایک ہنگامی اجلاس سکردو میں منعقد ہو جس میں زلزلہ زدگان کو درپیش مسائل پر گفت و شنید اور آئندہ کا لائحہ عمل طے کیا گیا، اجلاس میں بتایا گیا کہ 27 دسمبر 2021 شام 6بجے کے قریب آنے والے زلزلے کے بعد اب تک زلزلے آرہے ہیں اور موجودہ صوبائی حکومت عوام کے نقصانات کے ازالے کیلئے سنجیدہ نہیں اور زلزلہ زدگان کو اب تک فراہم کی جانے والی ریلیف پر شدید تحفظات کا اظہار کیاگیا اور سرکردگان متاثرین زلزلہ زدگان روندو نے متفقہ طور ایک قرارداد منظور کیا جس کا متن درج ذیل ہے کہ روندو کے وہ علاقے جو زلزلہ سے متاثر ہوئے کو سرکاری سطح پر آفت زدہ قرار جائے کیونکہ جیولوجیکل سروے کے مطابق یہاں انسان کارہائش اختیار کرنا خطرے سے خالی نہیں ، یہ کہ تحت سروے عوام کے نقصانات کا فوری طور پر تخمینہ لگاکر اس کا ازالہ کیاجائے اور متاثر علاقوں کے عوام فوری طور پر محفوظ مقامات پر منتقل کرکے انہیں سہولیات فراہم کردی جائے، مسلسل زلزلوں کے جھٹکوں کے باعث جہاں عوام کے رہائشی مکانات ، مویشی خانے، درختان، زرعی اراضی، آبپاشی کا نظام مکمل غیر فعال ہوچکا ہے لہذا فی گھرانا چالیس لاکھ روپے فراہم کییجائیں تاکہ علاقہ مکین متاثر علاقہ کو خالی کر کے اپنی مدد آپ محفوظ مقامات منتقل ہوسکے ،یہ کہ اگر حکومت نے فی الفور مندرجہ بالا مطالبات پر عمل درآمد نہ کرنے صورت میں متاثرین غیر معینہ مدت کیلئے گلگت سکردو روڈ پر ناختم ہونے والا دھرنا دینے پر مجبور ہونگے اور کسی بھی ناخوشگوار صورتحال کی ذمہ داری موجودہ حکومت پر عائد ہوگی ۔

شیئر کریں

Top