ایل پی جی ائیرمکس منصوبہ تکمیل کے مراحل میں ،عوام کورعائتی گیس دینگے،وزیرمملکت

g7-8.jpg

گلگت(بادشمال نیوز)سابق وزیراعلی و صوبائی صدر مسلم لیگ(ن)گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن کا وزیر مملکت برائے آئل اینڈ گیس ڈاکٹر مصدق ملک سے ملاقات۔گلگت بلتستان میں ایل پی جی ائیر مکس پلانٹ کیلئے سوئی ناردرن کمپنی کیساتھ ٹیکنیکل مسائل حل اوررعایتی نرخوں پرگیس کی فراہمی کے حوالے سے تفصیلی گفتگوکی گئی ۔حفیظ الرحمن نے وزیر مملکت کو بتایا کہ سابق وزیراعظم نواز شریف نے گلگت بلتستان کے عوام کو ایل پی جی ائیر مکس پلانٹ کا تحفہ دیا پراجیکٹ تکمیل کے آخری مراحل میں ہے وزیر مملکت ڈاکٹر مصدق ملک نے سابق وزیراعلی حفیظ الرحمن سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ گلگت بلتستان کے عوام کی بھرپور خدمت جاری رکھیں گے۔ایل پی جی ائیر مکس پلانٹ کے تمام مسائل مختصر مدت میں حل کریں گے۔آج وفاق میں عوام کی نمائندہ,عوام دوست اور ترقی پسند حکومت موجود ہے عایتی نرخوں پر گیس فراہمی کی یقین دہانی کراتا ہوں۔ نواز شریف نے پورے پاکستان میں ایل پی جی ائیر مکس پلانٹ کے گیارہ منصوبے دیئے۔سابق سلیکٹڈ وزیراعظم عمران خان نیازی نے 10 منصوبے ختم کردیئے۔ گلگت بلتستان میں فضائی آلودگی سب سے بڑا انسائی مسئلہ ہے جس کے باعث گلگت بلتستان کے قیمتی ذخائر گلیشئیرز کو نقصان پہنچ رہا ہے آبادی بڑھ رہی ہے گاڑیوں کی آمدورفت میں انتہائی اضافہ ہوچکا ہے سیاحوں کی آمد سے بھی آلودگی میں اضافہ ہورہا ہے سردیوں میں بے تحاشا لکڑیوں کو استعمال جنگل کی کٹائی سے بھی فضائی آلودگی میں بھرپور اضافہ ہورہا ہے۔لہذافضائی آلودگی کو کم کرنے اور ماحول کو صاف رکھنے کیلئے۔مسلم لیگ (ن) سابق حکومت نے تمام اضلاع میں ویسٹ منیجمنٹ کمپنیاں بنائیں اور گرین گلگت بلتستان کیلئے ضروری سمجھتے ہوئے ماحول دوست پائیلٹ پروجیکٹ ایل پی جی ائیر مکس پلانٹ کا تحفہ دیا اس اہم عوامی منصوبے کے تکمیل اور کامیاب ہونے کے بعد تمام اضلاع کے ہیڈکوارٹر تک توسیع دینا وقت کی اہم ضروت ہے۔ گلگت بلتستان کو فضائی آلودگی سے بچایا جاسکے اور جنگلات کی کٹائی میں کمی اور بجلی کے استعمال کی بچت ہو اور گلیشئیرز محفوظ ہوں،سابق وزیراعلی گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے بتایا کہ پاکستان بھر میں بجلی کے مد میں سب سبسڈی دی جاتی ہے۔سرکلر ڈیڈ میں گلگت بلتستان شامل نہیں۔ گلگت بلتستان نیشنل گریڈ میں بھی شامل نہیں ہے ہم اپنی بجلی خود بناتے ہیں۔لہذا گلگت بلتستان کے عوام کو ایل پی جی ایئر مکس پلانٹ میں سبسڈی دی جائے۔وزیر مملکت ڈاکٹر مصدق ملک نے بتایا کہ پونے چار سال میں سابق وفاقی حکومت نے ایل پی جی کا کوئی نیا معاہدہ نہیں کرسکے اور نہ بروقت درآمد کرسکے جس کی وجہ سے آج ملک ایل این جی کے حوالے سے مشکلات میں ہے۔ مسلم لیگ (ن) کی وفاقی حکومت ایل این جی کی کمی کے خاتمے کیلئے کوشاں ہے۔وزیراعظم پاکستان محمد شہباز شریف کچھ دنوں میں قطر کا دورہ کررہے ہیں۔ہم جلد ایل این جی کے نئے معاہدے کررہے ہیں۔ جب تک اس منصوبے کی تکمیل ہوگی ملک میں ایل این جی بحران کا بھی خاتمی ہوگا۔ایل این جی دستیاب ہوگی۔اور اس گیس کو رعایتی نرخوں میں گلگت بلتستان کے عوام کو دیا جائیگا۔

شیئر کریں

Top