بلدیاتی انتخابات کی تیاریاں مکمل(تاخیرمناسب نہیں،حکومت اپنے عمل میں تیزی لائے،چیف الیکشن کمشنر

Untitled-1-copy-12.jpg

اسلام آباد(بادشمال نیوز)چیف الیکشن کمشنر گلگت بلتستان راجہ شہباز خان نے کہا ہے کہ بلدیاتی انتخابات کے حوالے سے ہماری تیاری مکمل ہے،2 دسمبر 2021 کو بلدیاتی انتخابات کے حوالے سے چیف سیکرٹری کے نام 8 صفحات پر مشتمل لیٹر بھی بھجوا چکے ہیں۔الیکشن کمیشن گلگت بلتستان کے لیٹر کی روشنی میں بورڈ آف ریونیو نے حلقوں کی حد بندی کے حوالے سے تمام کمشنرز اور ڈپٹی کمشنرز کو بھی لیٹر جاری کردیا ہے۔شعبہ تعلقات عامہ الیکشن کمیشن گلگت بلتستان کے مطابق چیف الیکشن کمشنر گلگت بلتستان راجہ شہباز خان نے مزید کہا ہے کہ اس کے باوجود بلدیاتی انتخابات میں تاخیر مناسب بات نہیں۔کسی بھی معاشرے یا جمہوری نظام میں بلدیاتی ادارے ایک نرسری کا درجہ رکھتے ہیں۔ رواں سال ہر حال میں بلدیاتی انتخابات کروائے جائیں گے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ حدبندی اور حلقہ بندی کے بعد ووٹرز فہرست کی تیاری کے مرحلے کا آغاز ہوگا،اس کے فورا بعد ہی انتخابات ہونگے جس کیلئے الیکشن کمیشن پوری تندہی کے ساتھ کام کررہا ہے۔انہوں نے مزید کہا ہے کہ گلگت بلتستان کے تینوں ڈویژنز کے کمشنرز اور ڈپٹی کمشنرز کو چاہئے کہ وہ بلدیاتی ایکٹ 2014 کی روشنی میں یونین کونسلز،ٹاون کمیٹیوں،ضلع کونسلز،تحصیل کونسلز،سٹی کارپوریشن،میونسپل کارپوریشن،میونسپل کمیٹیوں،موضعات کے اعدادوشمار،علاقائی حدبندی سمیت دیگر امور مکمل کرائے جائیں اور دیگر معلومات پر مشتمل تفصیلی نقشہ جات تیار کریں،ان کا مزید کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن گلگت بلتستان سیکریٹریٹ کی جانب سے جاری لیٹر میں واضح طور پر لکھا گیا ہے کہ گلگت بلتستان آرڈر 2018 کے آرٹیکل 114 کے مطابق بلدیاتی انتخابات ناگزیر ہیں،خط میں انتخابی اصلاحات ایکٹ 2017 کے شقوں کے حوالے بھی دیئے گئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ خط میں چیف کورٹ گلگت بلتستان کے 24 اپریل 2021 کے جلد بلدیاتی انتخابات کرانے کے فیصلے کا بھی حوالہ ہے۔اب گلگت بلتستان کی صوبائی حکومت کو چاہئے کہ وہ بلدیاتی انتخابات کے انعقاد کے حوالے سے اپنے عمل میں تیزی لائیں تاکہ انتخابات کے انعقاد سے خطے کی تعمیر وترقی کا عمل مزید بہتری کی جانب بڑھ سکے۔

شیئر کریں

Top