تنخواہ میں اضافہ ،گورنرنے بل واپس بھجوادیا،ممبراسمبلی میں نیاتنازعہ پیدا

12345-222.jpg

گلگت(بیورو رپورٹ)گلگت بلتستان اسمبلی ارکان اپنی تنخواہوں میں اضافے کا قانون منظور کرانے میں ناکام ہو کر رہ گئے۔گلگت بلتستان اسمبلی نے ڈیڑھ ماہ قبل اپنی تنخواہوں میں دس فیصد اضافے کا قانون منظور کر لیا تھا مگر بعض افسران کے اعتراضات کے ساتھ گورنر کو منظوری کے لیے بھجوایا تھا جسکے باعث کئی ہفتے گزر جانے کے باوجود بل کی منظوری کے لیے پیش رفت نہ ہوسکی۔بتایا جاتا ہے بل کو گورنر سیکرٹریٹ کو واپس کرنے کے بعد تاحال التوا کا شکار ہے گورنر سیکرٹریٹ کے مطابق بل سے منسلک نوٹ میں اسمبلی سیکرٹریٹ کے ایک افسر نے خود کئی اعتراضات اٹھائے ہیں جسکی بنیاد پر بل واپس اسمبلی بھجوا دیا گیا ہے۔اس صورتحال سے ممبران اسمبلی اور ماتحت افسران میں نیا تنازعہ کھڑا ہو گیا ہے ۔جس کی وجہ سے اراکین اسمبلی تمام کوششوں کے باوجود اپنی تنخواہوں پر اضافے کے فیصلے پر عمل درآمد کرانے میں ناکام ہو کر رہ گئے ہیں۔بتایا جاتا ہے کہ بل کے محرک ارکان کو ماتحت عملے نے قانونی مسودے کو ازسر نو طے شدہ عمل سے گزار کر دوبارہ پاس کر کے کی تجویز دے رہے ہیں

شیئر کریں

Top