مسائل حل کیلئے عوام سڑکوں پر آگئے……اداریہ

گلگت بلتستان کے عوام ہمیشہ ہی بنیادی ضروریات کی عد م دستیابی کے خلاف سراپا احتجاج نظر آئے اب سے چند دن پہلے سکردو کے رہائشیوں نے بجلی کی طویل لوڈشیڈنگ ،گندم کی عدم دستیابی اور دیگر مسائل کے حوالے سے احتجاجی ریلی نکالی اس موقع پر مقررین کا کہنا تھا کہ سرکاری ہسپتالوں کی ابتر حالت بہتربنانے سے تبدیلی سرکار مکمل ناکام نظر آرہی ہے اس کے علاوہ گلگت بلتستان کے دیگر اضلاع میں بھی عوام لوڈشیڈنگ سے عاجز نظر آرہے ہیں حالیہ دنوں گلگت بلتستان میں گندم کی قلت اور ناقص آٹا کی فراہمی پر بھی ارباب اختیارکے کان پر جوں تک نہیں رینگ رہی بوڑھے خواتین بچے آٹے کے حصول کیلئے صبح سے ہی آٹا ڈیلرز کی دکانوں کے باہر گھنٹوں انتظار کرنے پر مجبور نظر آرہے ہیں صوبائی حکومت نے بجلی کی لوڈشیڈنگ میں کمی کے لیے کرائے پر جنریٹرزتو منگوا لئے مگراس کے باوجود لوڈشیڈنگ میں کمی واقع نہیں ہورہی دوسری جانب صوبائی حکومت اپنی کارکردگی کے بلند وبانگ دعوے کرتے تھکنے کا نام ہی نہیں لے رہی جبکہ عوام بنیادی ضروریات کے لیے دردر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہوکر رہ گئے ہیں صوبائی دارالحکومت گلگت سمیت کئی علاقوں میں عوام کو پینے کا صاف پانی بھی میسر نہیں اس ساری صورتحال پروزیراعلیٰ اور متعلقہ محکمے کے وزراء اور صوبائی سیکرٹریزکوایکشن لینا چاہیے تھا مگر سب ہی اپنے اپنے کاموں میں مصروف نظر آرہے ہیں صوبائی وزراء کا عالم یہ ہے کہ وہ عوام کا فون اٹھانے سے بھی اجتناب کررہے ہیں جبکہ ان کو تفویض شدہ محکموں کے حوالے سے بھی بے خبر ہونے سمیت لگژری گاڑی اور مراعات ملنے پر وہ شاید عوامی مسائل کو بھول چکے ہیںگزشتہ روزخطاب کرتے ہوئے سول سوسائٹی کے نمائندوں نے کہا کہ حکمران گرم علاقوں میں روپوش عوام مسائل کے دلدل میں پھنس چکے ہیںآٹا دستیاب ہے نہ بجلی مل رہی ہے تجارت تباہ اورہسپتال بھی لاورث ہوگئے ہیں عوام کوصاف پانی بھی میسر نہیں لوگ جائیں تو کہاں جائیں کوئی پرسان حال ہی نہیں گلگت بلتستان لاوارث ہوگیا جبکہ محکمہ خوراک نے کمیشن پر آٹا ڈیلرز مقرر کئے ہیں جو فلورملز کو آٹا بلیک میں فروخت کرکے سیکرٹری سے لیکروزیر خوراک تک کمیشن پہنچاتے ہیں محکمہ خوراک کا سیکرٹری انتہائی نااہل ہیں جسے فوری طور پر ہٹایا جائے گلگت بلتستان میں جب سے تحریک انصاف کی حکومت قائم ہوئی ہے آٹا غائب ہے اور جو مل رہا ہے وہ کھاکر عوام بیمار ہورہے ہیں انہوںنے کہا کہ گلگت شہر مسائلستان بن گیا ہے کروڑوں روپے ڈیزل جنریٹرز پر اڑائے جارہے ہیں مگر تاجروں کو دن کے وقت بجلی نہیں ملتی ہے انہوںنے کہا کہ محکمہ برقیات گلگت بلتستان میں سمارٹ میٹرز کے نام پر دھندا کررہا ہے ہنزل پاور منصوبے کا ٹینڈر ایف ڈبلیواو نے حاصل کیا اب اس پر بھی ہیلے بہانے تلاش کئے جارہے ہیں محکمہ برقیات میٹر کی سکیمیں لیکر آتا ہے عجب کرپشن کی غضب کہانی پر کوئی ٹس سے مس نہیں ہے انہوںنے کہا کہ شہر اقتدار کے ہسپتالوں میں ادویات کی شدید قلت ہے اور لوگوں کو سہولیات میسر نہیں ہیں حکام گرم علاقوں میں موسم انجوائے کررہے ہیں اس کے علاوہ گلگت کے پشتنی باشندے سڑکوں پر آگئے احتجاجی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے پشتنی تنظیم گلگت کے صدراور دیگر نے کہا کہ ایک سوچی سمجھی سازش کے تحت گلگت کے پشتنی باشندوں کے ساتھ زیادتی کی جارہی ہے ہمارے زمینوں پر انتظامیہ اور محکمہ مال کے عملہ لینڈ مافیا اور غیر کھیوڑہ داروں کو انتقال سے کرکے ہمارے حقوق کو غصب کیا جارہا ہے جبکہ حکومت نے پہلے ہی ہزاروں کنال اراضی بغیر معاوضے کے سرکاری اداروں کو دے چکی ہے گزشتہ روزگلگت کے پشتنی باشندوں نے جن مشکلات اورشکایات کا ذکر کیا صوبائی حکومت کی ذمہ داری بنتی ہے کہ عوام کے جائز مطالبات حل کرکے دکھائے اس کے علاوہ سول سوسائٹی نے جن عوامی مسائل کا ذکرکیا صوبائی حکومت کو سنجیدگی سے اسے حل کرنے کے لیے ہر ممکن اقدامات کرکے دکھانے ہونگے اورجو الزامات ان نمائندوں نے حکومت پر لگائے اس حوالے سے عوام جاننا چاہتے ہیں کہ سردیوں میں صوبائی وزراء اور اہم شخصیات کے اسلام آباد اورملک کے دیگرشہروں میں طویل ڈیرے کیاگلگت بلتستان کے عوام کے مسائل سے چشم پوشی نہیں گزشتہ ایک سال کے دوران عوامی مسائل میں ذرہ برابر بھی کمی دیکھنے میں نہیں آرہی وزیروں مشیروں اورکوآرڈینیٹرزکی ایک بڑی فوج بنانے کے باوجود اگر وزیراعلیٰ پراپوزیشن کی جانب سے صبح وشام تنقید کے نشتربرسائے جارہے ہیں تو یقیناً یہ اس فوج کی نااہلی اورعدم کارکردگی کہا جائے تو غلط نہیں ہوگا اگر یہ افراد اہم عہدے لینے کے بعد صرف جھنڈے والی گاڑی میں گھومنے کو ہی سب کچھ سمجھتے ہیں تو آئندہ انتخابات میں گلگت بلتستان کے عوام ایسے نمائندوں کی طرف دیکھنا بھی گوارہ نہیں کرینگے جس کی وزیراعلیٰ اوران کی ٹیم کی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ عوامی مسائل حل کرنے کے لیے صرف طفل وتسلیوں پر گزارہ کرنے کے بجائے کچھ کر کے دکھائیں تاکہ عوام محسوس کریں کہ انہیں ریلیف ملنا شروع ہوگیا ہے

شیئر کریں

Top