ڈگریاںبانٹناکافی نہیں،طلبہ کوہنرمندبناناہوگا،ڈاکٹرنعیم

g4.jpg

کنکریٹ کا جنگل بڑھانے کے بجائے زراعت اور شجر کاری کوفروغ دینا ہوگا
سکردو(بادشمال نیوز)یونیورسٹی آف بلتستان سکردو میں جامعہ بلتستان محکمہ زراعت بلتستان ریجن، ای ٹی آئی، ایفاد ,ایگری فارمر سپورٹ فنڈ ایشن فارمر ایسوسی ایشن کے اشتراک سے کسانوں کی ریجنل کاروباری تنظیم کی تشکیل کی مناسبت سے خصوصی تقریب ہوئی وائس چانسلر یونیورسٹی آف بلتستان سکردو پروفیسر ڈاکٹر محمد نعیم خان اور سابق رکن گلگت بلتستان اسمبلی عمران ندیم تقریب کے مہمان خصوصی تھے تقریب میں بلتستان بھر سے کسانوں نے بھر پور شرکت کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے جامعہ بلتستان کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد نعیم خان نے کہا کہ جامعہ ہذا میں ہر ہفتے کسی عنوان پر سیمینار ہوتے ہیں ،ہماری کوشش ہے کہ ہم تمام شعبہ جات کے ساتھ مربوط روابط استوار رکھیں ہمیں کنکریٹ کا جنگل بڑھانے کے بجائے زراعت اور شجر کاری کوفروغ دینا ہوگا زرعی اور باغبانی کے شعبے کی ترقی کے لیے ہرکسی کو اپنا عملی کردار اد کرنے کی ضرورت ہے جامعہ بلتستان زراعت اور باغانی کے شعبے کی بہتری کے لیے اپنا ہر ممکن کردار ادا کرنے کو تیار ہے ہم جامعہ کے بچوں کو مختلف دفاتر میں انٹرن شپ کے طور ایڈجسٹ کر سکتے ہیں جامعہ بلتستان پاکستان کی واحد یونیورسٹی ہے جو پچھلے تین سالوں سے ایک دن بھی بند نہیں ہوئی اور کورونا کے باوجود درس و تدریس کا سلسلہ جاری رہا جامعہ ہذا بلتستان لیول پہ بلتستان چمبر آف کامرس کی تشکیل کے لیے اپنا کردار ادا کر سکتی ہے یونیورسٹی کا مینڈیٹ بہت وسیع ہے نوجوانوں نے ہی اس ملک کو آگے لے کے جانا ہے ہم کسانوں کو پلٹ فارم مہیا کرینگے ہم ڈگریاں بانٹ بانٹ کے لوگوں کو بے روزگار نہیں کرینگے بلکہ ہماری کوشش ہے کہ ہم طلبا کو ہنر اور عملی کام سکھائیں تاکہ طلبا عملی زندگی میں اپنا حصہ ڈال سکیں، روزگار کے مواقع پیدا کرنے کی ضرورت ہے اور روزگار کے مواقع پیدا کرنے کے لیے تجارتی سرگرمیوں کا فروغ ضروری ہے ہم کسانوں کے لیے سٹیڈی ٹورز کا اہتمام کرینگے یونیورسٹی معاشرتی ترقی کے لیے ایک تھنک ٹینک کے طور پر کام کرے گی۔

شیئر کریں

Top