غیرقانونی بھرتیاں،زائداثاثے،اکرم درانی کے حفاظتی ضمانت میں15جنوری تک  توسیع

اسلام آباد:اسلام آباد ہائی کورٹ نے اپوزیشن رہنمائوں اکرم خان درانی  کی  حفاظتی ضمانت میں15جنوری تک  توسیع کردی  ۔

بدھ کو  چیف جسٹس اطہر من اللہ اور جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب پر مشتمل دو رکنی بینچ نے سابق وفاقی وزیر اکرم خان درانی کی پی ایچ اے میں غیر قانونی بھرتیوں اور آمدن سے زائد اثاثہ جات سے متعلق کیس پر سماعت کی۔

عدالت کے استفسار نیب پراسیکیوٹر نے بتایا کہ اکرم درانی کے وارنٹ گرفتاری اثاثہ جات کیس نہیں بلکہ غیرقانونی بھرتیوں کی تحقیقات میں جاری ہوئے کیونکہ اختیارات نہ رکھتے ہوئے بھی اکرم درانی نے غیر قانونی بھرتیاں کی ہیں۔جس پر جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ اختیارات کا غلط استعمال یہ نہیں کہ آپ کسی سے سفارش کر رہے ہیں،

جن کے پاس اتھارٹی تھی انہیں تو نیب آرڈیننس کے ذریعے تحفظ دے دیا گیا ہے،اگر اختیار رکھنے والے کو قانون نے تحفظ دیا ہے تو دوسرے کو گرفتار کیسے کیا جا سکتا،معاملے پر نیب کو ہمیں مطمئن کرنا ہوگا۔

بعد ازاں عدالت نے بیوروکریٹس کو تحفظ دینے پر نیب سے وضاحت طلب کرتے ہوئے حکم دیا کہ اکرم درانی کیخلاف اگر کرپشن کا کیس ہے تو تفتیش میں کرپشن نظر آنی چاہئے،کرپشن نکلے تو پھر بے شک انہیں چودہ سال کی سزا دلوائیں،بعدازاں عدالت نے اکرم درانی کی عبوری ضمانت میں پندرہ جنوری تک توسیع کردی۔

شیئر کریں

Top