بغداد کے ایئرپورٹ پر امریکی حملہ، ایرانی القدس فورس کے سربراہ جنرل قاسم سلیمانی سمیت8جاں بحق

بغداد:عراق کے دارلحکومت بغداد کے ایئرپورٹ پر امریکی راکٹ حملے میں ایران کی القدس فورس کے سربراہ جنرل  قاسم سلیمانی سمیت8 افراد جاں بحق ہو گئے۔

امریکی میڈیا کا کہنا ہے کہ بغداد کارگو ٹرمینل کے قریب سڑک پر 2گاڑیوں کو راکٹ حملوں کا نشانہ بنایا گیا۔ جنرل سلیمانی کے بغداد ایئر پورٹ پر اترتے ہی امریکی فوج کی جانب سے راکٹ حملہ کر کے انہیں نشانہ بنایا گیا۔

عراقی  حکام نے کہا کہ بغداد ایئرپورٹ پرداغے گئے 3راکٹ کارگوہال کے قریب گرے، راکٹ حملے سے 2کاروں کوآگ بھی لگی ۔ایرانی ٹی وی نے بغداد ایئر پورٹ پر امریکی حملے میں جنرل سلیمانی کے شہید ہونے کی تصدیق کی ہے۔

امریکا نے بغداد ایئر پورٹ کے قریب 2اہداف کو نشانہ بنایا تھا، عراق کی پاپولر موبائلائزیشن فورس نے حملے میں اپنے 6افراد کی موت کی تصدیق کی ہے اور بتایا ہے کہ راکٹ حملے میں 2مہمان بھی مارے گئے۔عراق کی پاپولر موبائلائزیشن فورس کا یہ بھی  کہا کہ اس حملے میں ایران کی القدس فورس کے سربراہ جنرل سلیمانی کے علاوہ عراق کی پاپولرموبائلائزیشن فورس کے ڈپٹی کمانڈر ابومہدی المہندس بھی جاں بحق ہوئے ہیں۔

امریکی سینیٹر لنزے گراہم نے بھی ایرانی جنرل سلیمانی کو نشانہ بنائے جانے کی تصدیق کر دی ہے جبکہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بھی جنرل سلیمانی پر حملے کی تصدیق کرتے ہوئے امریکی پرچم ٹویٹ کیا ہے۔عراقی پاپولر موبائلائزیشن فورس نے الزام عائد کیا ہے کہ امریکا اور اسرائیل ابومہدی المہندس اور قاسم سلیمانی پر حملے میں ملوث ہیں۔

ایرانی وزیرخارجہ جواد ظریف کا اس متعلق کہا کہ امریکا کی جانب سے حملے میں جنرل سلیمانی شہادت ایک انتہائی خطرناک اوراحمقانہ حرکت ہے، امریکا اپنی بدمعاش مہم جوئی کے تمام نتائج کی ذمہ داری خود برداشت کرے گا، جنرل سلیمانی پر حملہ عالمی دہشت گردی ہے، امریکا کو اس حرکت کے نتائج بھگتنا ہوں گے۔

شیئر کریں

Top