ٹکٹوں کی تقسیم پی ٹی آئی بلتستان کے سینئر اور نظریاتی رہنماؤں سے ہاتھ کر گئی

PTI-1280x720-1.jpg

الیکٹیبلز اور نئے سیاسی اتحاد نے کئی پرانے سیاستدانوں سے میچ سے باہر کردیا،معاہدے کاغذکاٹکرابن کررہ گئے
پارٹی میں پڑنے والی پھوٹ کو ملحوظ خاطر رکھ کر فیصلے کرنے کے بجائے صرف الیکشن جیتنے کو ترجیح دی گئی
سکردو( تجزیاتی رپورٹ) پی ٹی آئی کی ٹکٹ تقسیم ،سینئر ہاتھ ملتے رہ گئے ،جونیئر ٹکٹ کے حقدار ٹھہرے ،الیکٹیبلز اور نئے سیاسی اتحاد نے کئی پرانے سیاستدانوں سے میچ سے باہر کردیا ، انٹرویو کے موقع پر لکھنے والے معاہدوں پر عمل در آمد ہو ں گے یا اسے کاغذ کا ٹکڑا قرار دیکر آزاد لڑیں گے ، ٹکٹوں(باقی صفحہ7بقیہ نمبر13)
کی تقسیم موضوع بحث بن کر رہی گئی ،تجزیہ نگاروں کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی کی جانب سے کئی ماہ کی ورکنگ کے بعد جاری کردہ ٹکٹ نے کئی ایسے سیاستدانوں کو میچ سے مکمل طور پر باہر کردیا ہے جس کے باعث کئی کھلاڑی ہاتھ ملتے رہ گئے ہیں تجزیہ نگاروں کا کہنا ہے کہ ٹکٹ کی تقسیم کے لئے بننے والی بورڈ کی جانب سے پارٹی میں پڑنے والی پھوٹ کو ملحوظ نظر رکھ کر فیصلے کرنے کے بجائے صرف الیکشن جیتنے کو ترجیح دی ہے جس کے باعث پارٹی میں پائی جانے والی اندورنی خلفشار اب کھل کر سامنے آسکتے ہیں جس کا اثر الیکشن پر براہ راست پڑیں گے ،تحریک انصاف کی جانب سے کئے گئے اعلان کے باعث کئی پرانے کھلاڑی شیخ نثار سرباز ،زاکر ایڈوکیٹ ،وزیر سلیم سمیت متعدد سیاست دان میچ سے باہر ہوگیا ہے تاہم وہ اس میچ سے باہر رہنا ہرگز پسند نہیں کریں گے او ر آزاد حیثیت سے الیکشن لڑنے کی صورت میں پی ٹی آئی ہی کے ووٹ بینک متاثرہوں گے جس کا فائدہ دیگر پارٹیوں کے لئے ہوگا ادہر قانونی ماہرین کا کہنا ہے الیکشن ایک جمہوری عمل ہے اور انسانی حقوق کے زمرے میں آتا ہے اس لئے اس حوالے سے کسی پر کوئی جبر مسلط نہیں کرسکتا اس لئے اگر کسی نے اسٹم پیپر پر دستخط ہی کیوں نہیں کیا ہو اس کی کوئی قانونی حیثیت نہیں ہوگی اس لئے قوی امکان ہے کہ ٹکٹ سے محروم رہ جانے والے سیاستدان یاآزاد حیثیت سے الیکشن لڑیں گے بصورت دیگر گوشہ نشینی اختیار کریں گے دونوں صورتوں میں نقصان پی ٹی آئی کو ہی ہوں گے۔
پی ٹی آئی ہاتھ

شیئر کریں

Top