گلگت بلتستان کو جلد عبوری آئینی صوبہ بنائیں گے،ثوبیہ مقدم

150711134147_sobia_jabeen_439x549__nocredit.jpg

تحریک انصاف اقتدار میں آکر عوام کی محرومیوں کا ازالہ کرے گی ،اجلاس سے خطاب
چلاس (ڈسٹرکٹ رپورٹر)سابق صوبائی وزیر ثوبیہ جے مقدم نے “جانثاران ثوبیہ مقدم” کے عہدہ داروں کی نشست سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کیڈٹ کالج چلاس گوہرآباد نے (باقی صفحہ7بقیہ نمبر37)

2008 میں تعمیر ہونا تھا مگر ہو نہیں سکا۔ اللہ تعالی کے فضل و کرم سے ہم نے کر دیکھایا۔ قراقرم یونیورسٹی دیامر کیمپس، گوہرآباد تحصیل، میری محنت اور جدوجہد کا نتیجہ ہے۔ جن سے پورا دیامر مستفید ہو رہا ہے۔ گلگت بلتستان کے آئینی مسئلہ پر مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی نے گلگت بلتستان اسمبلی سے متفقہ قرارداد منظور کی، مسلم لیگ (ن) کی سابقہ وفاقی حکومت نے سرتاج عزیز کمیٹی سے سفارشات مرتب کروا کر اب جب اپوزیشن میں آئے تو خود مرتب کی ہوئی سفارشات سے رو گردانی کرتے ہوئے مخالفت کی۔ جس پر مجھ سمیت پوری گلگت بلتستان کی قوم کو بہت افسوس ہوا ہے۔ جن پارٹیوں میں گلگت بلتستان کے عوام کی محرومیوں کا احساس نہ ہو اور اپنے ذاتی اور سیاسی مقاصد کی بڑھوتری کیلئے آگے بڑھتے ہوں ایسی پارٹی کا حصہ دار رہنا گلگت-بلتستان کے ساتھ دشمنی کرنا ہے۔تحریک انصاف کی مرکزی حکومت اور عہدہ داروں کیساتھ اس امید اور مطالبے کیساتھ شامل ہوئی ہوں کہ وہ گلگت بلتستان کو جلد از جلد عبوری آئینی صوبہ بنایئں گے۔ عبوری آئینی صوبہ ہمارا حق ہے۔ ہم نیوفاقی حکومت اور مقتدر حلقوں سے بارہا مطالبہ کیا ہے اور پر امید ہیں کہ وہ گلگت بلتستان کو عبوری آئینی صوبہ بنا کر ہماری محرومیوں کا ازالہ کریں گے۔
ثوبیہ مقدم

شیئر کریں

Top