شگر میں تحریک انصاف اور ن لیگ آمنے سامنے پیپلز پارٹی بھی سرگرم

PTI-vs-PMLN-vs-PPP.jpg

مجلس وحدت کی پوزیشن کھل کر سامنے نہیں آسکی ،مجلسی ووٹرگو مگو کا شکار ہو گئے ہیں،دو جماعتوں کی نورا کشتی کا فائدہ پیپلز پارٹی سمیٹے گی
ن لیگ کی جانب سے شگر کے کونے کونے میں ووٹروں کو رام کرنے کی کوشش جاری ہے، زیادہ تر ووٹ تحریک انصاف کا متاثر کیا جارہا ہے
شگر( تجزیاتی رپورٹ)شگر کی دو سیاسی جماعتیں تحریک انصاف اور مسلم (باقی صفحہ7بقیہ نمبر43)
لیگ ن آمنے سامنے ،الیکشن کمپئین سوشل میڈیا پر جبکہ پیپلز پارٹی نے اندرون خانہ محاز گرم کردی ،مجلس وحدت کی پوزیشن کھل کر سامنے نہیں آسکی ،مجلسی ووٹرگو مگو کا شکار ،تجزیہ نگاروں کا کہنا ہے ایسی صورتحال رہنے کی صورت میں اصل مقابلہ صرف تین جماعتوں کے درمیان ہوگا اوردو جماعتوں کی جانب سے کھیلی جانے والی نورا کشتی کا فائدہ پیپلز پارٹی سمیٹے گی بتایا جاتا ہے کہ مسلم لیگ ن کی جانب سے شگر کے کونے کونے میں ووٹروں کو رام کرنے کی کوشیش جاری ہے اور زیادہ تر ووٹ تحریک انصاف کا متاثر کیا جارہا ہے دوسری جانب تحریک انصاف کی بھی کوششیں جاری ہے اور مسلم لیگ ن کے ساتھ ساتھ پیپلز پارٹی کے ووٹر کو کاٹنے کی کوشش کی جارہی تاہم پیپلز پارٹی کے ووٹ بینک جتنا متاثر نہیں ہوا ہے جتنا شروع کیا جارہا ہے کیونکہ پیپلز پارٹی نے گزشتہ انتخابات کی نسبت حکمت عملی تبدیل کردی ہے اور پارٹی کے تھینک ٹینک کے مشوروں پر عمل کرتے ہوئے الیکشن کمپین کو پارٹی کی حدتک محدود رکھا ہوا ہے او ر اسے میڈیا کی زینت کم سے کم بنانے کی حکمت عملی پر کام جاری ہے تجزیہ نگاروں کا کہنا ہے کہ اگر پیپلز پارٹی کی یہی حکمت عملی کامیاب رہی تو الیکشن جیتنے میں مشکل نہیں ہوں گے کیونکہ جس انداز میں پیپلز پارٹی اندورن خانہ اپنا پتہ چلا رہی اس کی تہہ تک دوسری پارٹیاں پہنچنے کے بجائے ہوائی فائرنگ کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے اور سوشل میڈیا پر الیکشن کمپین تیز کیا ہوا ہے تجزیہ نگاروں کا کہنا ہے سوشل میڈیا پر وہ لوگ بڑھ چڑھ کر الیکشن کمپین چلا رہے ہیں ان کا ووٹ ہی کاسٹ نہیں ہونا ہے کیونکہ یہ سوشلسٹ سات سمندر پار بیٹھے ہوئے ہیں اور انٹر نیٹ کی فراوانی کی وجہ سے کچھ بھی لکھ لیں سوشل میڈیا پر کوئی پابندی نہیں ہے اس لئے بعض اوقات ایسی اخلاق سے گری ہوئی پوسٹ بھی کرتے ہیں جس سے پارٹی کو فائدہ کے بجائے نقصان اٹھانا پڑتا ہے مگر سوشلسٹ حضرات کو اس بات کی کوئی فکر نہیں ہے تجریہ نگاروں کا کہنا ہے کہ مسلم لیگ ن بھی ایک منظم انداز میں الیکشن کمپین کی طرف جارہی ہے اگر یہی سلسلہ رہا تو مسلم لیگ ن دوسری پوزیشن پر بھی آسکتا ہے ۔
پیپلز پارٹی

شیئر کریں

Top