مرکزی انجمن تاجران کی بیکری اشیاء اور گوشت کی قیمت میں اضافہ کیلئے انتظامیہ کو ایک ہفتہ کی ڈیڈلائن

download-2020-10-06T183627.202.jpg

گلگت انتظامیہ کمپنیوں کی معیاری اشیا کو دیکھتے ہوئے معیاری قیمت مقرر کرے کم قیمت پر اعلی کولٹی کی اشیا کی ڈیمانڈ تاجروں کے معاشی قتل کے مترادف ہے
ہم نے ملک کے دیگر علاقوں سے مہنگا مال منگواکر سستا ہی فروخت کرنا ہے تو بہتر ہے کاروبار بند کرکے گھروں میں بیٹھ جائیں،تاجر رہنماؤں کا اجلاس سے خطاب
گلگت (سپیشل رپورٹر) مرکزی انجمن تاجران کا بڑا اجلاس، بیکری کی اشیا اور گوشت کی قیمتوں میں اضافہ کیلئے انتظامیہ کو ایک ہفتے کی دیڈ لائن، معیاری اشیا کی فراہمی کا عزم، تاجروں کے ساتھ ہتک آمیز رویہ اور بے جا جرمانوں کا سلسلہ ختم کرنے کا مطالبہ کیا گیا مرکزی انجمن تاجران کا ایک بڑا اجلاس گلگت میں منعقد ہوا جس میں مرکزی انجمن تاجران کی صوبائی قیادت سمیت درجنوں تاجروں نے شرکت کی اجلاس میں سابق چیئر مین عوام ایکشن کمیٹی و امیدوار حلقہ نمبر ایک گلگت مولانا سلطان رئیس نے بھی شرکت کی اجلاس میں تاجروں کو درپیش مسائل، انتظامیہ کے تاجروں کے ساتھ سلوک، غیر معیاری(باقی صفحہ7بقیہ نمبر 46)
اشیا خورد ونوش،غریب مزدور طبقہ کی مشکلات سمیت پرائس کنٹرول کمیٹی کی کارکردگی اور ملک ملک سمیت گلگت بلتستان میں بڑھتی ہوئی مہنگائی اورکمپنیوں کی جانب سے آنے والے مال میں کم وزن مال کی ترسیل کے معاملات پر گفتگو کی گئی اس دوران تاجران کی جانب سے مختلف تجاویز پیش کی گئیں اور کہا گیا کہ انتظامیہ کمپنیوں کی معیاری اشیا ء کو دیکھتے ہوئے معیاری قیمت مقرر کرے کم قیمت پر اعلی کولٹی کی اشیا کی ڈیمانڈ تاجروں کے معاشی قتل کے مترادف ہے اگر ہم نے مہنگا مال منگواکر سستا ہی فروخت کرنا ہے تو اس سے بہتر کے کہ کاروبار بند کرکے گھروں میں بیٹھ جائیں اعلی کوالٹی کی اشیا کے ریٹ بھی اعلی ہوتے ہیں انہوں نے کہاکہ کوئی تاجر حرام کماکر اپنے بچوں کو حرام نہیں کھلاتاہے ہماری ہمیشہ کوشش رہی ہے منافع کم ہو لیکن مال میں کسی بھی دھوکہ نہ ہو مرکزی انجمن تاجران کے رہنما مسعود الرحمن،حاجی غلام حسین، قاری شیر زمان و دیگر نے تاجروں سے مخاطب ہوکر کہا کہ غیر معیاری اشیا سے گلگت بلتستان کو پاک رکھنے کا عزم رکھتے ہیں غیر معیاری اور مضر صحت اشیا کی خرید و فروخت کرنے والے کسی تاجر کی مرکزی انجمن تاجران سپوٹ نہیں کریگی اس خوبصورت خطے کے عوام کو غیر معیاری اشیا کھلا کر بیماریوں کا شکار نہیں کر سکتے ہیں بلکہ معیاری اشیا کی فروخت سے صحت مند معاشرہ کے قیام میں مدد فراہم کرینگے۔ انہوں نے کہا کہ میدہ، چینی، آئیل،انڈوں سمیت کہ بیکری اشیا کی تیاری میں استعمال ہونے والی اشیا کی قیمت 77فیصد بڑھ گئی ہے جبکہ بیکری اشیا کی قیمت گزشتہ سات آٹھ ماہ سے برقرار ہے جس کی وجہ سے بیکری کا کاروبار کا نقصان اٹھانا پڑ رہاہے جبکہ چھوٹے اور بڑے گوشت کی قیمت بھی سات آٹھ ماہ سے برقرار ہے جبکہ دنیا کی ہر چیز مہنگی ہو گئی ہے جانوروں کی قیمتں آسمان کو چھو رہی ہیں جس کی وجہ سے قصاب مہنگا جانور خرید کر سستا نہیں بیچ سکتے ہیں بیکری اور گوشت کی قیمت بڑھانے کا انتظامیہ سے بارہا مر تبہ مطالبہ کیا لیکن شنوائی نہیں ہوئی اب لئے انتظامیہ کو ایک ہفتے کا ٹائم دے رہے ہیں کہ اس دوران مذکورہ قیمتوں میں اضافہ کرنے سمیت بے جا جرمانوں کی وصولی اور میٹ انسپکٹر کی جانب سے تاجروں کے ساتھ ہتک آمیز رویہ گالم گلوچ اور تاجروں کو مارپیٹ کرنے کا سلسلہ بند کیا جائے بصورت دیگر مطالبات کے حل کیلئے شٹرڈان ہڑتال کرنے پر مجبور ہونگے، اجلاس میں اس بات پر زور دیا گیا کہ تاجر برادری دکانوں میں ایس او پی،صفائی ستھرائی اور اشیا کے معیار کا خاص خیال رکھیں اور انظامیہ سے یہ مطالبہ بھی کیا گیا کہ اشیا خورد و نوش کے معیار کو سونگھ کر چیک کرنے کے بجائے لیبارٹری ٹیسٹ کرایا جائے اور آئندہ لیبارٹری ٹیسٹ کے بغیر کوئی بھی تاجر جرمانہ ادا نہیں کریگا بغیر لیبارٹری ٹیسٹ کے سونگھ کر معیاری کو چیک کرکے جرمانے عائد کرنے سے تاجراان کی بد نامی اور عوام میں بے چینی پھیل رہی ہے، معیاری اشیا کے معاملے میں پوری تاجر برادری انتظامیہ اور عوام کے ساتھ کھڑی ہے، ایک میں کہا گیا کہ چاول کے تھیلوں گزشتہ دنوں 50گرام 100 گرام کم نکلنے کے کچھ و اقعات سامنے آئے جس پر تاجروں پر جرمانے کیلئے گئے اس سے عوام میں یہ تاثر گیا کہ تھیلے میں کئی کلو کم نکلا ہواگا اس پر بھی ہم نے تحقیق کی تو پتا چلا کہ منڈی سے اٹھاکر دور دراز علاقوں میں پہنچا تے ہوئے چاول کے تھیلے 50 / 100 گرام وزن کم ہو جاتاہے آیندہ تمام تاجران تھیلوں میں پیک چاول بھی وزن کرکے فروخت کرینگے۔
ڈیڈ لائن

شیئر کریں

Top