الیکشن میں کلین سویپ کر کے گلگت بلتستان کے عوام کی محرومیوں کا ازالہ کریں گے عمران خان کے ویزن کو سامنے رکھ کر کرپشن سے پاک گلگت بلتستان بنانے کیلئے ہر ممکن اقدامات کرینگے وزیر امور کشمیر

images-76.jpeg

پہلی مرتبہ سب ایک پیج پر گلگت بلتستان عبوری آئینی صوبہ یقینی بلدیاتی انتخابات آئندسال مئی جون میں ہونگے اپوزیشن کے واویلا پر صوبے کا اعلان 15نومبر کے بعد کرنے کا حتمی فیصلہ کیا گیا گنڈا پور
گلگت بلتستان کے صوبے کا فیصلہ ہو چکا تھا مگر اپوزیشن کے احتجاج اور وفاقی حکومت پرانتخابی دھاندلی کے قبل ازوقت الزامات لگانے کے باعث اعلان کو گلگت بلتستان اسمبلی کے انتخابات تک ملتوی کرنا پڑا
ن لیگ کی سابق حکومت نے جھوٹے وعدے کرکے اسمبلی نشستیں توحاصل کرلیں اور اپنا پانچ سالہ دور اقتداربھی مکمل کرلیا لیکن جھوٹے نعروں اور وعدوں کے باعث یہ جماعت گلگت بلتستان میں غیر مقبول سیاسی جماعت بن گئی ہے، بادشمال سے خصوصی بات چیت
اسلام آباد(چیف رپورٹر)وفاقی وزیرا مور کشمیر گلگت بلتستان علی امین گنڈا پور نے باد شمال سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ گلگت بلتستان کو عبوری آئینی صوبہ بنانے سے اب کوئی نہیں روک سکتا ۔صوبے کے لیے ماحول بن چکا پہلی مرتبہ سب ایک پیج پر ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ ہم اپوزیشن کا الیکشن کے حوالے سے چیلنج قبول کرتے ہوئے گلگت بلتستان کو صوبے کا اعلان15نومبراسمبلی انتخابات کے فورا بعد کرینگے ہونا تو یہ چاہیے تھا کہ اپوزیشن ذاتی مفاد کو بالائے طاق رکھ کراجتماعی مفادات کو مدنظر رکھتے ہوئے گلگت بلتستان کے عوام کا ساتھ دیتی بہر حال اپوزیشن کے واویلے پر ہم نے صوبے کا اعلان(باقی صفحہ7بقیہ نمبر2)
انتخابات کے بعد کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا ہے کہ گلگت بلتستان کو صوبہ بننے کے بعد سینیٹ اور قومی اسمبلی میں نشستیں یقینی ہونے کے ساتھ آئندہ سال مئی جون میں بلدیاتی انتخابات بھی کروائیں گے گلگت بلتستان میں 2021ء میں ہونے والے بلدیاتی انتخابات نئے بلدیاتی نظام کے تحت کرائے جائیں گے ۔پاکستان تحریک انصاف گلگت بلتستان کے عوام کا احساس محرومی ختم کرنے کے لیے بااختیاربلدیاتی نظام اور نچلی سطح پر اختیارات کی منتقلی یقینی بنانے کے ساتھ اسمبلی آئندہ مکمل بااختیار ہوگی ۔ تحریک انصاف عمران خان کے ویژن کو سامنے رکھتے ہوئے کرپشن سے پاک گلگت بلتستان بنانے کیلئے ہر ممکن اقدامات کرینگے ۔ن لیگ کی سابق حکومت نے جھوٹے وعدے کرکے اسمبلی نشستیں توحاصل کرلیں اور اپنا پانچ سالہ دور اقتداربھی مکمل کرلیا لیکن جھوٹے نعروں اور وعدوں کے باعث یہ جماعت گلگت بلتستان میں غیر مقبول سیاسی جماعت بن گئی ہے ۔وفاقی وزیرگنڈا پور نے کہا کہ گلگت بلتستان کے صوبے کا فیصلہ ہو چکا تھا مگر اپوزیشن کے واویلااورانتخابی دھاندلی کے قبل ازوقت الزامات کے باعث ہمیں صوبے کے اعلان کو گلگت بلتستان اسمبلی کے انتخابات تک ملتوی کرنا پڑا۔ گلگت بلتستان کے انتخابات میں کلین سویپ کرکے برسر اقتدار آکر عوام کی محرومیوں کا ازالہ کریں گے
گنڈاپور

شیئر کریں

Top