کورونا پر مکمل قابو پانے تک ہمیں احتیاط کرنی چاہیے صدر مملکت

download-2020-10-12T183510.142.jpg

بھارت پاکستان کو توڑنے کی سازش میں ملوث تھا ، مودی نے بھی مشرقی پاکستان میں بھارت کے کردار کا اعتراف کیا ہے
بھارت کی پاکستان مخالف سازشیں آج بھی چل رہی ہیں ،پاکستان کی سیاسی جماعتوں کو سمجھنا ہوگا مولانا عادل پرحملہ باہر سے ہوا
اسلام آباد (آئی این پی )صدر مملکت عارف علوی نے کہا ہے کہ کورونا وباء پر مکمل قابو پانے تک ہمیں احتیاط کرنی چاہیے کبھی کبھی بد احتیاطی سے انسان جیتی ہوئی جنگ بھی ہار جاتا ہے ،بھارت پاکستان کو توڑنے کی سازش میں ملوث تھا ، مودی نے بھی مشرقی پاکستان میں بھارت کے کردار کا(باقی صفحہ7بقیہ نمبر4)
اعتراف کیا ہے ، بھارت کی پاکستان مخالف سازشیں آج بھی چل رہی ہیں ، وہ مختلف طریقوں سے پاکستان میں دہشتگردی کرا رہا ہے ،کراچی کے حالات خراب کرنے میں بھی بھارت ملوث رہا ہے ، پاکستان کی سیاسی جماعتوں کو سمجھنا ہوگا کہ مولانا عادل پرحملہ باہر سے ہوا ہے، حکومت اور اپوزیشن کے درمیان رابطے کا فقدان ہے۔ وہ پیر کو نجی ٹی وی چینل کو خصوصی انٹرویو د ے رہے تھے ۔صدر مملکت عارف علوی نے کہا کہ کورونا پہ مکمل قابو پانے تک ہمیں احتیاط کرنی چاہیے کبھی کبھی بد احتیاطی سے انسان جیتی ہوئی جنگ بھی ہار جاتا ہے ۔ بھارت پاکستان کو توڑنے کی سازش میں ملوث تھا ۔ مودی نے بھی مشرقی پاکستان میں بھارت کے کردار کا اعتراف کیا ہے ۔ بھارت کی پاکستان مخالف سازشیں آج بھی چل رہی ہیں ۔ بھارت مختلف طریقوں سے پاکستان میں دہشتگردی کرا رہا ہے ۔ کراچی کے حالات خراب کرنے میں بھی بھارت ملوث رہا ہے ۔ ایم کیو ایم نے بھی اس کا اعتراف کیا ۔ انہوں نے مولانا عادل خان کے حوالے سے کہا کہ پاکستان کی سیاسی جماعتوں کو سمجھنا ہوگا کہ یہ حملہ باہر سے ہوا ہے ۔ اس کا آلہ کار نہ بنیں کسی کو غدار نہیں کہتا لیکن بھارتی بیانیے کا حصہ نہ بنیںہم سب کو متحد ہونا پڑے گا ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان جیو اکنامک حب بننے جا رہا ہے ۔ بھارت پاکستان کو کامیاب ہوتا نہیں دیکھ سکتا ۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے علماء کو بہت سی چیزوں میں متحد کیا ۔ بہت سے مسائل علماء سے اتفاق کے ذریعے آگے بڑھ رہے ہیں ۔ قومی سطح پر علماء کے ساتھ اچھے روابط ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت اور اپوزیشن کے درمیان رابطے کا فقدان ہے ۔ حکومت کہتی ہے کہ اپوزیشن ہر ملاقات میں این آر او مانگتی ہے اور اپوزیشن کہتی ہے کہ ہم این آر او کی بات نہیں کرتے ۔ پانامہ لیکس کے بعد پہلا حملہ عدلیہ پر ہوا ۔ نیب پر حملے آج بھی ہو رہے ہیں ۔ اسٹیبلشمنٹ پر حملہ بہت افسوس ناک ہے ۔ اپنے آپ کو بچانے کے لئے قومی اداروں پر حملے سے پاکستان کا ہی نقصان ہے ۔ انہوں نے نواز شریف کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ جب کہنے کو کچھ نہیں رہا تو لندن سے ہونے والی تقریر میں اداروں پر حملہ کیا ۔
صدر مملکت

شیئر کریں

Top