عمران خان نے آئینی صوبے کا لالی پاپ دیا؛بلاول بھٹو

g9-1.jpg

گلگت بلتستان کو شناخت بھی پیپلز پارٹی نے دی تھی آئینی صوبہ بھی ہم ہی بنائیں گے عوام تیر کے نشان پرووٹ لگا کر ہمارے امیدواروں کو کامیاب کرائیں
شگر( محمد حسین آزاد،غلام علی وفا،علی نقی شگری) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان کسی سلیکٹڈحکومت کا متحمل نہیں ہوسکتا ،تبدیلی تباہی کے سوا کچھ نہیں دے گی ،عوام کوحقوق کے حصول کے لئے پیپلز پارٹی کو کامیاب بنانا ہوگا ،ملک میں نیازی حکومت کے خلاف تحریک شروع ہوچکی ہے انشا اللہ بہت جلد ملک سے تباہی حکومت کا خاتمہ ہوگا پیپلز پارٹی شگر کے امیدوار عمران ندیم کی انتخابی مہم کے سلسلے میں منعقد ہ جلسے سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان میں جتنی بھی اصلاحات ہوئی ہیں یہ سب پیپلز پارٹی کی ہی مرہون منت ہیں اگر آئینی حقوق دینا ہے تو تباہی سرکار کو ڈھائی سال تک گلگت بلتستان یاد کیوں نہیں آیا اب الیکشن قریب آیا ہے تو میلہ لوٹنے کیلئے گلگت بلتستان کے عوام کو لالی پاپ دے رہے ہیں نیازی حکومت اگر صوبہ بنانا چاہتی ہے تو پہلے جنوبی پنجاب کو صوبہ بنانے کا وعدہ پورا کرے اس کے بعد گلگت بلتستان کے عوام کو خواب دکھائے گلگت بلتستان کو شناخت بھی پیپلز پارٹی نے دی تھی اور آئینی صوبہ بھی پیپلز پارٹی کی حکومت ہی بنائے گی عمران خان نے آئینی صوبہ بنانے کالالی پاپ دینے سوا کچھ نہیں دیا کیونکہ انہیںسہولیات چھیننا آتی ہیں دینا نہیں آتیں،ذوالفقار بھٹو نے راجگی نظام کا خاتمہ کرکے عوام کو جینے کا سلیقہ سکھایا تاہم نیازی حکومت راجاؤں کو ایک بار پھر عوام پر مسلط کرنے کے خواہاں ہے اس لئے ایک راجا کو ٹکٹ دیا تاکہ عوام سے ان کے جینے کا حق بھی چھین سکے ، انہوں نے کہاکہ پیپلز پارٹی عوامی پارٹی ہے اور عوامی پارٹی ہی عوام کو سہولیات فراہم کرے گی گلگت بلتستان میں جیت کا جشن منا کر واپس جاؤں گا اور قومی اسمبلی اور سینٹ میں گلگت بلتستان کے حقوق کیلئے آواز بلند کریں گے شگر کے عوام کے مشکور ہیں جنہو ں نے تاریخی استقبال کرکے دل جیت لئے میں یہ کھبی نہیں بھولوں گا انہوں نے کہا کہ آج کا اجتماع ان تمام قوتوں کے لئے ایک واضح پیغام ہے کہ جنہوں نے پیپلز پارٹی کی قیادت کو شہید کرکے پارٹی کو ختم کرنے کا پلان بنایا تھا ان منصوبہ سازوں کیلئے یہ واضح پیغام ہے کہ پیپلز پارٹی کو بڑے سے بڑے آمر ختم نہیں کرسکا آج کے ٹو کے دامن سے لیکر کے ٹو تک جیالے موجود ہیں اور 15نومبر کو گلگت بلتستان میں ایک بار پھر پیپلز پارٹی حکومت بنائے گی انہوں نے عوام سے اپیل کی 15نومبر کو تیر کے نشان پر مہر لگا کر پیپلز پارٹی کو کامیاب بنائیں شگر(غلام علی وفا +محمد حسین آزاد)چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے ضلع شگر میں بڑے انتخابی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان کا ہر مظلوم شہید ذوالفقار علی بھٹو اور شہید بینظیر بھٹو اور میرے ساتھ کھڑاہے شہید ذوالفقار علی بھٹو نے جس سفر کا آغاز آپ کے ساتھ کیا تھا یہ سفر اس وقت تک جاری رہے گا جب تک جی بی کے عوام کو ان کے حقوق نہیں مل جاتے۔ شہید ذوالفقار علی بھٹو اور شہید محترمہ بینظیر بھٹو نے جو خواب دیکھے تھے انہیں شرمندہ تعبیر کرنا اب ان کا فرض بن چکا ہے وہ جی بی کے عوام کے نمائندوں کو اسلام آباد بھیجیں گے اوروہ عوام کے علاوہ کسی اور کے اشارے پر عمل نہیں کریں گے پی پی پی عوام کو حقوق دلا کر رہے گی یہ جی بی کے عوام کی تقدیر نہیں کہ وہ ہمیشہ غریب رہیں اور صحت اور تعلیم کی سہولتوں سے محروم رہیں پی پی پی نے جی بی کے عوام کو روزگار مہیا کیا پیپلزپارٹی کے سابق وزیراعلی نے 25ہزار نوجوانوں کو روزگار دیا۔ شہید ذوالفقار علی بھٹو کے دور میں غذائی اشیاء پر سبسڈی دی جو آج تک جاری ہے اور جی بی کے عوام اس سے فائدہ اٹھا رہے ہیں صدر زرداری نے بینظیرانکم سپورٹ پروگرام شروع کیا اور ملک بھر کی غریب خواتین کی مدد کی سندھ میں دل اور جگر کی بیماریوں کے مفت علاج کے لئے ہسپتالوں کا جال بچھایا اسی قسم کے ہسپتال اور تعلیمی ادارے جی بی میں پیپلزپارٹی قائم کرے گی۔ شہید ذوالفقار علی بھٹو نے سٹیل ملز جیسے ادارے بنا کر عوام کو روزگار دیا انہوں نے عوام کو پاسپورٹ کی سہولت دی اور بیرون ممالک روزگار کے مواقع پیدا کئے اور آج تک پاکستان کے عوام بیرون ملک ملازمت کرکے اپنے خاندانوں کی کفالت کر رہے ہیں جبکہ عمران خان کی اس سلیکٹڈ اور کٹھ پتلی حکومت نے پاکستان کے ہر طبقے کی تکلیف میں اضافہ کیا ہے اور انہیں کوئی ریلیف نہیں دیا۔ آج چاہے لیڈی ہیلتھ ورکرز ہوں یا سرکاری ملازمین سب اسلام آباد میں احتجاج کرتے نظر آرہے ہیں ہمیں اس سلیکٹڈ حکومت کو پاکستان کی مزید تباہی سے روکنا پڑے گا جس نے پنجا ب اور کے پی کو تباہ کر دیا ہمیں جی بی کو اس قسم کی تباہی سے بچانا ہوگا بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ عمران خان نے تبدیلی کے نام پر ملک کی تباہی مچارکھی ہے عمران خان نے 2018کے انتخابات میں جتنے بھی وعدے کئے تھے ان میں سے ایک کو بھی پورا نہیں کرسکے عمران خان نے جنوبی پنجاب کے عوام سے 100 دن میں صوبہ بنانے کاوعدہ کیا جوجھوٹ نکلا چیئرمین پی پی پی نے کہا کہ ان کی پارٹی اور جی بی عوام کا دلی رشتہ ہے۔ جی بی کے لوگ تعلیم اور روزگار کے سلسلے میں کراچی جاتے ہیں وہاں ایک شگر ہاؤس بھی ہے۔ سندھ حکومت اس شگر ہاؤس کو بہتر کریگی پی پی پی جی بی کے طلباکے لئے کراچی میں ہاسٹل قائم کریگی کیونکہ پی پی ہی وہ واحد جماعت ہے جو عوام کے لئے کام کرتی ہے۔ عمران خان نے کے پی میں اپنی حکومت کے سات سالوں اور وفاق میں اپنی حکومت کے دو سالوں کے دوران ایک بھی ہسپتال یا تعلیمی ادارہ قائم نہیں کیا۔ پی پی پی نے سرکاری ملازمین کی تنخواہوں اور بزرگوں کی پنشنز میں اضافہ کیا کیونکہ پیپلزپارٹی عوام کو کبھی بھی اکیلا نہیں چھوڑتی۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ جی بی کے انتخابات تک جی بی کے عوام میں موجود رہیں گے حالانکہ پی ڈی ایم کی تحریک جاری ہے لیکن وہ جی بی کے انتخابات کے دوران جی بی کے عوام کے ساتھ رہیں گے۔ انہوں نے جی بی کے عوام سے کہا کہ وہ پی پی پی کے امیدواروں کو ووٹ دیںا ور وہ انتخا بات میں فتح کا جشن منانے تک جی بی میں ہی رہیں گے۔
پیپلز پارٹی

بلاول

شیئر کریں

Top