پولنگ عملے نے خواتین ووٹرز کے شناختی کارڈ غائب کر دئیے دوسرے شہروں کو وآپس جانے والے پریشان

NICOP-condition-.jpg

پولنگ عملے نے تمام خواتین ووٹرزکے شناختی کارڈ اپنے پاس رکھ لئے،تین دن گزرنے کے باوجودکار ڈواپس نہیں کئے جارہے
ووٹرزمیں اکثرطالبات بھی ہیںجوصرف ووٹ کاسٹ کرنے آئی تھیں،عملے کی غیرذمہ داری پرخواتین اورشہریوں کومایوسی کاسامنا
استور(رفیع اللہ خان آفریدی) الیکشن کے دن عیدگاہ گرلز پولنگ سٹیشن پر ڈیوٹی سر انجام دینے والا پولنگ عملے نے ووٹ کاسٹ کرنے والی خواتین کا شناختی کارڈ واپس نہیں کیا اور سب کے کارڈ کو اپنے پاس رکھا مگر الیکشن کیاختتام سے آج تیسرے دن تک اکثر خواتین کا شناختی کارڈ غائب ہیں جبکہ پولنگ عملہ اسی دن گھرچلاگیا کئی خواتین جنہوں نے کراچی، اسلام آباد، گلگت اور دیگر شہروں کو واپس جانا ہے مگر شناختی کارڈ نہ ہونے کی وجہ سے وہ سفر نہیں کرسکتی ہیں اکثر خواتین بہت زیادہ پریشان اور زہینی طور پر بھی مسائل کی شکار ہیں اور ان میں سے کئی طالبات بھی ہیں جنوں واپس جانا ہے صرف ووٹ کاسٹ کرنے کے لئے ایک دن کے لئے استور اچکی تھی اکثر خواتین اس لئے بھی سخت پریشان ہیں کہ انکا شناختی کارڑ کسی جگہ غلط بھی استعمال ہوسکتا ہے ان تمام پریشانی اور حالات سے بے خبر پولنگ کا عملہ اور زمدارن غائب ہیں سنکٹروں شناختی کارڑ کہاں پر ہے کون زمدار ہے معلوم نیں ایک اہم دن اور اہم کارڑ وہ بھی بڑی تعداد میں غائب ہونا پولنگ عملے کا باکمال اور انکی خدمات لاجواب ہونا کا منہ بولتا ثبوت ہے انکی اس غیر معمولی غیر زمداری حرکت کی وجہ سے کتنے لوگ وہ بھی خواتین پریشان ہیں کسی کو کوئی احساس تک نیں۔
شناختی رڈ غائب

شیئر کریں

Top