حکومتی سرپرستی میں تاریخی دھاندلی خزانے کے منہ کھولے گئے وزراء نے گھر گھر جاکر فرضی اعلانات کئے فیکٹ فائنڈنگ کمیٹی بنائیں گے:ن لیگ

489935_84996425.jpg

الیکشن جیتنے کیلئے خزانے کا منہ کھول دیا گیا، راتوں رات گندم اور آٹا تقسیم کیا گیا، بعض پریذائڈنگ افسران کے نام لیکر اپنے تحفظات کا اظہار کیا لیکن ہماری ایک نہیں سنی گئی
میڈیا گواہ ہے اکثر پولنگ اسٹیشن دن 12 بجے تک ویران اور سنسان ہوچکے تھے ایسے میں 70 فیصد ٹرن آؤٹ لمحہ فکریہ ہے ،اکبرتان ،اشرف صدااوردیگرکی پریس کانفرنس
سکردو(غلام علی وفا سے)مسلم لیگ ن کے صوبائی جنرل سیکرٹری وامیداور سکردو حلقہ ایک حاجی اکبر تابان نے ممبران کونسل اشرف صدا، وزیر اخلاق حسین اور بلتستان ڈویژن سے مسلم لیگ ن کے تمام امیدواروں کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ 15 نومبر کو ہونے والے انتخابات کے حوالے سے گلگت بلتستان بھر میں شور غل برپا ہے ان انتخابات میں حکومتی سرپرستی میں جتنی دھاندلی ہوئی اس کی تاریخ میں مثال نہیں ملتی، الیکشن جتنے کے لیے خزانے کا منہ کھول دیا گیا، راتوں رات گندم اور آٹا تقسیم کیا گیا، ہزاروں کی تعداد میں صحت کارڈ تقسیم کیے گئے، ایک وفاقی وزیر گھر گھر، گلی گلی جا کر فرضی اعلانات کرتا رہا، ہر یونین کونسل میں ایک ڈگری کالج کا اعلان کیا ہوا ہے، جھوٹی سکیموں کے اعلانات کا جمعہ بازار لگا یاگیااور عوام دانستہ یاغیر دانستہ طور پر ان کے فرضی اعلانات کے جھانسے میں آ گئے، سکردو حلقہ ون سمیت شہری علاقوں میں ووٹ گزشتہ انتخابات کے نسبت کم ہونے کے باوجود 28 کی جگہ 54 پولنگ اسٹیشن بنائے گئے، ہماری درخواست اور تحفظات کے باوجود بیلٹ پیپرز ایک دن قبل ہی ایشو کردیئے گئے جس کی وجہ سے بیلٹ پیپرز کے غلط استعمال کے خدشات بڑھ گئے سوشل میڈیا میں ایک پولنگ اسٹیشن کی ویڈیو بھی وائرل ہوچکی ہے ان بے ضابطگیوں کی تحقیقات کی ذمہ داری الیکشن کمیشن، چیف سیکرٹری، آر او اور ڈی آر آوز کی ہے، ہم نے بعض پریذائڈنگ آفسران کے نام لیکر اپنے تحفظات کا اظہار کیا لیکن ہماری ایک نہیں سنی گئی، پوری دنیا نے دیکھا ہے میڈیا گواہ ہے اکثر پولنگ اسٹیشن دن 12 بجے تک ویران اور سنسان ہوچکے تھے ایسے میں 70 فیصد ٹرن آؤٹ بڑا لمحہ فکریہ ہے، ہم ان انتخابات کو یکسر مسترد کرتے ہیں، انھوں نے کہا کہ ایک بیمار شخص نے مجھ پر پی ٹی آئی کے امیدوار کو سپورٹ کرنے کا اعلان کیا ہے یہ الزام اس کے بیمار ذہین کی عکاسی کرتا ہے ہم پی ٹی آئی کا نام لینا گناہ کبیرہ سمجھتے ہیں جسکا کفارہ بھی نہیں یہ ہمارے لیے گالی کے مترادف ہے ہم نے ہمیشہ ایشوز کی سیاست کی ہے،یہ میری شخصیت کمزور دکھانے کی سازش ہے جس پارٹی کو ضیا اور مشرف ختم نہ کر سکے ایسے لوگوں کی وجہ سے زمین بوس ہو گئی، جن لوگوں نے ہمیں چھوڑ کر چلے گئے تھے عوام نے ان کو ان کی اوقات دکھا دی، انھوں نے کہا کہ پاکستان کے عوام نے اس پارٹی کی اصلیت دو سال میں دیکھ لی ہے گلگت بلتستان کے عوام کو بھی چند ماہ میں آٹے دال کا بھاؤ معلوم ہوجائے گا، یہ صرف ڈگڈگی بجانے والے ہیں ان پر جنھوں نے اعتبار کیا ہے ان کی نسلیں بھگتیں گی سکردو حلقہ ایک میں انھوں نے ایک مرتبہ پھر مذہبی سیاست کو پروان چڑھایا ایک شخص اپنا حلقہ چھوڑ کر ہمارے حلقے میں مذہبی جذبات ابھارتا رہا یہ بھی لمحہ فکریہ ہے کہ جو خود کو بے تاج بادشاہ سمجھتے تھے حکومتی سرپرستی کے باوجود تین سو ووٹوں کی برتری ملی سکردو حلقہ دو کے ایک امیدوار کی ری کاؤنٹنگ کی درخواست مسترد کرنا بھی دھاندلی کے زمرے میں آتا ہے دوبارہ گنتی بنیادی حق ہے، پورے ملک میں کہیں ایسا نہیں ہوتا کہ ہر سال ایک کرایہ کا امیدوار لایا جائے ایک وفاقی وزیر نے ایک امیدوار کو اپنے ہاتھوں سے لکھ کر مشیر کا لیٹر جاری کیا اس سے بڑا قانون کے ساتھ مذاق اور دھاندلی اور کیا ہوسکتی ہے ہمارا ایک ہی نعرہ ہے ووٹ کو عزت دو، جن لوگوں نے ہماری پارٹی چھوڑی تھی حکومت نے نے بھی ان پر اعتماد نہیں کیا، گانچھے کے عوام نے لوٹوں کو مکمل طور پر مسترد کر دیا، اور حکومت کے اصل امیدوار آزاد تھے اس حکومت نے دنیا اور عوام کی آنکھوں میں دھول جھونکی اگر براہ راست پندرہ سیٹیں اپنے ٹکٹ ہولڈرز کو جتواتے تو ان پر زیادہ تنقید ہوتی اس لیے آزاد امیدواروں کی بیساکھی استعمال کی، مسلم لیگ ن انتخابات میں دھاندلی کے حوالے سے فیکٹ فائنڈیگ کمیٹی بنائے گی اور تمام الزامات کے بارے میں حقائق اور ثبوتوں کی بنیاد پر لائحہ عمل طے کیا جائے گا.
ن لیگ

شیئر کریں

Top