حکومت کا پی ڈی ایم کو پشاور میں جلسے کی اجازت دینے سے انکار

5fb789f62c436.jpg

حکومت نے عوامی اجتماعات سے گریزاختیارکرنے کی ہدایت کی ہے، شہر میں کورونا کی صورتحال تشویش ناک ہے
کورونا کیسز کی شرح 13فیصد تک پہنچ گئی ، عوامی اجتماعات سے کورونا کے بڑے پیمانے پرپھیلنے کا خدشہ ہے،ضلعی انتظامیہ
پشاور(آئی این پی)پشاور کی ضلعی انتظامیہ نے پی ڈی ایم کو کورونا کی موجودہ تشویشناک صورت حال میں جلسے کی اجازت دینے سے معذرت کرلی ہے جب کہ پی ڈی ایم کے میڈیا کوآرڈینیٹر کا کہنا ہے کہ 22نومبر کو پی ڈی ایم کا جلسہ ہر صورت ہوگا۔تفصیلات کے مطابق پشاورمیں ضلعی انتظامیہ نے کورونا وبا کے پھیلاؤکے خطرے کے پیش نظرپی ڈی ایم کوجلسے کی اجازت دینے سے انکارکرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت نے عوامی اجتماعات سے گریزاختیارکرنے کی ہدایت کی ہے۔ڈپٹی کمشنر پشاور محمد علی اصغر نے پی ڈی ایم کے صوبائی رہنماؤں کو خط لکھا ہے جس میں کورونا کی موجودہ صورت حال میں جلسے کی اجازت دینے سے معذرت کی گئی ہے۔ خط کے مطابق شہر میں کورونا کی صورتحال تشویش ناک ہے اور کورونا کیسز کی شرح 13 فیصد تک پہنچ گئی ہے۔ بڑے عوامی اجتماعات سے کورونا کے بڑے پیمانے پرپھیلنے کا خدشہ ہے، مذکورہ صورت حال اورکورونا وائرس سے انسانی جانوں کوبچانے کی غرض سے جلسہ کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔واضح رہے کہ جلسہ کے لیے اجازت نامہ کی درخواست فیصل کریم کنڈی، سردارحسین بابک، مولانا عطا الحق درویش، مرتضی جاوید عباسی اورہاشم بابرنے فوکل پرسن عبدالجلیل جان کے توسط سے ڈی سی پشاورکودی تھی۔دوسری جانب میڈیا کوآرڈینیٹر پی ڈی ایم عبدالجلیل جان نے بتایا کہ ضلعی انتظامیہ کی جانب سے پابندی کسی صورت برداشت نہیں، 22نومبر کو پی ڈی ایم کا جلسہ ہر صورت ہوگا۔
انکار

شیئر کریں

Top