پی پی کا مقابلہ پی ٹی آئی نہیں سرکاری مشینری سے تھا،دھاندلی کی تحقیقات کیلئے کمیشن بنایا جائے :سعدیہ دانش

sadia.jpg

ٹیکس فری صوبہ بناناپیپلز پارٹی کا ویژن ہے جس صوبے کا ذکر تحریک انصاف کے وزراء کر رہے ہیں وہ پیکج صدر زرداری نے 2009 میں ہی دیدیاتھا
پیپلز پارٹی عوامی مینڈیٹ چرانے والوں سے ایک ایک ووٹ کا حساب لے گی،چارحلقوں کاروناوالے اب پانچ حلقہ کھولنے سے کیوں کترارہے ہیں
گلگت بلتستان میں حزب اختلاف نہ صرف مضبوط ہے بلکہ علاقے کے مفاد کے خلاف کسی بھی قسم کے اقدام کو روکنے کی صلاحیت بھی رکھتی ہے، ممبراسمبلی
گلگت(بادشمال رپورٹ)پیپلز پارٹی گلگت بلتستان کی سیکرٹری اطلاعات و نومنتخب رکن اسمبلی سعدیہ دانش نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان کو ٹیکس فری صوبہ بناناپیپلز پارٹی کا ویژن ہے جس کیلئے صوبائی اسمبلی سمیت تمام فورمز میں جدو جہد کرینگے جس صوبے کا ذکر تحریک انصاف کے وزراء کر رہے ہیں وہ پیکج صدر زرداری نے 2009 میں دیا گلگت بلتستان قدرتی وسائل سے مالا مال خطہ ہے یہاں کے لوگوں کے اپنے پاؤں پرکھڑا ہونے تک صوبے کا درجہ دینے کے ساتھ ساتھ عوام کو ٹیکس فری بنا کر ریلیف دینا ضروری ہے لیکن ہمیں پتہ ہے انہوں نے گلگت بلتستان کے اس فیصلے سے متعلق بھی تاریخی یوٹرن لینا ہے نو منتخب رکن گلگت بلتستان اسمبلی سعدیہ دانش نے مزید کہا کہ پیپلز پارٹی نے گلگت بلتستان کے انتخابات کو سختی سے مسترد کیا ہے الیکشن میں پیپلز پارٹی نے پی ٹی آئی نہیں بلکہ سرکاری مشینری کیخلاف الیکشن لڑااس کے باوجود عوام نے سب سے ذیادہ ووٹ دیکرپیپلزپارٹی پر اپنے اعتماد کااظہارکیاہے گلگت بلتستان میں انتخابی دھاندلی پر کمیشن بنانا ناگزیر ہے۔ پیپلز پارٹی عوامی مینڈیٹ چرانے والوں سے ایک ایک ووٹ کا حساب لے گی گلگت بلتستان کی عوام نے وفاقی حکومت کی اس سوچ کو مسترد کردیا کہ جس کی وفاق میں حکومت آتی ہے اسی کو ووٹ پڑتا ہے گلگت بلتستان کی عوام نے خدمات، کارکردگی اور میرٹ کی بنیاد پر پیپلز پارٹی کو ووٹ دیا جس پر پیپلز پارٹی اپنی قوم اور عوام گلگت بلتستان کا شکریہ ادا کرتی ہے۔ سیکرٹری اطلاعات پیپلز پارٹی سعدیہ دانش نے مزید کہا کہ چار حلقوں کا نام لیکر پانچ سال تک قوم کا جینا دوبھر کرنے والے اب حلقے کھولنے سے کیوں کترا رہے ہیں؟ عوام کی آنکھوں کے سامنے سرکاری طاقت کے ذریعے ان کا ووٹ چھن گیا ہے علی امین گنڈاپور نے جس طرح اس علاقے کی روایات اور عدالتی احکامات کی دھجیاں اڑائی ہیں وہ تاریخ کا حصہ بن چکا ہے عدالت عظمی کے احکامات کے باوجود آخری الیکشن تک انہوں نے اپنے امیدواروں کے حق میں مہم چلائی پیپلز پارٹی کے چیئرمین نے تحفظات کے باوجود عدالتی فیصلے کی پاسداری کرتے ہوئے اپنی مہم ترک کی جبکہ دوسری جانب حکومتی وزراء اور سرکاری وسائل پر انتخابی مہم چلانے والوں نے عدالتی وقار کو مجروح کیا ۔ گلگت بلتستان میں حزب اختلاف نہ صرف مضبوط ہے بلکہ علاقے کے مفاد کے خلاف کسی بھی قسم کے اقدام کو روکنے کی صلاحیت بھی رکھتی ہے پیپلز پارٹی عوامی جماعت ہے اس بات کا واضح ثبوت عوام نے انتخابی مہم کے دوران دیا پیپلز پارٹی حق ملکیت ،حق حاکمیت اور حق روزگار کے لئے اپنی جد و جہد جاری رکھے گی۔
سعدیہ دانش

شیئر کریں

Top