این آر او کا حق آمر کے پاس ہوتا ہے وزیر اعظم کے پاس نہیں : شاہد خاقان

shahid.jpg

حکومت کی جانب سے غلط بیانی ہورہی ہے، کرپشن کاالزام نہیں اختیارات کے ناجائزاستعمال کاالزام ہے، سابق وزیر اعظم
ڈھائی سال گزرنے کے بعدبھی ملک میں بجلی کابحران ہے، گیس کیبل بھی بڑھ گئے، ہم نے سستے ترین پلانٹس پاکستان میں لگائے
کراچی (آئی این پی ) پاکستان مسلم لیگ (ن ) کے رہنما و سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ ڈھائی سال گزرنے کے بعدبھی ملک میں بجلی کابحران ہے، گیس کیبل بھی بڑھ گئے، ہم نے سستے ترین پلانٹس پاکستان میں لگائے ، سسٹم میں اضافی گیس کوشامل کیا ،ہمارے دورمیں گیس کی قیمت میں ایک روپیہ بھی اضافہ نہیں ہوا، سستی اوراضافی بجلی سے ملکی جی ڈی پی میں 3 فیصداضافہ ہوا، اب گیس کی قیمت کیوں بڑھی حکومتی وزرابتانے سے قاصرہیں، 2 سے3 ارب ڈالرانرجی کیلئے اضافی رقم اداکرنی پڑتی ہے، حکومت کی جانب سے غلط بیانی ہورہی ہے، کرپشن کاالزام نہیں اختیارات کے ناجائزاستعمال کاالزام ہے، این آراوکاحق آمرکے پاس ہوتاہے وزیراعظم کے پاس نہیں۔ پیر کو سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کراچی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مسلم لیگ نون کے دور حکومت میں لوڈشیڈنگ کے خاتمے کیلئے ذمہ داری کے ساتھ کام کیا گیا اور سستے ترین پلانٹس لگائے گئے، 30 ماہ میں اضافی گیس کے مسئلے کو حل کیا گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ اگر ہماری حکومت اس وقت ایسے اقدامات نہ لیتی تو آج سالانہ دو سے تین ارب ڈالرز اضافی خرچ کرنے پڑتے اور لوڈشیڈنگ بھی رہتی، اضافی بجلی سے ہی ملک میں ترقی آنی ہے اور جی ڈی پی میں اضافہ ہوا تھا۔ شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ آج بدقسمتی سے ملک کو پھر سے گیس اور بجلی کی لوڈشیڈن کا سامنا ہے اور اس کی وجہ بھی حکومت بیان کرنے سے قاصر ہے جبکہ ہمارے پانچ سال حکومت میں گیس یک قیمت ایک روپے بھی اضافہ نہیں ہوا لیکن آج دو گنا سے تین گنا اضافہ ہو چکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت نے دنیا کے سستے ترین ایل این جی کے پلانٹس لگائے تھے اور اب بھی 36 میگاواٹ کے پلانٹس سے بجلی حاصل کی جا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے توانائی کے مسئلے کا حل اضافی گیس سے ممکن ہے لیکن موجودہ حکومت کوئی کام نہیں کر رہی ہے، جو حکومت کی نالائقی اور کرپشن کی وجہ سے ہے۔ شاہد خاقان عباسی نے صافیوں کے سوالوں کے جواب میں کہا کہ انپر کرپشن کا الزام نہیں ہے، اختیارات کے ناجائز استعمال کا الزام ہے جبکہ این آر او کا حق آمر کے پاس ہوتا ہے۔
شاہد خاقان عباسی

شیئر کریں

Top