دو روز میں جوڈیشل کمیشن نہ بنائے جانے پر حکومت نہیں چلنے دینگے :امجد ایڈووکیٹ

g20.jpg

عوامی مفاد سے متعلق حکومت کے ہراقدام کی بھرپورحمایت کریں گے اگر حکومت کٹ پتلیوں کے اشاروں پر چلنے کی کوشش کریگی تو مزاحمت کریں گے، اسمبلی دھاندلی کی تحقیقات ہونی چاہیے
جب حکومت کا ایک وزیرعدالت کے فیصلوں کو جوتوں کی نوک پر رکھتا ہے اور ادارے خاموش ہیں تو ہم بھی گلگت میں گاڑیاں جلانے والوں کو سیلوٹ کرتے ہیں،اپوزیشن لیڈر کا اسمبلی اجلاس سے خطاب
گلگت(مہتاب الرحمن)گلگت بلتستان اسمبلی اجلاس سے پہلا خطاب کرتے ہوئے قائد حزب اختلاف امجدحسین ایڈوکیٹ نے کہا کہ عوامی مفاد سے متعلق حکومت کے ہراقدام کی بھرپورحمایت کریں گے اگر حکومت کٹ پتلیوں کے اشاروں پر چلنے کی کوشش کریگی تو مزاحمت کریں گے ۔انہوںنے کہا کہ گلگت بلتستان کے عوام نے 95ہزار ووٹ پیپلزپارٹی کودیا ہے جس پر چار ممبران منتخب ہوئے ہیں جبکہ تحریک انصاف کوایک لاکھ پانچ ہزار ووٹ لیکر 9نشتیں ملی ہیں یہ بڑا سوالیہ نشان ہے اور یہ سوالیہ نشان رہے گا امجد ایڈوکیٹ نے کہا کہ حلقہ دو گلگت کی سیٹ پر انتخابی نتائج پر ہمارے تحفظات ہیں جبکہ تینوں امیدواروں کے مابین معاہدہ طے ہواہے اور اسی معاہدے کے تحت حلقہ دو گلگت کے نتائج پر ازسرنو تحقیقات ہونی ہے اورہم آج بھی جمیل کو اس ایوان کا منتخب ممبر تصور کرتے ہیں ہماری سیٹ چھین لی گئی ہے ہم نے حکومت سے درخواست کی ہے کہ اس مسئلے کے حل کے لئے جوڈیشل کمیشن بنایاجائے نومنتخب حکومت کو دو دن کی مہلت دیتے ہوئے کہا کہ آئندہ دوروز میں حکومت نے اگر جوڈیشل کمیشن نہیں بنایاتو نہ یہ ایوان چلنے دیں گے اور نہ ہی حکومت چلنے دیں گے اور ہم احتجاج کریں گے او ر پوری عوامی طاقت کے ساتھ سڑک پر نکل آئیں گے ،امجدایڈوکیٹ خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سپریم اپیلیٹ کورٹ نے وفاقی وزیرکو گلگت بلتستان میں انتخابی کمپئین کرنے سے روک لیاتھا وفاقی وزیرنے گلگت بلتستان کے اعلی عدلیہ کے حکم کو جوتوں کی نوک پہ رکھا مگر عدلیہ ٹس سے مس نہیں ہے گلگت بلتستان کی اعلیٰ عدلیہ عدالت کے وقار کو مجروح ہونے سے بچاتے ہوئے وفاقی وزیرکو ایک نوٹس ہی کردیں تاکہ عدلیہ کی ساکھ بحال ہوسکے اور گلگت بلتستان کے عوام کا عدلیہ پر اعتماد بحال ہوسکے انہوںنے کہا کہ جب تک وفاقی وزیرعلی امین گنڈاپور کو عدلیہ کے حکم عدولی پر سزانہیں ملتی ہے تب تک گلگت میں گاڑیاں دفاتر جلانے والوں کو بھی سزانہیں ملے گی جب حکومت کا ایک وزیرعدالت کے فیصلوں کو جوتوں کی نوک پر رکھتا ہے اور ادارے خاموش ہیں تو ہم بھی گلگت میں گاڑیاں جلانے والوں کو سیلوٹ کرتے ہیں اگر علی امین گنڈا پور کو عدلیہ کے حکم عدولی پر سزاملی تو جلاو گھیراو کرنے والوں کو بھی سزاملے گی۔امجدایڈوکیٹ نے ایوان سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حلقہ ایک گلگت کومسلکی بنانے والوںنے پیپلزپارٹی کا راستہ روکنے کی بھرپور کوشش کی ہمیشہ اس حلقے میں مسلکی کمیٹیاں بنا کر مسلکی بنیاد پر انتخابات کرانے کی کوشش کی جاتی ہے ہم نے ریاست کے ہرادارے کے پاس جاکر اس معاملے کو روکنے کے لئے مطالبہ کیا مگر کسی نے ہماری بات نہیں سنا جبکہ حلقہ دو گلگت میں فرقہ وارانہ بنیاد پر الیکشن کی روایت کو شہید سیف الرحمن نے دفن کردی میں شہید سیف الرحمن کی خدمات کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں امجدایڈوکیٹ نے کہا کہ وفاق میں جس پارٹی کی حکومت ہوتی ہے گلگت بلتستان میں بھی اسی پارٹی کی حکومت لانے کے لئے ایم ڈبلوایم ،اسلامی تحریک تنظیم اہلسنت والجماعت نے کرادارادا کیا ہم آ ج انہیں بھی مبارک باد دیں گے امجد ایڈوکیٹ نے تحریک انصاف میں شمولیت کرنے والے آزادامیدواروں کو بھی حدف تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ گلگت بلتستان کے 24حلقوں میںصرف 9سیٹیں جیتنے والی تحریک انصاف میں شامل ہوکر حکومت بنانے میں معاونت کرنے والے آزادامیدوارو بھی مبارک باد کے مستحق ہیں ۔ ایوان سے خطاب کرتے ہوئے امجدایڈوکیٹ نے کہا کہ ہمیں خدشہ ہے کہ سندھ کے جزائر کی طرح گلگت بلتستان کے زمینوں پر بھی قبضہ کرنے کی کوشش نہ کی جائے ہم نے گلگت بلتستان کے ایک ایک اینچ زمین اور معدنیات کے تحفظ کی قسم کھائی ہے ہم گلگت بلتستان کے عوام کو حق ملکیت اور حق حاکمیت دینا چاہتے ہیں حکومت سے ہماری درخواست ہے کہ وہ عوام کو حق ملکیت دلانے کے لئے ہماراساتھ دیں۔امجد ایڈوکیٹ نے اس موقع پر نگر کے عوام کا بھی شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ نگر کے عوام نے بھی مجھے منتخب کرکے ایوان میں اپنی نمائندگی کے لئے بھیجا ہے جس پر میں نگر کے غیر ت مند قوم کو خراج تحسین پیش کرتاہوں ۔
امجد ایڈووکیٹ

شیئر کریں

Top