وزیر اعلیٰ نے حلف اٹھا لیا

g4.jpg

تمام اداروں میں ٹارگٹ سیٹ کئے جائینگے میڈیکل کالج کے منصوبے کو عملی جامہ پہنایا جائیگا صحت اور تعلیم کے شعبے میں سٹاف کی کمی دور کی جائیگی

گلگت بلتستان کی تعمیر و ترقی کے لیے پوری ٹیم دن رات محنت کرے ،عوام سے وعدہ ہے ہماری حکومت ماضی کی تمام محرومیوں کا ازالہ کریگی ،تمام اداروں میں ٹارگٹ سیٹ کرینگے
نئے سیاحتی مقامات کو فروغ دینے کیلئے نجی شعبے کی حوصلہ افزائی کی جائیگی،ہر تحصیل میں زچہ وبچہ سینٹر قائم کیا جائیگا،ڈاکٹروں کے مسائل تر جیحی بنیادوں پر حل کرینگے ،اجلاس سے خطاب
گلگت(سپیشل رپورٹر)نو منتخب وزیر اعلی ایڈووکیٹ خالد خورشید نے عہدے کا حلف اٹھا لیا گورنر گلگت بلتستان راجہ جلال حسین مقپون نے حلف لیا حلف برداری کی تقریب گورنر ہاؤس میں ہوئی اس تقریب میں سابق نگران وزیر اعلی میر افضل خان نئے سپیکر امجد زیدی چیف سیکرٹری گلگت بلتستان، اراکین اسمبلی سمیت اعلی سرکاری افسران اور تحریک انصاف کے سینئر رہنما اور کارکنوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی حلف لینے کے بعد نو منتخب وزیر اعلی ایڈووکیٹ خالد خورشید کو وزیر اعلی ہاؤس لے جایا گیا جہاں انہوں نے باقاعدہ اپنے کام کا آغاز کردیا ایک غیر رسمی گفتگو میں وزیر اعلی گلگت بلتستان ایڈووکیٹ خالد خورشید نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان کی تعمیر و ترقی کے لیے پوری ٹیم دن رات محنت کریگی گلگت بلتستان کے عوام سے وعدہ کرتا ہوں کہ ہماری حکومت ماضی کی تمام تر محرومیوں کا خاتمہ کرے گی ہمارا ہر کام میرٹ کی بنیاد پر ہوگا اور خطے کے ہر حصے کو یکساں ترقی کے راہ پر گامزن کیاجائے گا۔
گلگت (بادشمال نیوز)وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان خالد خورشیدنے اعلیٰ سطحی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے عوام کی بہتری کیلئے کام کرنا ہے۔ میڈیکل کالج منصوبے کوبہت جلد عملی جامہ پہنایا جائے گا۔ تمام اداروں میں ٹارگٹ سیٹ کئے جائیں گے میرٹ کو یقینی بنائیں گے۔ تھرو فارورڈ کو کم کیا جائے گا اے ڈی پی میں اضافہ پر توجہ دی جائے گی۔ سیاحت، جنگلات اور توانائی کے شعبے پر خصوصی توجہ دی جائے گی۔ گلگت بلتستان کی تعمیر و ترقی کیلئے ہر ممکن اقدامات کئے جائیں گے۔ صحت کا شعبہ اتنہائی اہمیت کا حامل ہے۔ ہسپتالوں میں جدید سہولیات کی دستیابی یقینی بنائی جائے گی۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان خالد خورشیدنے کہا کہ ڈاکٹروں کو درپیش مسائل حل کئے جائیں گے۔ خواتین کی تعلیم پر توجہ دی جائے گی۔ توانائی اور معدنیات جیسے اہم شعبوں پر بھی خصوصی توجہ دی جائے گی۔ مختلف علاقوں میں سکول اور ڈسپنسریاں تعمیر کی گئی ہیں لیکن سٹاف نہ ہونے کی وجہ سے عوام کو کوئی فائدہ نہیں پہنچ رہاہے۔صحت اور تعلیم کے شعبے میں سٹاف کی کمی دور کی جائے گی۔ جنگلات کے کٹاؤ کی روک تھام کیلئے سخت اقدامات کئے جائیں گے۔ ہماری ترجیح ہے کہ جنگلات کے تحفظ کو یقینی بنائیں اور نئے جنگلات اگائیں جس کیلئے وزیر اعظم پاکستان عمران خان کے شروع کئے جانے والے بلین ٹری سونامی منصوبے کے تحت نئے جنگلات اگائے جائیں گے۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان خالد خورشیدنے کہا کہ سوشل فاریسٹری پر بھی خصوصی توجہ دی جائے گی۔ بجلی کے بحران پر قابو پانے کیلئے زیر تعمیر منصوبوں کی بروقت تکمیل کو یقینی بنایا جائے گا۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان خالد خورشیدنے کہا کہ دور دراز علاقوں میں مائیکر پاور پروجیکٹس متعارف کرائیں گے۔ روزگار کے مواقع فراہم کرنے اور سیاحت کو فروغ دینے کیلئے مہمان نواز ی کے ادارے کا قیام عمل میں لایا جائے گا۔ نئے سیاحتی مقامات کو فروغ دیا جائے گا۔ پرائیویٹ سیکٹر کی بھرپور حوصلہ افزائی کی جائے گی ہر تحصیل میں زچہ بچہ سنٹر کا قیام عمل میں لایاجائے گا۔ صحت کے سہولیات کی بہتری کیلئے ہر ممکن اقدامات کئے جائیں گے۔ نرسنگ کالج کے قیام کو عمل میں لانے کیلئے اقدامات کئے جائیں گے۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان خالد خورشیدنے سیکرٹری صحت اور دیگر متعلقہ آفیسران کو ہدایت کی ہے کہ کورونا وائرس سے بچاؤ کیلئے ایس او پیز پر سختی سے عملدرآمد کو یقینی بنایا جائے۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان خالد خورشیدنے کہا کہ تمام ہسپتالوں کو فعال کیا جائے گا۔ ڈاکٹروں کے مسائل حل کئے جائیں گے اور ڈاکٹروں کی دستیابی کو یقینی بنایاجائے گا۔ تعلیم کے شعبے میں جدید اصلاحات متعارف کرائے جائیں گے۔ اساتذہ کی تعیناتیاں صرف میرٹ کی بنیادوں پر کی جائیں گی۔ ٹیکنیکل تعلیم پر بھی توجہ دی جائے گی تاکہ روزگار کے مواقع پیدا کئے جاسکیں۔ بقایا جات کی ادائیگیوں کو یقینی بنایا جائے گا ۔
وزیر اعلیٰ

شیئر کریں

Top