قانون کی حکمرانی میرٹ بحال فوری انصاف اولین ترجیح چیف کورٹ اور ماتحت عدالتیں رول ماڈل بن چکی ہیں :جسٹس ملک حق نواز

g2.jpg

چیف کورٹ میں 5ججز کے بجائے 2ججز کام کر رہے ہیں گزشتہ 6ماہ میں تقریبا 1400سودیوانی اور فوجداری مقدمات نمٹا چکے،ججزکومیرٹ پرترقی دی،ماتحت عدلیہ میں ججزکی خودنگرانی کررہاہوں،جسٹس ملک حق نواز
جوسیکرٹریزعدالت کے احکامات کی پابندی نہیں کرتے انکی تنخواہ بنداورتوہین عدالت کی کارروائی شروع کردی،چیف جسٹس، صوبائی حکومت عدل وانصاف کی فراہمی کیلئے مکمل تعاون کریگی،خالدخورشید
گلگت(بادشمال رپورٹ)چیف جسٹس چیف کورٹ جسٹس ملک حق نواز سے وزیر اعلی محمد خالد خورشیدنے چیف کورٹ میں ملاقات کی اس موقع پر جسٹس ملک حق نواز نے خالدخورشیدکو وزیر اعلی منتخب ہونے پر مباکباد دی اور گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ میرٹ کی بحالی،قانون کی حکمرانی اور عوام کو سستے اور فوری انصاف کی فراہمی ہماری اولین ذمہ داری اور ترجیح ہے اس پر سمجھوتہ ہر گز نہیں کیا جائیگا چیف کورٹ اور ماتحت عدالتیں پورے پاکستان کیلئے رول ماڈل بن چکی ہیں چیف کورٹ میں 5ججز کے بجائے 2ججز کام کر رہے ہیں گزشتہ 6ماہ میں تقریبا 1400سودیوانی اور فوجداری کے مقدمات نمٹا چکے ہیں یکم جنوری تک چیف کورٹ سے فوجداری کے مقدمات مکمل ختم کرینگے چیف جسٹس نے مزید کہا کہ چیف کورٹ سمیت دیگر عدالتوں میں ججز کی خالی آسامیوں میں تقرریاں تمام تر تعصبات سے بالا تر ہو کر میرٹ کیمطابق عمل میں لانا وقت کی ضرورت ہے ملک حق نواز نے مزید کہا کہ یکم فروری 2020کو بطور چیف جسٹس عہدے کا حلف اٹھانے کے بعد پہلے مرحلے میں سستے اور فوری انصاف کی فراہمی کو یقینی بنایا اور مزید چیف کورٹ اور ماتحت عدالتوں کے سروس رولز بنائے ہیں جسکی روشنی میں محکمانہ ترقیابی بورڈ تشکیل دیکر میرٹ کیمطابق ترقیاں دیں اور ان قوانین میں چیف جسٹس کے اختیارات کو کم کر کے محدود کر دیا تاکہ اختیارات کی بنیاد پر میرٹ کی خلاف ورزی نہ ہو انھوں نے مزید کہاکہ چیف کورٹ کھنڈرات کا منظر پیش کر رہا تھا ہنگامی بنیادوں پر چیف کورٹ کی عمارت کی مرمت سکردو سے ای کورٹ ویڈیو لنک کے ذریعے مقدمات کی سماعت شروع کی اور جلد دیامر میں بھی ای کورٹ کے ذریعے مقدمات کی سماعت شروع کردی جائیگی اس موقع پر چیف جسٹس نے رجسٹرار چیف کورٹ غلام عباس چوپا کی خدمات کو بھی سراہا اور کہا کہ گلگت بلتستان کی ماتحت عدالتوں کے ججز کو سختی سے حکم دیا ہے کہ مقدمات میں14دن سے زیادہ تاریخ نہ دیںاس حکم کی عدولی پر تادیبی کارروائی عمل میں لائی جاتی ہے تمام اضلاع کے ججز کو وقت کی پابندی کا بھی حکم دیا ہے خود برا ہ راست دفتر کال کر کے حاضری کو یقینی بنا رہا ہوں مزید چیف کورٹ میں صوبائی حکومت کے مقدمات اور عملدر آمد کے مقدمات میں جو سیکرٹریز بروقت پیراوائز کمنٹس کی فراہمی اور عدالت کے احکامات پر عملدر آمد نہیں کر رہے انکی تنخواہ بند اور توہین عدالت کی کارروائی شروع کر دی ہے اس موقع پر وزیر اعلی محمد خالد خورشید خان نے چیف جسٹس کا شکریہ ادا کرتے ہوئے چیف جسٹس گلگت بلتستان چیف کورٹ جسٹس ملک حق نواز کے سستے اور فوری انصاف کی فراہمی اور چیف کورٹ کی کارکردگی کو سراہا اور کہا کہ عدلیہ کا احترام ہم سب پر لازم ہے میرٹ کی بحالی ، قانون کی حکمرانی اور بالادستی کے لئے عدلیہ کا کلیدی کردار ہوتا ہے گلگت بلتستان میں آزاد خودمختار عدلیہ کا جو نظریہ ہے وہ مکمل نظر آرہا ہے صوبائی حکومت مزید عدل وانصاف کی فراہمی کے لئے مکمل تعاون کریگی تاکہ انصاف کا یہ سسلسلہ جاری رہے عدلیہ کو جہاں ہماری مدد درکار ہوگی ہم تیار ہیں گلگت بلتستان میں میرٹ کی بحالی ،قانون کی بالادستی اور خطے میں قیام امن ہماری حکومت کی اولین ترجیح ہے چیف کورٹ سمیت تمام عدالتوں میں ججز کی خالی آسامیوں کو جلد چیف جسٹس چیف کورٹ کی مشاورت سے میرٹ کیمطابق پر کرنے کی کوشش کرینگے تاکہ میرٹ کیمطابق عوام کو گھر کی دہلیز میں انصاف میسر ہے اس موقع پر چیف جسٹس ملک حق نواز اور وزیر اعلی نے چیف کورٹ اور ماتحت عدالتوں کے ذیلی دفاتر کا دورہ کیا اور ملاقات کے اختتام پر چیف جسٹس گلگت بلتستان چیف کورٹ جسٹس ملک حق نواز نے وزیر اعلی محمد خالد خورشید خان کو سوینئر پیش کیا اور وزیر اعلی نے شکریہ ادا کیا۔
چیف جسٹس

شیئر کریں

Top