پی ڈی ایم کا لاہور جلسہ ہر صورت میں کرنے کا اعلان 13 دسمبر کو تاریخی دن ہوگا: فضل الرحمن

31.jpg

اسٹیبلشمنٹ ناجائزحکومت کی محافظ بنی ہوئی ہے،آج ملک میں جمہوریت نہیں،آمریت کے مہرے نے جمہوریت کو دفن کردیا
پنجاب حکومت مینار پاکستان کو ڈیم بنارہی ہے تاکہ جلسہ نہ ہوسکے، حکومت نے ایک راستہ روکا تودوسرا بنا لیں گے ، میڈیا سے گفتگو
اسلام آباد(آئی این پی)اپوزیشن اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک مومنٹ(پی ڈی ایم) نے13دسمبر کو لاہور میں ہر صورت جلسہ کرنے کا اعلان کر دیا۔ پی ڈی ایم سربراہ مولانا فضل الرحمان،پیپلزپارٹی چیئرمین بلاول بھٹوزرداری اور مسلم لیگ(ن)کی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ اسٹیبلشمنٹ ناجائزحکومت کی محافظ بنی ہوئی ہے، آج ملک میں جمہوریت نہیں، آمریت کے مہرے نے جمہوریت کو دفن کردیا ہے، لاہورجلسہ ضرور ہو گا اور 13دسمبر کوتاریخی دن ہو گا،پنجاب حکومت مینار پاکستان کو ڈیم بنارہی ہے تاکہ جلسہ نہ ہوسکے، حکومت نے ایک راستہ روکا تو دوسرا بنا لیں گے ،دوسرا روکا تو تیسرا بنا لیں گے، جلسہ روکنے کے حکومتی اقدام کا بھی راستہ رو کیں گے، حکومت عوامی سیلاب کو روک نہیں پائے گی، شٹر ڈاؤن، پہیہ جام اور لانگ مارچ کا اعلان آئندہ دنوں میں کریں گے، ملک میں موجودہ اسمبلیوں کے ذریعہ سینیٹ کے الیکشن ہو ئے تو وہ بظاہر جعلی قسم کے الیکشن ہوں گے، الیکٹرول کالج کو توڑنا ہمارا جمہوری و آئینی راستہ ہے، پی ڈی ایم میں شامل تمام جماعتیں ایک پیج اور ایک اسٹیج پر ہیں، ہم عمران خان اور ان کے سہولت کاروں کو گھر بھیجنے کے لئے نکلے ہیں۔بدھ کوپاکستان ڈیموکریٹک مومنٹ کا اجلاس سربراہ مولانا فضل الرحمان کی رہائش گاہ پر ہوا،جس میں مولانا فضل الرحمان،مسلم لیگ (ن)کی نائب صدر مریم نواز،شاہد خاقان عباسی ،سینیٹرپرویز رشید، احسن اقبال، مریم اورنگزیب،پیپلزپارٹی چیئرمین بلاول بھٹو زرداری، یوسف رضاگیلانی، راجہ پرویز اشرف، شیری رحمان اور مولانا اسعد محمود نے شرکت کی۔ اجلاس میں13دسمبر کو لاہور میںجلسے،لانگ مارچ ،31دسمبر تک اپوزیشن جماعتوں کے استعفوں کے حوالے سے معاملات پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ذرائع کے مطابق اجلاس میں حکومت کی جانب سے لاہور جلسے میں رکاوٹیں ڈالنے کے خلاف متبادل پلان اور پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے مستقبل کے لائحہ عمل پر تبادلہ خیال کیا گیا۔اجلاس کے بعد پی ڈی ایم سربراہ مولانا فضل الرحمان ،مریم نواز اور بلاول بھٹوزرداری نے میڈیا سے گفتگو کی۔ مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ لاول بھٹو زرداری اور محترمہ مریم نواز کو ظہرانے کے لئے مدعو کیا تھا، پنجاب حکومت مینار پاکستان کو ڈیم بنارہی ہے تاکہ جلسہ نہ ہوسکے ایک طرف کہتے ہیں کہ جلسہ نہیں روکتے مگر دوسری جانب رکاوٹیں بھی کھڑی کر رہے ہیں،حکومت گھربیٹھے اپوزیشن کے خلاف گیم پلان بنا رہی ہے اور ساتھ کہتے ہیں کہ ہم نے تو جلسہ نہیں روکنا۔انہوں نے کہا کہ جلسہ ضرور ہو گا اور 13دسمبر تاریخی دن ہو گا، اگر انہوں نے ایک راستہ روکا تو دوسرا بنا لیں گے دوسرا روکا تو تیسرا بنا لیں گے، لیکن میڈیا کو ہم اپنا پلان نہیں بتائیں گے، ہمیں جلسے روکنے کے حکومتی اقدام کا بھی راستہ روکنا ہیں، حکومت عوامی سیلاب کو روک نہیں پائے گی۔فضل الرحمان نے کہا کہ شٹر ڈاؤن، پہیہ جام اور لانگ مارچ کا اعلان آئندہ دنوں میں کریں گے اور یہ دیکھیں کہ کب ڈھال بنا کر ان کے سر پر مارنا ہے۔ فضل الرحمان نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ آج ملک میں جمہوریت نہیں۔
پی ڈی ایم

شیئر کریں

Top