لاہور ہائی کورٹ کا 4 ہفتوں میں چوہدری برادران کیخلاف تحقیقات مکمل کرنے کا حکم

5daa8b6a680c0.jpg

کیاالزامات کیاہیں؟ جسٹس صداقت کا استفسار، آمدن سے زائداثاثوں اورغیرقانونی بھرتیوں کے ا لزامات ہیں،وکیل
چیئرمین نیب نے ہمارے کیخلاف 19سال پرانے معاملے کی دوبارہ تحقیقات کا حکم دیا ہے،وکیل چوہدری برادران
لاہور(آئی این پی)لاہور ہائیکورٹ نے چوہدری برادران کے اثاثوں کی تحقیقات4ہفتوں میں مکمل کرنے کا حکم دے دیا ۔عدالت نے چیئرمین نیب کے اختیارات کیخلاف کیس کی سماعت کی اور ڈی جی نیب شہزاد سلیم لاہورہائیکورٹ میں پیش ہوئے۔جسٹس صداقت علی نے استفسار کیا کہ درخواست گزاروں پرالزامات کیاہیں؟ وکیل نے بتایا کہ آمدن سے زائداثاثوں اورغیرقانونی بھرتیوں کیالزامات ہیں۔ڈی جی نیب نے عدالت کو بتایا کہ چودھری برادران کیخلاف غیرقانونی بھرتیوں کا کیس بند کردیا گیا ہے اور آمدن سے زائد اثاثوں کا کیس التوا کا شکار ہے۔عدالت کو بتایا گیا کہ چوہدری برادران کیخلاف تحقیقات 6ماہ میں مکمل کرلیں گے۔ لاہور ہائیکورٹ نے چارہفتوں میں چوہدری برادران کی آمدن سے زائد اثاثوں کی انوسٹی گیشن مکمل کرنے کا حکم دے دیا ہے۔چوہدری برادران نے چیئرمین نیب کے اختیارات کیخلاف لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کر رکھا ہے اور درخواست میں موقف اختیار کیا کہ یہ سیاسی انجینئرنگ کرنیوالے ادارہ ہے۔درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ نیب کا 19 برس پرانے آمدن سے زائد اثاثہ جات کی انکوائری دوبارہ کھولنے کا اقدام غیرقانونی قرار دیا جائے۔انہوں نے موقف اپنایا کہ چیئرمین نیب نے ہمارے کیخلاف 19سال پرانے معاملے کی دوبارہ تحقیقات کا حکم دیا ہے اور اس قبل بھی نیب نے 19سال قبل آمدن سے زائد اثاثہ جات کی مکمل تحقیقات کیں مگر ناکام ہوا۔
حکم

شیئر کریں

Top