چوروں کی ٹیم کو عوام نے مسترد کر دیا اب کس منہ سے ہمدردی مانگ رہے ہیں : وزیر اطلاعات

g7.jpg

چوروں کے ٹولے نے ماضی میں جیبیں بھریں اپوزیشن لیڈر جھوٹ کا کارخانہ چلا رہا ہے،لوٹ مار پارٹی کے ماہرین کی ایسی گیدڑ بھبکیوں سے کوئی فرق نہیں ہوگا
گلگت بلتستان میں کہیں بھی آٹا بحران نہیں عوام کو ان کے دہلیز پر آٹا بروقت مل رہا ہے،تحریک انصاف گلگت بلتستان کے عوام کی امیدوں پر ہر صورت پورا اتر ے گی
گلگت (سپیشل رپورٹر)وزیر اطلاعات،پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ گلگت بلتستان نے کہا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف پہ اعتماد دراصل باریاں لینے والوں کے خلاف عدم اعتماد تھا وہ اس لئے کی باریاں تو وہ لیتے رہے مگر عوام کے مسائل جوں کے توں رہے۔ بجلی کی کمی سمیت وہ تمام مسائل جس میں آج گلگت بلتستان ڈوبا ہوا ہے وہ سابقہ حکمران جماعتوں کے مرہون منت ہیں۔ میڈیا کو جاری ایک بیان میں وزیر اطلاعات نے اپوزیشن رہنما کے بیان پہ ردعمل میں کہا کہ ان کا بیان حقائق کے منافی، من گھڑت الزامات اور سیاسی بد دیانتی پر مبنی ہے اور گلگت بلتستان کی ترقی کے عمل کو سبوتاژ کرنے کی ایک بھونڈی سازش ہے جسے ہم بے نقاب کرینگے۔ایسالگ رہا ہے جیسے اپوزیشن لیڈر جھوٹ کا کارخانہ چلا رہا ہے۔لوٹ مار پارٹی کے ماہرین کی ایسی گیدڑ بھبکیوں سے کوئی فرق نہیں ہوگا،گلگت بلتستان۔صوبائی وزیر نے ان بنیاد الزامات کو سوچی سمجھی سازش قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ان چوروں کی ٹیم کو عوام نے یکسر مسترد کردیا ہے اب کس منہ سے عوام کی ہمدردی لے رہے ہیں۔چوروں کے ٹولے نے ماضی میں جیبیں بھریں۔گلگت بلتستان میں کہیں بھی آٹا بحران نہیں عوام کو ان کے دہلیز پر آٹا بروقت مل رہا ہے۔گلگت بلتستان کے کوڑے کو اسلام آباد میں ہی فروخت کرنے والے کس منہ سے عوام کی بات کر رہے ہیں انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ عوام منفی پروپیگنڈوں کا حصہ ہر گز نہ بنیں۔صوبائی وزیر کا مزید کہنا تھا کہ پی ٹی آئی پہ عوام کا اعتماد ہر صورت برقرار رکھا جائے گا اور ماضی کا تمام گند آہستہ آہستہ صاف کر دا جائے گا اور تبدیلی کا یہ سفر جاری رہے گا۔صوبائی حکومت اپنے کام خوش اسلوبی کے ساتھ اچھی طرح نبھانا جانتی ہے،وزیر اعلی گلگت بلتستان کے ویژن کے مطابق گلگت بلتستان میں مفاد عامہ کے تمام منصوبے بروقت تکمیل اور معیار پر کبھی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔ امجد ایڈوکیٹ اس بات کا جواب دیں کہ ان کے اپنے دور حکومت میں عوام کو عدم استحکام اور عدم تحفظ کے ماحول میں کیوں دھکیلا گیا؟سر عام نوکریوں کی بولیاں لگ رہی تھی،ترقی کا پہیہ مکمل طور پر جام تھا۔پیپلز پارٹی کے اپنے ہی دور اقتدار میں گلگت بلتستان کی تعمیر و ترقی پر کاری ضرب لگ چکی تھی،آج کس منہ سے نو منتخب صوبائی حکومت پر بے جا تنقید کی جارہی ہے۔کھسیانی بلی کھمبا نوچے کے مصداق پیپلز پارٹی کی اب نوسربازی نہیں چلے گی۔علاقے میں مایوسی اور سراسیمیگی پھیلانے سے کچھ حاصل نہیں ہوگااور نہ ہی ایسے اوچھے ہتھکنڈوں سے ہمارا تعمیر و ترقی کا عزم کبھی بھی متزلزل نہیں ہوسکتا۔مگرمچھ کے آنسوں بہانے والے کس منہ سے گلگت بلتستان کی بات کر رہے ہیں آج پی ٹی آئی کو بنیادی طور پہ اگر کوئی مسئلہ ہے تو وہ ماضی کی حکومتوں کی وہ نااہلیاں ہیں جن کو آج ٹھیک کیا جا رہا ہے تو پی ٹی آئی کو مورد الزام ٹھہرایا جانا منافقت ہے جس کو عوام کے سامنے طشت از بام کرنا بہت ضروری ہے۔ وزیر اطلاعات نے کہا کے الزامات کا کھیل کوئی آج کا نہیں یہ تو باریاں لینے والوں کا وطیرہ ہے جن سے پی ٹی آئی ہرگز گھبرانے والی نہیں۔
وزیر اطلاعات

شیئر کریں

Top