سانحہ مچھ، تمام وعدے پورے کرینگے ،وزیر اعظم کی متاثرین کو یقین دہانی

16-2.jpg

بھارت شیعہ سنی علماء کو شہید کر کے فرقہ واریت کو ہوا د ے رہاہے ، امت مسلمہ کو تقسیم کر نے کی کوششوںکے خاتمے کیلئے کاوش کرونگا ، سیکیورٹی فورسز کا پورا سیل بنایا جائیگاجو اس طرح کی فرقہ واریت کو ختم کرے گا،
ملک میں دہشتگردی زیادہ تھی تب بھی میں ہزارہ برادری کو ملنے آیا ،ایک ہی کالعدم تنظیم نے ہزارہ برادری کو بہت زیادہ نشانہ بنایا ، جب اس تنظیم کا نام لے کر بات کی تو مجھے بھی دھمکیاں دی گئیں ، میڈیا سے گفتگو
کوئٹہ (آئی این پی)وز یر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ پوری دنیا میں شیعہ سنی فسادات کون پھیلا رہا ہے سب کو علم ہے ، پاکستان میں لوگوں کو متحد کریں گے بلکہ میری پوری کوشش ہے امت مسلمہ کو تقسیم کرکے حکومت کرنے کی جو کوشش کی جا رہی ہے اس کو بھی ختم کیاجائے، ملک میں فتنہ پھیلانے والے عناصر کے پیچھے جائیں گے میں قوم کو یکجا کرنے کیلئے پوری کوشش کروں گا،مارچ میں انٹیلی جنس نے آگاہ کیا ،بھارت بلوچستان میں دہشت گردی کرنا چاہتا ہے جس میں شیعہ سنی علماء کو شہید کر کے فرقہ واریت کو ہوا دی جا رہی ہے ،سیکیورٹی فورسز کا پورا سیل بنایا جائیگاجو اس طرح کی فرقہ واریت کو ختم کرے گا،ہم اس مسئلے کے حل کیلئے پوری طرح پیچھے جائیں گے، جب ملک میں دہشتگردی زیادہ تھی تب بھی میں ہزارہ برادری کو ملنے آیا ،ایک ہی کالعدم تنظیم نے ہزارہ برادری کو بہت زیادہ نشانہ بنایا ، جب اس تنظیم کا نام لے کر بات کی تو مجھے بھی دھمکیاں دی گئیں،20 سالوں سے ہزارہ برادری کے ساتھ سے جو میں تمام مسئلہ سمجھتا ہوں،ہزارہ برادری کے ساتھ ہونے والے واقعہ کا پوری طرح علم تھا ،اس لیے وزیر داخلہ کو کوئٹہ بھیجا، ہزارہ برادری کی تمام شرائط مانی ہیں ،آپ کو تحفظ فراہم کریں گے،۔ ہفتہ کو وزیر اعظم عمران خان نے یہاں کوئٹہ میں اجلاس کی صدارت اور ہزارہ برادری سے اظہار افسوس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ افغان جہاد ختم ہونے کے بعد عسکری گروپوں نے پاکستان کو بہت نقصان پہنچایا، جب ملک میں دہشتگردی زیادہ تھی تب بھی میں ہزارہ برادری کو ملنے آیا ‘ ایک ہی کالعدم تنظیم نے ہزارہ برادری کو بہت زیادہ نشانہ بنایا جبمیں نے اس تنظیم کا نام لے کر بات کی تو مجھے بھی دھمکیاں دی گئیں،20 سالوں سے ہزارہ برادری کے ساتھ سے جو میں تمام مسئلہ سمجھتا ہوں۔ وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ مارچ 2020ء میں انٹیلی جنس نے آگاہ کیا کہ بھارت بلوچستان میں دہشت گردی کرنا چاہتا ہے جس میں شیعہ سنی علماء کو شہید کر کے فرقہ واریت کو ہوا دی جائے گی ، آئی ایس آئی کو داد دیتا ہوں جس نے 4 بڑے دہشت گردی کے واقعات کو ناکام بنایا،مچھ سانحہ ایک بڑی گیم کا حصہ ہے اسی لئے وزیر داخلہ کو کوئٹہ بھیجا تاکہ شہداء کے لواحقین کو اعتماد دلایا جائے کہ حکومت ہر طرح سے ان کا ساتھ دے گی اور اس واقعہ میں ملوث لوگوں کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے گا۔ وزیر اعظم نے کہاکہ فرقہ واریت کی وارداتیں 35 سے 40 لوگ کر رہے ہیں ، ایک کالعدم تنظیم لشکر جھنگوی ہے جو ایس آئی ایس آئی کا حصہ بن گئی ،ان میں سے بھی زیادہ تر لوگوں کو مارا جا چکا ہے باقی لوگوں کو ختم کرنے کیلئے سیکیورٹی فورسز کا پورا سیل بنایا جائیگاجو اس طرح کی فرقہ واریت کو ختم کرے گا،ہم اس مسئلے کے حل کیلئے پوری طرح پیچھے جائیں گے۔ انہوں نے کہاکہ جب میں وزیر اعظم نہیں تھا تو یہاں آیا تھا وزیر اعظم ہوتے ہوئے کوئی یہ نہیں کہہ سکتا کہ آگے سانحہ ہوگا یانہیں ،اسی لئے بار بار پیغامات بھجوائے کہ آپ لاشوں کو دفنا دیں تو میں فوری وہاں آ جاؤں گا جب آپ شرط لگائیں گے تو یہ آنے والے وزرائے اعظم کیلئے مثال بن جائے گی۔ عمران خان نے کہا کہ ہزارہ برادری کے ساتھ ہونے والے واقعہ کا مجھے پوری طرح علم تھا ، پوری قوم آپ کے ساتھ کھڑی تھی آگے بھی یہ حکومت اور عوام آپ کے ساتھ کھڑی رہے گی ،آپ کی ماؤں بہنوں کا خیال رکھا جائے گا‘ آپ کی تمام شرائط مانی ہیں آگے بھی آپ کو تحفظ فراہم کریں گے۔ وزیر اعظم نے کہاکہ پوری دنیا میں شیعہ سنی فسادات کون پھیلا رہا ہے سب کو علم ہے ، میری پوری کوشش ہے کہ پاکستان میں لوگوں کو متحد کریں بلکہ امت مسلمہ کو تقسیم کرکے حکومت کرنے کی جو کوشش کی جا رہی ہے اس کو بھی ختم کیاجائے،پاکستان نے پوری کوشش کی کہ ایران اور سعودی عرب کے آپس کے تعلقات کو ٹھیک کیا جائے۔ انہوں نے کہاکہ ملک میں فتنہ پھیلانے والے عناصر کے پیچھے جائیں گے میں قوم کو یکجا کرنے کیلئے پوری کوشش کروں گا۔
وزیراعظم

شیئر کریں

Top