امجد ایڈووکیٹ نے نومل کے عوام کو ووٹ دینے کا صلہ دیدیا :ترجمان ن لیگ

g17.jpg

اپوزیشن لیڈر امجد ایڈوکیٹ نے ترقیاتی منصوبوں کے خلاف بھی واویلہ مچاکر یہ ثابت کردیا ہے وہ ماضی میں انتہا پسند تھا
پلوں کی تعمیر میں تاخیر کا ذمہ دار بھی امجد ہے گلگت بلتستان میں انتہاپسندانہ عناصر کو ایک بار پھر منہ کی کھانی پڑے گی
گلگت(بادشمال نیوز)پاکستان مسلم لیگنگلگت بلتستان کے سنٹرل سیکرٹریٹ کے ترجمان نے اپوزیشن لیڈر امجد ایڈوکیٹ کے بیان پر ردعمل دیتے ہوئے کہاہیکہ آخر کار بلی تھیلے سے باہر آگئی اور چور کی داڑھی میں تنکے کے مصداق امجد ایڈوکیٹ نے جہاں اپنی انتہا پسندانہ سوچ کی عکاسی کی ہے وہاں نومل کی عوام کو بھی بدنامی اور اپنی انتہا پسندی کی زہنیت کا نشانہ بنایا ہے۔ترجمان نے کہاہیکہ مسلم لیگن کی قرارداد میں انجنئیرنگ کالج کو نذر آتش کرنے,ترقیاتی منصوبوں کو نقصان پہنچانے,الیکشن میں دھاندلی اور پلوں کی تعمیر میں تاخیر کا زمہ دار چیف سیکرٹری,سیکرٹری پلاننگ اور سرکاری اداروں کو زمہ دار ٹھرایا تھا۔مسلم لیگ ن کی قراداد میں انجینئرنگ کالج کو نقصان پہنچانے والوں کو کیفرکردار تک پہنچانے کی بات کی گئی تھی اور پلوں کی تعمیر میں تاخیر پر سیکرٹری پلاننگ کولیکن امجد ایڈوکیٹ نے براہ راست نومل والوں کا نام لیکر ان کے گلے میں بدنامی کا طوق ڈالا اور امجد ایڈوکیٹ کو ووٹ دینے کا خوب صلہ نومل والوں نے پالیا ہے۔حالانکہ مسلم لیگن نے کسی علاقے کا نام نہیں لیا تھا۔دوسری طرف امجد ایڈوکیٹ نے ترقیاتی منصوبوں کے خلاف بھی واویلہ مچاکر یہ ثابت کردیا ہے کہ وہ ماضی میں انتہا پسند تھا۔آج بھی ہے اور اس کے انتہا پسند آقا گلگت بلتستان میں آج بھی انتہا پسندی کے زریعے اپنا غنڈہ راج چاہتے ہیں۔ترجمان نے مزید کہاکہ مسلم لیگ ن ترقی پسند سوچ اور مستحکم امن کے برانڈ کا نام ہے۔مسلم لیگ ن نے اپنے 5 سالہ دور حکومت میں تعمیروترقی کو حقیقت بنایا اور انتہا پسندی کو نکیل ڈالی۔امجد ایڈوکیٹ کو انجینئرنگ کالج کو نذر آتش کرنے والوں کی مزمت کرنی چاہیے تھی اور ترقیاتی منصوبوں کی حمایت لیکن اسے مزمت کیلئے دیامر کے سکول تو نظر آئے لیکن انجینئرنگ کالج نہیں جو اسی کی انتہاپسندانہ سوچ کا واضح ثبوت ہے۔ترجمان نے کہاکہ نومل کی عوام امجد ایڈوکیٹ کا گریباں پکڑ کر پوچھے کہ انجینئرنگ کالج حادثہ میں اس نے نومل والوں کا نام کیوں لیا۔انہوں نے کہاکہ پلوں کی تعمیر میں تاخیر کا زمہ دار اب امجد ایڈوکیٹ بھی ہے جبکہ اس کے انتہاپسند آقا اور حواری گلگت بلتستان کو ماضی کی طرف دھکیلنے کی خواہش رکھتے ہونگے۔لیکن مسلم لیگ ن گلگت بلتستان کو تعمیروترقی کی مثال بنائے گی اور گلگت بلتستان میں انتہاپسندانہ عناصر کو ایک بار پھر منہ کی کھانی پڑے گی۔
تر جمان ن لیگ

شیئر کریں

Top