پی پی کے بعد ن لیگ نے بھی فضل الرحمن پر عدم اعتماد کر دیا : حافظ حسین احمد

hafiz-hussain.jpg

بلاول کے بعد مریم نے بھی سینٹ انتخابات میں حصہ لینے کا فیصلہ کرکے پی ڈی ایم کے فیصلوں کی نفی کردی، آر یا پار کرنے کا اعلان
حکمرانوں کو اسمبلی سے نکالنے والے خود جانے کیلئے بے تاب ، منہ پر استعفے مارنے والے اب خود کسی کو منہ دکھانے کے قابل نہیں رہے
کوئٹہ(آئی این پی) جمعیت علماء اسلام پاکستان کے سینئر رہنما اور سابق سینیٹر حافظ حسین احمد نے کہا ہے کہ پیپلز پارٹی کے بعد ن لیگ نے بھی مولانا فضل الرحمن پر عدم اعتماد کا اظہار کردیا ہے، بلاول زرداری کے بعد مریم صفدر نے بھی سینٹ انتخابات میں حصہ لینے کا فیصلہ کرکے پی ڈی ایم کے فیصلوں کی نفی کردی ، آر یا پار کا اعلان کرنے والی مریم صفدر نے پی ڈی ایم کے فیصلوں پرمفادات کی آری چلا کر آر پار کردیا، حکومت کو اسمبلی سے نکالنے والے خود دھاندلی زدہ اسمبلی میں جانے کے لیے بے تاب ہیں، اسپیکر کے منہ پراستعفے مارنے والے اب خود کسی کو منہ دکھانے کے قابل نہیں رہے، مولانا فضل الرحمن کی جیب میں بھی کچھ ’’اپنوں ‘‘ کے استعفے تھے شاید مریم اور بلاول کے ہاتھوں مولاناکی جیب کٹ چکی ہے۔وہ جامعہ مطلع العلوم کوئٹہ میں ملک بھر سے آنے والے جے یو آئی پاکستان کے سینئر اراکین کو دئیے گئے عشائیہ کے بعد میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کررہے تھے، اس موقع پر جمعیت علماء اسلام پاکستان کے سینئر ترین رہنما مولانا محمد خان شیرانی، مولانا گل نصیب خان، مولانا شجاع الملک، پیر عالم زیب شاہ، عبدالوحید، حافظ فضل محبوب اور دیگررہنما بڑی تعداد میں موجود تھے، حافظ حسین احمد کا مزید کہنا تھا کہ مسلم لیگ ن کا سینٹ الیکشن میں حصہ لینے اور پیپلز پارٹی کا قومی اسمبلی میں تحریک عدم اعتماد لانا پی ڈی ایم کے فیصلوں اور مولانا فضل الرحمن پر عدم اعتماد ہے، انہوں نے کہا کہ پی ڈی ایم قومی اسمبلی سے حکومت کو نکالنے کے بجائے خود دھاندلی زدہ اسمبلی میںجارہی ہے جس سے ان کے استعفوں کا حشر بھی سامنے نظر آرہا ہے مزے کی بات یہ ہے کہ یہ نئی پیش رفت پی ڈی ایم کے 20ستمبر 2020کے طے شدہ فیصلوں اور میثاق پاکستان کی نفی ہے، انہوں نے کہا کہ ضمنی الیکشن اور سینٹ انتخابات میں حصہ لینے کے لیے ویٹو پاور پہلے بلاول زرداری نے اور اب مریم صفدر نے استعمال کیا، پی ڈی ایم فروٹ چاٹ ، چنا چاٹ کے بعد تھوک چاٹ پر آگئی ہے
، حافظ حسین احمد

شیئر کریں

Top