لوگوں کی خلا میں جانے کی خواہش آسان ، دنیا کا پہلا نجی خلائی سٹیشن کا عملہ متعارف

Axiom-station-forward-view.png

دنیا کے پہلے نجی خلائی اسٹیشن پر پرواز کے لیے جانے کے خواہش مند یہ تین افراد فی کس 55ملین ڈالرز ادا کریں گے، خلا میں جانے والے یہ تینوں افراد مدار میں تحقیق کریں گے
واشنگٹن(آئی این پی)دنیا کے پہلے نجی خلائی اسٹیشن عملے کی قیادت امریکی خلائی ادارے (ناسا)کے سابق خلاباز کر رہے ہیں اور اب یہ ہیوسٹن کی کمپنی ایکسیم اسپیس کے لیے کام کر رہے ہیں۔ مزید تفصیلات کے مطابق( نا سا) اسپیس اسٹیشن پروگرام کے سابق مینیجر کا اس حوالے سے کہنا تھا کہ یہ بین الاقوامی خلائی اسٹیشن کی پہلی نجی پرواز ہے اور انہوں نے اسے پہلے ایسا کبھی نہیں دیکھا جب کہ یہ ان کی بھی بین الاقوامی خلائی اسٹیشن کے لیے پہلی نجی پرواز ہو گی۔دنیا کے پہلے نجی خلائی اسٹیشن پر پرواز کے لیے جانے کے خواہش مند یہ تین افراد فی کس 55 ملین ڈالرز ادا کریں گے، خلا میں جانے والے یہ تینوں افراد مدار میں تحقیق کریں گے جب کمپنی خلا کے اس سفر کا آغاز آئندہ سال جنوری میں کرے گی۔اس حوالے سے مشن کمانڈر کا کہنا تھا کہ ہمارے ساتھ تین لوگ خلا میں جانے کے قابل ہوں گے اور ہم انہیں یہ موقع فراہم کررے ہیں، پہلا کریوخلائی اسٹیشن پر 8 روز گزارے گا۔

شیئر کریں

Top