کرپشن کے ذمہ دار افراد کیخلاف بلا امتیاز کاروائی کر رہے ہیں :شاہ محمود قریشی

14-1.jpg

پی ڈی ایم کے قول و فعل میں تضاد ہے ، اپوزیشن کہہ رہی ہے کہ مناسب وقت پر استعفے دیں گے تو وہ وقت 2023ہی ہوگا ، ہمیں پہلے ہی شک تھا کہ پی ڈی ایم کا استعفے دینے کاکوئی ارادہ نہیں
پی پی کے پاس پنجاب میں سینیٹ کی نشست منتخب کرنے کی تعداد نہیں،امریکی وزیر خارجہ کوآگاہ کیا کہ عدالتی فیصلے کے خلاف سندھ حکومت نے نظر ثانی کی درخواست دائر کردی ہے، ملتان میں میڈیا سے گفتگو
ملتان(آئی این پی) وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہاہے کہ ہم کر پشن کے ذمہ دار افراد کیخلاف بلا امتیاز کارروائی اورذمہ دارو ں کو بے نقاب کر رہے ہیں ،ہم ہر اس ادارے کے ساتھ تعاون کر رہے ہیں جو کرپٹ عناصر کیخلاف کارروائی کرے گا، پی ڈی ایم کے قول و فعل میں تضاد ہے ، پی ڈی ایم کہہ رہی ہے کہ مناسب وقت پر استعفے دیں گے تو وہ وقت 2023ہی ہوگا ، ہمیں پہلے ہی شک تھا کہ پی ڈی ایم کا استعفے دینے کاکوئی ارادہ نہیں ، پی پی کے پاس پنجاب میں سینیٹ کی نشست منتخب کرنے کی تعداد نہیں،امریکی وزیر خارجہ نے عدالتی فیصلے پر نظر ثانی کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔ہم نے آگاہ کیا کہ عدالتی فیصلے کے خلاف سندھ حکومت نے نظر ثانی کی درخواست دائر کردی ہے،پاکستان سفارتی ذرائع سے بھارتی مکروہ اقدامات اور تشدد کو بے نقاب کر رہا ہے۔مستقبل میں بھارت کا مکروہ چہرہ مزید بے نقاب ہوگا،اسامہ بن لادن کی جانب سے نواز شریف کی جو مالی معاونت کی گئی وہ ریکارڈ پر ہے ، ملکی سلامتی کے معاملات پر تبصرہ نہیں کرنا چاہوں گا ۔ہفتہ کو ملتان میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا کہ کرپشن کو روکنا عمران خان کی ترجیحات میں شامل ہے ۔ کرپشن سے کمایا گیا پیسہ ملک سے باہر چلا جائے توملک ترقی نہیں کر سکتا۔ ہم کرپشن کے ذمہ دار افراد کیخلاف بلا امتیاز کارروائی اورذمہ دارو ں کو بے نقاب کر رہے ہیں۔ہم ہر اس ادارے کے ساتھ تعاون کر رہے ہیں جو کرپٹ عناصر کیخلاف کارروائی کرے گا۔ پی ڈی ایم کے قول و فعل میں تضاد ہے۔ پی ڈی ایم کہہ رہی ہے کہ مناسب وقت پر استعفے دیں گے تو وہ وقت 2023ہی ہوگا۔ ہمیں پہلے ہی شک تھا کہ پی ڈی ایم کا استعفے دینے کاکوئی ارادہ نہیں۔ پی پی کے پاس پنجاب میں سینیٹ کی نشست منتخب کرنے کی تعداد نہیں۔ سینیٹ کا رکن بننے کے بعد ہی چیئرمین کیلئے کوشش کی جاسکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کل میری امریکہ کے وزیر خارجہ انتونی بلنکن سے ٹیلی فونک گفتگو ہوئی۔ امریکی وزیرِ خارجہ کو وزیراعظم عمران کی ترجیحات سے متعلق تفصیلی آگاہ کیا۔ افغان امن عمل، دہشت گردی ، ماحولیات اور کلائمیٹ چینج پر عمران خان کے ویژن سے آگاہ کیا۔ انہیں بتایا وزیراعظم عمران خان کا موسمیاتی تبدیلی سے متعلق موقف واضح ہے۔ امریکی وزیر خارجہ کو ایک عدالتی فیصلے پر تشویش تھی جس پر انہیں اعتماد میں لیا۔ انہیں بتایا کہ پاکستان میں عدالتیں مکمل آزاد، آئین و قانون کے مطابق فیصلے کر رہی ہیں۔ انہیں بتایا ہمارے ہزاروں لوگ دہشت گردی سے متاثر ہوئے ہم نے دہشت گردی سے اپنے علاقوں کو صاف کیا ۔ پاکستان نے دہشتگردی کیخلاف پیش رفت کی ہے۔ہم نے انہیں آگا ہ کیا کہ قانون کے دائرہ میں رہتے ہوئے اپنی ذمہ داریو ں کا احساس ہے ۔امریکی وزیر خارجہ نے عدالتی فیصلے پر نظرِ ثانی کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔ہم نے آگاہ کیا کہ عدالتی فیصلے کے خلاف سندھ حکومت نے نظر ثانی کی درخواست دائر کردی ہے۔ڈینیل پرل کے قتل پر انکے خاندان کو انصاف کی فراہمی کے خواہاں ہیں۔ امریکی وزیر خارجہ سے تفصیلی گفتگو ہوئی یہ سلسلہ جاری رہے گا۔میں نے انتونی بلنکن کو ذمہ داری سنبھالنے پر مبارکباد دی۔ امید ہے انتونی بلنکن کے تجربات سے خطے کے مسائل حل کو کرنے میں مددگار ثابت ہوں گے۔ انہوں نے کہا پاکستان سفارتی ذرائع سے بھارتی مکروہ اقدامات اور تشدد کو بے نقاب کر رہا ہے۔مستقبل میں بھارت کا مکروہ چہرہ مزید بے نقاب ہوگا ۔پاکستان نے کشمیر کے مسئلہ کو انتہائی موثر انداز میں اٹھایا ہے۔ تحریک انصاف کی حکومت کی جانب سے مسئلہ کشمیر کو اٹھایا گیا تو ہی انٹرنیشنل کمیونٹی حرکت میں آئی ہے۔ہم نے شراکت داروں اور عالمی برادری کو باور کرایا کہ بھارت پاکستان میں عدم استحکام چاہتا ہے۔ بھارت کے یوم جمہوریہ کو کشمیریوں نے یوم سیاہ کے طور پر منایا اور کسانوں نے احتجاج کیا۔ ہندوستان میں کسانوں کی تحریک زور پکڑ چکی ہے۔ہندوستان کے تمام صوبوں میں کسان احتجاجی تحریک میں بڑھ چڑھ کر حصہ لے رہے ہیں۔ہندوستان کے کسان بی جے پی کی پالیسیوں سے نالاں ہیں۔دہلی کی سرکار کسانوں کے ساتھ مذاکرات میں کامیاب دکھائی نہیں دیتی۔کشمیر کے مسئلہ پر سینٹ کی خارجہ کمیٹی میں حکومتی موقف سامنے رکھا جس کو اپوزیشن ارکان نے سراہا۔انہوں نے کہا افغان امن عمل کبھی بھی آسان نہیں تھا۔افغان امن مذاکرات کا آغاز ہوا۔ گفتگو جاری ہے لیکن فیصلہ افغانیوں نے کرنا ہے ۔ افغان امن عمل پر پیشرفت پاکستان کی خواہش ہے مگرعمل درآمد افغانیوں نے کرنا ہے۔افغانستان میں امن و استحکام پاکستان کیلئے ناگزیر ہے۔ افغانستان میں بہتری ہوگی تو پاکستان کو فائدہ ہوگا۔ خطے کے حوالے سے منصوبے اس وقت پایہ تکمیل کو پہنچیں گے جب افغانستان میں امن ہو گا۔انہوں نے کہا اسامہ بن لادن کی جانب سے نواز شریف کی جو مالی معاونت کی گئی وہ ریکارڈ پر ہے۔ ملکی سلامتی کے معاملات پر تبصرہ نہیں کرنا چاہوں گا۔انہوں نے کہا مہنگائی کی وجوہات سب کے سامنے ہیں۔ اس پر قابو پانے کیلئے ٹھوس اقدامات کر رہے ہیں۔ جس کے مثبت نتائج سامنے آئیں گے۔ ہم پاکستان کی معاشی مشکلات پر غلبہ پانے کیلئے کوشاں ہیں۔اس موقع پر چیئرمین ایم ڈی اے رانا عبدالجبار را محسن شیخ سلیم رانا افضل رانا فاروق را حمید را فہد اور یوسی 25 کے معززین کی کثیر تعداد، موجود تھی۔ اس موقع پر وزیر خارجہ نے معززین علاقہ کے مسائل سنے اور ان کے حل کیلئے موقع پر احکامات جاری کئے۔قبل ازیں وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے ملتان میں مصروف دن گزارا ۔ انہوں نے یونین کونسل 25 کا دورہ کیا ۔ اس موقع پر انہوں نے چونگی نمبر14 احمد آبا دسے رسول پورہ روڈ کی تعمیر شروع کرنے کا اعلان کیا جو کہ ایک کروڑ 35لاکھ کی لاگت سے مکمل ہو گا۔ اس موقع پر انہوں نے مجموعی طور پر اس یونین کونسل کیلئے دو کروڑ 80لاکھ روپے کی ترقیاتی سکیموں کا اعلان کیا ۔ جن کی بدولت ٹف ٹائلز سیوریج پینے کا صاف پانی ودیگر منصوبے مکمل کئے جائیں گے۔ اس موقع پر چیئرمین ایم ڈی اے رانا عبدالجبار نعیم انصاری ودیگر شخصیات موجود تھے۔وزیر خارجہ نے این اے 156 یونین کونسل 38(ایم پی اے) وسیم خان بادوزئی کے ہمراہ ساجد نواز کی رہائش گاہ پر آئے ۔ اس موقع پر اہلیان علاقہ سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے اس یونین کونسل کے لئے 5 کروڑ 18لاکھ روپے کے ترقیاتی منصوبو ںکا اعلان کیا۔ جن پر کام جاری ہے۔ انہوں نے بتایا کہ گزشتہ چالیس سال سے اس یونین کونسل میں ترقیاتی کام نہیں ہوئے تھے۔ معززین علاقہ نے ترقیاتی منصوبوں کے اعلان پر مخدوم شاہ محمود قریشی کا شکریہ ادا کیا اور ان کو خراج تحسین پیش کیا۔وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے ای بلاک اور اے بلاک شاہ رکن عالم میں میٹل روڈ کی تعمیر کا سنگ بنیاد رکھا۔ اس موقع پر صوبائی معاون خصوصی حاجی جاوید اختر انصاری سید بابر شاہ رانا عبدالجبار شہباز قریشی بلال ڈوگر و معززین علاقہ کی کثیر تعداد موجود تھی۔ وزیر خارجہ یوسی 15 میں سابق ٹکٹ ہولڈر فیاض بلوچ کی رہائش گاہ پر گئے جہاں انہوں نے معززین علاقہ سے ملاقا ت کی ۔ ان کے مسائل سنے اور ان کے حل کیلئے احکامات جاری کئے۔ یوسی 27 میں مرکزی انجمن تاجران کے رہنما خواجہ سلیمان صدیقی کی رہائش گاہ پر استقبالیہ میں شرکت کی اور یونین کونسل کے لئے ترقیاتی سکیموں کا اعلان کیا۔ اس موقع پر معززین علاقہ نے ترقیاتی سکیموں کے اعلان پر وزیر خارجہ کو خراج تحسین پیش کیا#
شاہ محمود قریشی

شیئر کریں

Top