میڈیکل اور انجینئرنگ کالجز میں گلگت بلتستان کے کوٹے میں اضافہ کرینگے :وفاقی وزیر تعلیم

g14-1.jpg

سکردو میں اکادمی ادبیات کا دفتر قائم کر نے کا مطالبہ، سپیکر کو تعاون کی یقین دہانی وفاقی وزیر تعلیم کا پانچ طلبہ کو دس دس لاکھ کی سکالرشپ کا اعلان
اسلام آباد (بادشمال نیوز) سپیکر گلگت بلتستان اسمبلی سید امجد علی زیدی نے وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود سے اسلام آباد میں ملاقات کی ہے. ملاقات میں سپیکر اسمبلی نے وفاقی وزیر تعلیم سے مطالبہ کیا ہے کہ حالیہ دنوں پنجاب کے میڈیکل کالجوں میں گلگت بلتستان کے کوٹے کی سیٹوں کے حوالے طلباء میں جو تشویش پیدا ہوئی ہے اسکا اذالہ کے لئے اپنا کردار ادا کریاور میڈیکل اور انجینئرنگ کالجوں میں گلگت بلتستان کے کوٹے میں مزید اضافہ کیا جائے. گلگت بلتستان میں میڈیکل اور انجینئرنگ کالجوں کی عدم موجودگی کی وجہ سے ہمارے طلباء کو مشکلات درپیش ہیں. سپیکر اسمبلی نے مزید کہا ہے کہ گلگت بلتستان میں لوگوں کا تعلیم کی طرف رجحان بہت ہے لیکن معیاری تعلیمی اداروں کے فقدان کی وجہ سے شہروں کا رخ کرنے پر مجبور ہیں. وفاقی حکومت تعلیم کے شعبے گلگت بلتستان کے ساتھ خصوصی تعاون کرے. ہمارے طلباء کو سکالرشپ فراہم کیے جائیں. سپیکر اسمبلی نے وفاقی وزیر تعلیم سے کہا ہے کہ سکردو میں اکادمی ادبیات کا دفتر قائم کرے. ذمین کی فراہمی کیلیے ممبران اسمبلی اپنی سالانہ اے ڈی پی سے بھی فنڈز فراہم کرینگے. بلتستان کے لوگ ادب سے خاص دلچسپی رکھتے ہیں.سپیکر اسمبلی نے مطالبہ کاہے کہ ضلع کھرمنگ میں فیڈرل بورڈ کا سینٹر پہلے موجود تھا بعد میں ختم کیا گیا اسے دوبارہ بحال کیا جائے. اس پر وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان میں شعبہ تعلیم کی ترقی کیلیے وفاق ہر ممکن تعاون فراہم کریگا. اس موقع پروفاقی وزیر تعلیم نے پانچ طلباء و طالبات کو دس دس لاکھ کی سکالرشپ کا اعلان کیا اور ضلع کھرمنگ میں فیڈرل بورڈ کے سینٹر کی بحالی اور سکردو میں اکادمی ادبیات کے دفاتر کے قیام کیلیے کارروائی شروع کرنے کی یقین دہانی کرائی. وفاقی وزیر تعلیم نے سپیکر اسمبلی سے وعدہ کیا ہے کہ گلگت بلتستان کے طلباء کوپنجاپ میں میڈیکل سیٹوں کے حوالے سیجو بھی مسائل درپیش ہیں اسکے حل اور گلگت بلتستان کے کوٹے میں اضافے کیلیے وفاقی سطح سے ہرمکمن تعاون فراہم کرینگے.
وفاقی وزیر تعلیم

شیئر کریں

Top