حکومت کو کس طرح ہٹانا ہے، اس کا فیصلہ پی ڈی ایم مشترکہ طور پر کریگی،بلاول ، مریم نواز

323664_7619416_updates.jpg

ہم ابھی عدم اعتماد کا کھیل نہیں کررہے ہم صرف اور صرف سینیٹ الیکشن لڑرہے ہیں ، پی ڈی ایم نے ضمنی اور سینیٹ انتخاب میں حصہ لینے اور لانگ مارچ سے متعلق فیصلہ مشترکہ طور پر کیا ، عوام نے سیلیکٹڈ کو ہر ضمنی انتخاب میں مسترد کردیا،یو سف رضا گیلانی پی ڈیم ایم کے مشترکہ امیدوار ہیں ، سینیٹ انتخابات عوام کے ساتھ کھڑے ہونے والے لوگوں اور اس حکومت کے ذریعے عوام پر قہر بن کر ٹوٹنے والوں کے درمیان فرق کرے گا،پی ٹی آئی کے اندر ہر صوبے میں بغاوت ہوچکی
پیپلز پارٹی چیئرمین بلال بھٹو اور مسلم لیگ (ن)کی نائب صدر مریم نواز کی ملاقات کے بعد مشترکہ پریس کانفرنس
لاہور(آئی این پی)پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلال بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ ہم ابھی عدم اعتماد کا کھیل نہیں کررہے ہم صرف اور صرف سینیٹ الیکشن لڑرہے ہیں، دونوں میں بہت فرق ہے، پی ڈی ایم نے ضمنی اور سینیٹ انتخاب میں حصہ لینے اور لانگ مارچ سے متعلق فیصلہ مشترکہ طور پر کیا ہے اس لیے اس بات کا فیصلہ بھی مشترکہ طور پر کریں گے اس حکومت کو کس طرح ہٹانا ہے، عوام نے سیلیکٹڈ کو ہر ضمنی انتخاب میں مسترد کردیا ہے۔مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز نے کہا کہ یو سف رضا گیلانی پی ڈیم ایم کے مشترکہ امیدوار ہیں ، سینیٹ انتخابات عوام کے ساتھ کھڑے ہونے والے لوگوں اور اس حکومت کے ذریعے عوام پر قہر بن کر ٹوٹنے والوں کے درمیان فرق کرے گا،پی ٹی آئی کے اندر ہر صوبے میں بغاوت ہوچکی ہے۔جمعرات کوپیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اپنے وفد کے ہمراہ جاتی امراء پہنچے جہاں ان استقبال مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز نے استقبال کیا۔بلاول بھٹو زرداری، پی پی پی وفد، مریم نواز اور دیگر مسلم لیگی قیادت کے مابین ہونے والی ملاقات میں ملکی سیاسی صورت حال اور حکومت مخالف تحریک پر تبادلہ خیال کیا گیا۔اس موقع پر پیپلزپارٹی کے وفد میں یوسف رضا گیلانی، مخدوم احمد محمود، قمر زمان کائرہ، چوہدری منظور اور حسن مرتضی شامل تھے، جب کہ (ن) لیگی قیادت میں احسن اقبال، پرویز رشید، مریم اورنگزیب، رانا ثناء اللہ اور خواجہ سعد رفیق شریک تھے۔ملاقات کے بعد مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے چیئرمین پی پی پی نے کہا کہ ملاقات کے دوران ہم نے بہت تفصیل سے سینیٹ الیکشن کے حوالے سے بات چیت کی۔انہوں نے کہا کہ اسلام آباد سے سینیٹ الیکشن کے لیے پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے مشترکہ امیدوار یوسف رضا گیلانی کی انتخابی مہم بہت اچھی طرح چل رہی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ پی ڈی ایم کی تمام سیاسی جماعتیں انتخابات کے لیے محنت کررہی ہیں، ضمنی انتخاب نے ثابت کردیا ہے کہ پورے پاکستان کے عوام پی ڈی ایم کے ساتھ ہے اور گیلانی صاحب کی کامیابی کے ساتھ یہ ثابت ہوجائے گا کہ پارلیمان بھی پی ڈی ایم کے ساتھ ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم نواز شریف، شہباز شریف، پوری مسلم لیگ(ن)کے شکر گزار ہیں جنہوں نے یوسف رضا گیلانی پر اعتماد کا اظہار کیا۔اسی موقع پر مریم نواز نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ان کی چیئرمین پی پی پی کے ساتھ اچھی بات چیت ہوئی، یوسف رضا گیلانی نہ صرف پی ڈیم ایم کے مشترکہ امیدوار ہیں بلکہ نہایت قابل عزت شخصیت ہیں۔انہوں نے کہا کہ سینیٹ انتخابات عوام کے ساتھ کھڑے ہونے والے لوگوں اور اس حکومت کے ذریعے عوام پر قہر بن کر ٹوٹنے والوں کے درمیان فرق کرے گا۔مریم نواز نے کہا کہ جو عوام کے ساتھ کھڑے ہیں یوسف رضا گیلانی ان کے امیدوار ہیں، مجھے امید ہے کہ ہر جمہوریت پسند، ہر وہ شخص جس کا تعلق کسی بھی جماعت سے ہو وہ تحریک انصاف کو ووٹ نہیں دے گا کیوں کہ ہم سمجھتے ہیں کہ تحریک انصاف عوام کی مجرم ہے، عوام کی مشکلات کا باعث ہے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ اس وقت تحریک انصاف کی حمایت ختم ہوتی نظر آرہی ہے، ان کی جماعت کے اندر ہر صوبے میں بہت بڑی بغاوت ہوچکی ہے، میرے خیال سے یہ ایک تقسیم ہے کہ جس کے ایک جانب جمہوریت پسند کھڑے ہیں دوسری جانب عوام کے مجرم کھڑے ہیںایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ایک جمہوری ملک میں یہ خبر نہیں ہونی چاہیے کہ غیر سیاسی قوتیں یا اسٹیبلشمنٹ کسی کھیل کا حصہ نہیں، خبر اس وقت بنتی ہے جب وہ کسی کھیل کا حصہ بنیں، اس لیے میں سمجھتی ہوں کہ انہیں اپنی آئینی کردار تک محدود ہونا چاہیے۔نوشہرہ کے ضمنی انتخاب میں حکمراں جماعت کی شکست کے حوالے سے سوال کے جواب میں بلاول بھٹو نے کہا کہ خیبرپختونخوا سے لے کر بلوچستان کے پشین تک حکومت کو ان ضمنی انتخابات میں شکست کا سامنا کرنا پڑا پڑا ہے، عوام نے سیلیکٹڈ کو ہر ضمنی انتخاب میں مسترد کردیا ہے۔چیئرمین پی پی پی کا مزید کہنا تھا کہ پی ڈی ایم کے یہ 2 فیصلے کہ ہم حکومت کو ہر میدان میں چیلنج کریں گے اس نے پوری سیاسی صورتحال کو تبدیل کردیا ہے، حکومت کی بوکھلاہٹ پورے پاکستان کے سامنے ہیں وہ بری طرح ایکسپوز ہوچکے ہیں۔ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا پی ڈی ایم کا مقصد پاکستان کو جمہوریت کو بحال کرنا ہے جس میں ہر ادارہ اپنا آئینی کردار ادا کرے، ہماری طویل المدتی جدو جہد ہے کسی ایک چیز سے ہمیں فوری کامیابی نہیں ملے گی اس کے لیے ہمیں مسلسل کام کرنا پڑے گا۔

شیئر کریں

Top