اسرائیلی صدر سے ملاقات کے دوران بائیڈن کی ایران کو سخت تنبیہ

2021-06-28t203503z_959646081_rc2w9o9zim1f_rtrmadp_3_usa-israel.jpg

میری نگرانی میں ایران کبھی بھی جوہری ہتھیار حاصل نہیں کر سکتا،بائیڈن
امریکا سے عظیم اسرائیل کا کوئی دوست نہیں ہے،اسرائیلی صدر
واشنگٹن(آئی این پی )امریکی صدر جوبائیڈن سے اسرائیلی صدر نے وائٹ ہاؤس میں ملاقات کی ۔امریکی میڈیا کے مطابق جو بائیڈن اسرائیل کو یہ یقین دلانا چاہتے ہیں کہ گرچہ ان کی انتظامیہ جوہری معاہدے میں دوبارہ شمولیت چاہتی ہے تاہم وہ جوہری ہتھیاروں سے لیس ایران کو قطعی برداشت نہیں کریں گے۔امریکی صدر جو بائیڈن نے 28جون پیر کے روز اسرائیلی صدر ریوین ریولن سے وائٹ ہاوس میں ملاقات کی اور ایران پر اپنے سخت موقف کا اعادہ کرتے ہوئے کہاا گرچہ ان کی انتظامیہ 2015کے جوہری معاہدے میں شمولیت کے لیے کوشاں ہے تاہم وہ ایران کو جوہری ہتھیاروں سے باز رکھنے کے لیے پر عزم ہیں،اوول آفس میں اسرائیلی صدر ریولن کے پاس بیٹھے ہوئے امریکی صدر جو بائیڈن نے کہا، میں آپ کو جو بتا سکتا ہوں وہ یہ ہے کہ میری نگرانی میں ایران کبھی بھی جوہری ہتھیار حاصل نہیں کر سکتا،امریکی صدر نے ایران کے ساتھ جوہری معاہدے پر ہونے والی بات چیت کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ابھی، ان امور پر فیصلے میں ابھی کافی وقت ہے،سن 2015میں اوباما انتظامیہ کے دور میں ایران کے ساتھ ایک جوہری معاہدہ طے پا یا تھا جو مشترکہ جامع لائحہ عمل یا (جے سی پی او اے )کے نام سے جانا جاتا ہے۔ لیکن امریکا کے سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے سن 2018میں اس معاہدے سے امریکا کو یکطرفہ طور پر الگ کر لیا تھا اور ایران پر دوبارہ سخت پابندیاں عائد کر دی تھیں، اب یورپی ممالک کی مدد سے امریکا اس معاہدے میں دوبارہ شامل ہونے کی کوشش کر رہا ہے،اسرائیلی صدر نے جو بائیڈن سے ملاقات کے بعد صحافیوں سے بات چیت میں کہا کہ وہ ایران سے متعلق امریکی صدر کے بیان سے مطمئن ہیں اور دونوں ملکوں کو تعاون کرنے کی ضرورت ہے،انہوں نے بائیڈن سے کہا دنیا میں امریکا سے عظیم اسرائیل کا کوئی دوست نہیں ہے،اسرائیل کے صدر کے طور پر ریولن کا یہ آخری دورہ امریکا ہے کیونکہ نو جولائی سے جیوش ایجنسی کے چیئرمین اسحاق ہرزوگ عہدہ صدارت پر فائز ہورہے ہیں،اسرائیل کے صدر کے طور پر ریولن کا یہ آخری دورہ امریکا ہے کیونکہ نو جولائی سے جیوش ایجنسی کے چیئرمین اسحاق ہرزوگ عہدہ صدارت پر فائز ہورہے ہیں، امریکی صدر کا کہنا تھا کہ انہیں امید ہے کہ بہت جلد اسرائیل کے نئے وزیر اعظم نیفتالی بینٹ سے ان کی ملاقات ہو گی،اس سے قبل وائٹ ہاس کی ترجمان جین ساکی نے بتایا تھا کہ فریقین اس ملاقات کے لیے ایک مناسب تاریخ پر بات چیت کر رہے،دائیں بازو کے سخت گیر یہودی قوم پرست رہنما نے 13جون کو اسرائیلی وزارت عظمی کا عہدہ سنبھالا تھا، انہیں ان کی مخلوط حکومت میں شامل اعتدال پسند، بائیں بازو اور عرب جماعت کی حمایت حاصل ہے، اس سے قبل ان کے پیش رو بینجمن نیتن یاہو 15برس تک وزیر اعظم رہے تھے۔

شیئر کریں

Top