خورشید شاہ کو رہا نہ کیا گیا تو خنجراب سے سیاچن تک بھرپور احتجاج ہوگا:مہدی شاہ

g10-1-scaled.jpg

پیپلزپارٹی کے رہنما ؤں اور جیالوں کو ہمیشہ سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جاتا رہا ہے مگر اسکے باوجود کبھی سر نہیں جھکایا، خورشید شاہ گلگت بلتستان کے محسن ہیں ہم انکے شانہ بشانہ کھڑے ہیں
گلگت بلتستان میں حکومت نام کی کوئی چیز نظر نہیں آرہی، وزیر اعلی، گورنر اور وزرا کو کچھ نہیں آتا، لوگوں کو صرف گلے لگانے سے مسائل حل نہیں ہوتے ،مہدی شاہ ودیگر کا مظاہرے سے خطاب
سکردو (بیورو رپورٹ)پیپلز سیکرٹریٹ سکردو اور حلقہ دو گمبہ میں پاکستان پیپلزپارٹی کے سینئر رہنما سید خورشید شاہ کی رہائی کیلئے احتجاجی مظاہرہ کیا گیا جس سے سابق وزیر اعلی سید مہدی شاہ، عمران ندیم، خورشید شاہ رہائی کمیٹی کے مرکزی صدر میر گاجو ملاح، مرزا حسن، عبداللہ حیدری، محمد بشیر، بشارت ایڈووکیٹ اور جانثاران بلاول بھٹو کے صدر حسن پاشا نے خطاب کیا۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سابق وزیر اعلی سید مہدی شاہ نے کہا کہ سید خورشید شاہ کا گلگت بلتستان سیلف گورننس آرڈیننس 2009 میں
اہم کردار رہا ہے وہ گلگت بلتستان کے محسن ہیں ہم انکے شانہ بشانہ کھڑے ہیں گلگت بلتستان میں حکومت نام کی کوئی چیز نہیں وزیر اعلی، گورنر اور وزرا کو کچھ نہیں آتا لوگوں کو صرف گلے لگانے سے انکے مسائل حل نہیں ہوتے بلکہ عملی کام کرنا پڑتے ہیں۔ بجلی کی کمی پوری کرنے کیلئے جہاد کی نہیں بلکہ بجلی گھروں کی ضرورت ہوتی ہے پیپلزپارٹی کے رہنما ؤں اور جیالوں کو ہمیشہ سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جاتا رہا ہے مگر اسکے باوجود انہوں نے کبھی سر نہیں جھکایا۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے عمران ندیم، میر گاجو ملاح اور دیگر نے کہا کہ سید خورشید شاہ کو بدترین سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جارہا ہے عمران نیازی نے کنٹینر میں کھڑے ہو کر کہا تھا کہ جب مہنگائی بڑھ جائے، پیڑول مہنگا ہو جائے، ڈالر کی قیمت بڑھ جائے تو وزیر اعظم چور ہوتا ہے۔ آج وقت نے ثابت کیا کہ عمران نیازی خود سب سے بڑا چور ہے۔ بہت جلد عمران نیازی بھاگ جائے گا۔ گلگت بلتستان میں بھی کٹھ پتلیوں کو جمع کر کے زبردستی حکومت بنائی گئی لیکن یہ لوگ اپنی جیب بھرنے کے علاہ کچھ نہیں کر سکتے۔ سید خورشید شاہ کو اگر رہا نہیں کیا گیا تو خنجراب سے سیاچن تک بھرپور احتجاج ہوگا یہاں تک کہ ہم ڈی چوک پر دھرنا دینے کے لئے بھی تیار ہیں۔
پیپلز پارٹی

شیئر کریں

Top