بلتستان میںمنشیات کی روک تھام کیلئے کمیٹیاں تشکیل دی جائیں(غلام رسول)

سکردو (بیورو رپورٹ )امام جمعہ والجماعت جامع مسجد صوفیہ نوربخشیہ قاری غلام رسول ربانی نے کہا ہے کہ پرامن بلتستان میں منشیات کی لت کو جڑ سے ختم کرنے کے لیے معاشرے کو ہر فرد کو اپنا کردار ادا کرنا ہو گا۔جمعے کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے انھوں نے کہا منشیات تمام جرائم کی جڑ ہے، منشیات کے بڑھتے رجحان پر قابو پانے کی اشد ضرورت ہے۔اور جو نوجوان اس خطرناک لت میں مبتلا ہو رہے ہیں انھیں باز رکھنے کے لیے ٹھوس اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے۔اس سلسلے میں انتظامیہ نے انسداد منشیات کی مہم شروع کر رکھی ہے جو کہ قابل ستائش ہے، تاہم انتظامیہ سنجیدگی سے اگاہی مہم کے لیے ٹھوس اور موئثر اقدامات کرے تو منشیات کی روک تھام کو ممکن بنایا جا سکتا ہے۔ لیکن حکومت کے ساتھ ساتھ علما، سول سوسائٹی، سیاستدان، علاقہ عمائدین،اساتذہ، کو بھی آگے آ کر اگاہی مہم کو تیز کرنا ہو گا، انھوں نے کہا منشیات کی روک تھام کے لیے علاقائی سطح پر کمیٹیاں تشکیل دی جائیں اور خصوصی طور پر نوجوان نسل پر گہری نظر رکھی جائے ۔انھوں نے کہا بلتستان ایک پر امن علاقہ ہے یہاں کا امن، ادب ،بھائی چارگی، اپنی مثال آپ ہے، لیکن ضرورت اس امر کی ہے کہ امن امان کو برقرار رکھنے کے لیے ہر کوئی اپنا اپنا کردار ادا کرے ۔ انھوں نے کہا منشیات کے بھیلائو روک تھام اور اس سے متعلق آگاہی فراہم کرنے کیلئے تعلیمی اداروں کے اساتذہ، والدین اور خصوصا نوجوانوں کی توجہ اس جانب مرکوز کرانا منفی اثرات کے بارے میں آگاہی دینا وقت کی اہم ضرورت ہے۔انھوں نے مطالبہ کیا کہ چیک پوسٹوں پر منشیات کی روک تھام کے لیے چیکنگ سخت کی جائے علاوہ ازیں ملوث افراد کے خلاف سخت کارروائی کی جائے ۔

شیئر کریں

Top