سندھ کی آدھی گیس توپائپ میں ڈالنے کے قابل نہیں ہوتی،حماد اظہر

12345-73.jpg

اسلام آباد(ویب ڈیسک) وفاقی وزیرتوانائی حماد اظہرکا کہنا ہے کہ سندھ کی آدھی گیس توپائپ میں ڈالنے کے قابل نہیں ہوتی۔اسلام آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب میں وزیرتوانائی حماد اظہرنے کہا کہ سندھ حکومت سندھ کارڈکھیل رہی ہے۔سندھ کی آدھی گیس توپائپ میں ڈالنے کے قابل نہیں ہوتی۔ سندھ سے نکلنے والی گیس سندھ میں ہی استعمال ہوتی ہے۔حماداظہرنے کہا کہ ہمارے لوگوں کی آمدنی میں اضافہ نہیں ہوسکا۔ سن 1960 کے بعد معیشت مفلوج ہوچکی تھی۔ حکومت نے 3 سال میں بنیادی اصلاحات کی ہیں۔ ملک میں صنعتوں اوربرآمدات کوفروغ ملا ہے۔حماد اظہرکا کہنا تھا کہ گورنراسٹیٹ بینک کوہٹانے کا اختیاروفاقی حکومت کے پاس ہوگا۔ اسٹیٹ بینک کے تمام اثاثے حکومت کی ملکیت رہیں گے۔وفاقی وزیرنے کہا کہ پرویز خٹک ہمارے بڑے ہیں ان کو بولنے کا حق ہے۔ گیس کنکشن کے معاملے پر پرویز خٹک کو بریفنگ دی جس کے بعد وہ مطمئن ہوئے۔پرویز خٹک نے بطور عوامی نمائندہ اپنے حلقے میں گیس کا معاملہ اٹھایا تھا۔حماداظہرنے مزید کہا کہ یوریا کی کمی کا مسئلہ طلب میں اضافے کی وجہ سے پید ا ہوا۔انہوں نے کہا کہ ہم نیبجلی کی پیداوارکیبجائیترسیل پرتوجہ دی۔ آئی پی پیزکیساتھ دوبارہ مذاکرات کییگئیجس سیبہتری آئی۔ ایکس چینج ریٹ کے ہیرپھیرنے معیشت کونقصان پہنچایا۔پاکستان نے کم عرصے میں فیٹف کے27 میں سے26 نکات پرعملدرآمد کیا۔حماد اظہرکا کہنا تھا کہ ہمارے لوگوں کی آمدنی میں اضافہ نہیں ہوا۔

شیئر کریں

Top