2023 میں پاکستان و جی بی میں بیک وقت انتخابات ہونگے، شمس الحق

shmas.jpg

استور(رفیع اللہ خان آفریدی) 23مارچ کو گلگت بلتستان عبوری صوبہ بن جائیگا اور صوبے کے اعلان کے ساتھ ہی گلگت بلتستان میں مئی میں قومی اسمبلی کے ضمنی انتخابات ہونگے جو بھی قومی اسمبلی کی نشستیں جی بی کے حصے میں آ ئیں گی اسی سال مئی میں ا ن پرالیکشن ہوگا اور عبوری صوبے کے بعد جی بی کونسل ختم ہو جائیگا 2023 میں پاکستان کے ساتھ ہی بیک وقت گلگت بلتستان میں انتخابات ہونگے پہلے سے موجود ایک بھی اشیا پر سبسڈی کو ختم نہیں کیا جارہا ہے ان خیالات کا اظہار شمس الحق لون نے روزنامہ بادشمال سے خصوصی بات کرتے ہوئے کیا انہوں نے مزید کہا کہ خالد خورشید اور انکی ٹیم کی اقتدارکی ڈھائی سال کی قربانی کوسنہرے حروف میں لکھاجائیگا ہماری اپوزیشن کی سیاسی جماعتوں کا کرداربھی اہم رہا تاریخی ترقیاتی پیکج کے ساتھ وزیر اعظم عمران کی گلگت بلتستان کی عوام کے ساتھ ذاتی دلچسپی ،تاریخی معاشی پیکج اور سب سے بڑا جی بی کے عوام کا دیرینہ مطالبہ عبوری صوبہ عظیم کارنامہ ہے 70 سالوں کے بعد جی بی کی عوام کو شناخت مل رہی ہے کیونکہ عبوری صوبے کے اعلان کے بعد آئین کے مطابق 60 دنوں تک ضمنی انتخابات کرانا ہوتا ہے لہذا مئی میں گلگت بلتستان میں قومی اسمبلی کے انتخابات ہونگے وزیر اعظم پاکستان کے ویثرن کے مطابق وزیر اعلی گلگت بلتستان خالد خورشید اور انکی ٹیم کی طرف سے عملی اقدامات کرتے ہوہے جی بی کی تاریخ میں پورے صوبے کے اندر سرمائی سیاحت کی سرگرمیاں اس وقت بھی عروج پر ہیں جسکی وجہ سے جی بی کے اندر سرمائی سیاحت کو فروغ حاصل ہونے کے ساتھ لوگوں کی معاشی صورت حال بہت زیادہ بہتر ہوئی خاص کر ان علاقوں میں جہاں پر سخت سردی اور برفباری کی وجہ سے نہ صرف لوگ گھروں کے اندر محصور رہتے تھے بلکہ سردیوں کے چار سے پانچ ماہ بالکل بھی امدان کے وسائل موجودنہیں ہوتے تھے اس مرتبہ پہلی مرتبہ نہ صرف سرمائی سیاحت عروج پر ہے بلکہ تمام سیاحتی مقامات تک تمام رابطے بحال لوگ خوب لطف اٹھانے کے ساتھ روزگار بھی کما رہے ہیں جن عوام کی وجہ سے ہمیں عزت ملی ہے ان عوام کے حقوق تعمیر اور ترقی کے لیے جس بھی قسم کی قربانی دینی ہوگی ہم ایک منٹ بھی دریغ نہیں کرینگے۔

شیئر کریں

Top