سونے کی قیمت میں ہزاروں روپے کی کمی

1234-20.png
کراچی(ویب ڈیسک)بین الاقوامی بلین مارکیٹ میں فی اونس سونے کی قیمت 5ڈالر کے اضافے سے 1733 ڈالر کی سطح پر پہنچنے کے باوجود مقامی صرافہ مارکیٹوں میں منگل کو فی تولہ اور دس گرام سونے کی قیمتوں میں بالترتیب 5100 روپے اور 4372 روپے کی کمی واقع ہوئی۔
تفصیلات کے مطابق آئی ایم ایف پروگرام کی منظوری اور ڈالر کی تنزلی سے سونے کی مقامی قیمتوں میں کمی کا رجحان غالب ہوگیا۔
کمی کے نتیجے میں کراچی، حیدرآباد، سکھر، ملتان، لاہور، فیصل آباد، راولپنڈی، اسلام آباد، پشاور اور کوئٹہ کی صرافہ مارکیٹوں میں فی تولہ سونے کی قیمت گھٹ کر 140500روپے اور فی دس گرام سونے کی قیمت بھی گھٹ کر 120456روپے کی سطح پر آگئی۔
اسی طرح فی تولہ چاندی کی قیمت 10روپے گھٹ کر 1520روپے اور دس گرام چاندی کی قیمت 8.57روپے گھٹ کر 1303.15روپے کی سطح پر آگئی۔

درآمدی پابندی کے باعث فوڈ انڈسٹری کو پرزہ جات منگوانے میں مشکلات کا سامنا

123-190.jpg

کراچی(ویب ڈیسک)فوڈ پراسیسنگ انڈسٹری کو درآمدی پابندی کے باعث پلانٹ پرزہ جات بیرون ملک سے منگوانے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔
فوڈ پراسیسنگ انڈسٹری کو پلانٹ مشینری کے پرزہ جات کی قلت کا سامنا ہے جس سے غذائی اشیاء کی کمی اور ایکسپورٹ متاثر ہونے کا خطرہ پیدا ہورہا ہے۔
پاکستان فروٹ اینڈ ویجیٹل ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن کے سرپرست اعلی وحید احمد کے مطابق ایچ ایس کوڈ 84/85 کے تحت درآمد کئے گئے اسپیئر پارٹس کی کلیئرنس نہ ہونے کی وجہ سے انڈسٹری کو پیداوار جاری رکھنے میں مشکلات کا سامنا ہے۔
وحید احمد کا کہنا ہے کہ حکومت نے فوری طور پر اسپیئر پارٹس کی کلیئرنس اور درآمد کی اجازت نہ دی تو فوڈ پراسیسنگ یونٹس بند ہونے کا خدشہ ہے،فوڈ پراسیسنگ انڈسٹری ملکی ضرورت پوری کرنے کے ساتھ ایکسپورٹ بھی کرتی ہے زرمبادلہ کی معمولی بچت کے لیے فوڈ پراسیسنگ انڈسٹری کو داؤ ہر نہ لگایا جائے ۔پورٹ پر رکے ہوئے درآمد کردہ اسپیئر پارٹس کی فوری کلیئرنس کی اجازت دی جائے۔

آئی ایم ایف پروگرام کی بحالی سے ڈالر کی پرواز تھم گئی

123-190.jpg

کراچی(ویب ڈیسک)آئی ایم ایف سے 6 ماہ کے طویل انتظار کے بعد قرض پروگرام کی منظوری کے ساتھ رواں ہفتے ہی چھٹی اور ساتویں قسط کے اجرا سے دو ہفتوں سے جاری ڈالر کی پرواز ایک بار پھر رک گئی جس سے انٹربینک میں ڈالر 221 روپے سے نیچے آگیا جبکہ اوپن مارکیٹ میں 222 روپے کی سطح پر آگیا۔
انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر کی قدر 1 روپے 79 پیسے کی کمی سے 220 روپے 12 پیسے کی سطح پر بند ہوئی جبکہ اوپن کرنسی مارکیٹ میں ڈالر کی قدر 8روپے 50پیسے کی کمی سے 222روپے کی سطح پر بند ہوئی۔
ایکسچینج کمپنیز ایسوسی ایشن کے چئیرمین ملک بوستان نے کہا ہے کہ بھارت بنگلہ دیش اور افغانستان کی کرنسیوں کی قدر ڈالر کے مقابلے میں بالترتیب 80روپے 95روپے اور 90روپے ہے۔
مقامی ایکس چینج کمپنیز نے مشترکہ حکمت عملی کے تحت ڈالر کی قدر کو مرحلہ وار بنیادوں پر 180روپے تک نیچے لانے کا ہدف مقرر کیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ آئی ایم ایف سے قسط کی پاکستان منتقلی کے ساتھ ڈالر کی قدر 210روپے کی سطح پر آجائے گی جسکے بعد دوست ممالک سے تقریبا 30ارب ڈالر کا فنڈ موصول ہونے کے نتیجے میں ڈالر کی قد 200روپے اور بعدازاں 180روپے کی نچلی سطح پر آجائے گی۔
دوسری جانب بازار حصص میں بھی تیزی کا رجحان دیکھنے میں آیا۔ پاکستان اسٹاک ایکس چینج میں 318پوائنٹس کی تیزی رہی۔ 100 انڈیکس بڑھ کر 42823پوائنٹس کی سطح پر آگیا۔
واضح رہے کہ عالمی مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) بورڈ نے پاکستان کے ساتویں اور آٹھویں اقتصادی جائزے اور اسٹاف سطع کے معاہدے کے ساتھ 1.17 ارب ڈالر کی اگلی قسط کی بھی منظوری دیدی ہے۔

عالمی مارکیٹ میں کمی کے باوجود ملکی سطح پر سونے کی قیمت بڑھ گئی

123-173.jpg

کراچی(ویب ڈیسک)بین الاقوامی بلین مارکیٹ میں فی اونس سونے کی قیمت 5 ڈالر کی کمی سے 1747 ڈالر کی سطح پر پہنچنے کے باوجود مقامی صرافہ مارکیٹوں میں بھی ہفتے کو فی تولہ اور 10 گرام سونے کی قیمتوں میں بالترتیب 200 روپے اور 171 روپے کا اضافہ ہوگیا۔
نتیجے میں ملکی سطح پر فی تولہ سونے کی قیمت بڑھ کر ایک لاکھ 42 ہزار 600 روپے اور فی 10 گرام قیمت بڑھ کر ایک لاکھ 22 ہزار 256 روپے کی سطح پر آگئی۔
اس کے برعکس فی تولہ چاندی کی قیمت بغیر کسی تبدیلی کے 1540 روپے پر مستحکم رہی۔

ازبکستان سے بھی ٹرک ڈرائیورز کو چھ ماہ کے ویزا کا معاہدہ کیا جائیگا، وزیر تجارت

123-172.jpg

اسلام آباد(ویب ڈیسک) وزیر تجارت نوید قمرنے کہا ہے کہ جلد افغانستان کی طرح ازبکستان کے ساتھ بھی ٹرک ڈرائیورز کو چھ ماہ کا ویزا جاری کرنے کا معاہدہ کرلیا جائے گا۔
وزیر تجارت سید نوید قمر نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ پاک افغان تجارتی معاہدے میں دونوں ممالک ایک دوسرے کے ٹرک ڈرائیورز کو چھ ماہ کا ویزا دیں گے جس سے سامان کی ترسیل میں آسانی ہوگی۔
نوید قمر نے کہا کہ سامان کی ترسیل کے لیے پاکستان ازبکستان کے ساتھ بھی معاہدہ کرنے جا رہا ہے، ازبکستان کے ساتھ ٹرک ڈرائیورز کو چھ ماہ کا ویزا جاری کرنے کا معاہدہ کیا جائے گا، ٹرک نہ صرف افغانستان بلکہ ازبکستان بھی آ اور جا سکیں گے۔
انہوں نے بتایا کہ ٹرکوں کو واہگہ بارڈر کراس کرنے کی اجازت دینے کی ڈیمانڈ بھی آتی ہے لیکن ہندوستان کے ساتھ سیاسی تعلقات ایسے نہیں کہ اجازت دی جائے، ہندوستان کے ساتھ حالات معمول پر آگئے تو ان معاملات پر غور کیا جاسکتا ہے، تعلقات میں بہتری کی صورت میں ہی سارک تجارت سمیت دیگر معاملات پر بات ہوسکتی ہے۔

انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر، پاؤنڈ، یورو، ریال کی قدر میں کمی

123-171.jpg

کراچی(ویب ڈیسک)انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر، پاؤنڈ، یورو، ریال کی قدر میں گزشتہ ہفتے کمی ہوئی جبکہ اوپن مارکیٹ میں ان کرنسیوں کی قدر میں اضافہ ہوگیا۔
پاکستان کی جانب سے آئی ایم ایف کو اظہار آمادگی کے خط کا جواب دینے اور 29اگست آئی ایم ایف ایگزیکٹو بورڈ اجلاس میں پاکستان کے لیے ایکسٹینڈڈ فنڈ کی سہولت کے تحت ساتواں اور آٹھواں مشترکہ جائزہ لینے کی خبروں سے انٹربینک میں ڈالر کی تنزلی ہوئی۔
ہفتہ وار کاروبار میں ڈالر کے انٹربینک ریٹ اتارچڑھاؤ کے بعد گھٹ کر 215 روپے سے بھی نیچے آگیا جبکہ اسکے برعکس اوپن ریٹ ڈالر کی قدر بڑھ کر 218 روپے پر آگیا۔
اسی طرح برطانوی پاؤنڈ کے انٹربینک ریٹ 6.43 روپے گھٹ کر 255.86 روپے ہوگئے جبکہ اوپن مارکیٹ میں برطانوی پاؤنڈ کی قدر 2 روپے بڑھ کر 262 روپے ہوگئی۔
انٹربینک میں یورو کرنسی کی قدر 5.14 روپے گھٹ کر 216.66 روپے ہوگئی جبکہ اوپن مارکیٹ میں یورو کی قدر 1 روپے بڑھ کر 220 روپے ہوگئی۔
انٹربینک میں ریال کی قدر 21 پیسے گھٹ کر 57.15 روپے ہوگئی جبکہ اوپن مارکیٹ میں ریال کی قدر بغیر کسی تبدیلی کے 56.70 روپے پر مستحکم رہی۔
آئی ایم ایف سے رواں ماہ قسط کا اجراء یقینی ہونے سے انٹربینک مارکیٹ میں روپیہ مضبوط ہوا، بیرونی ادائیگیوں کے دباؤ سے بعض کاروباری سیشنز میں ڈالر کی قدر میں اضافہ بھی ہوا لیکن ملکی طویل دورانئیے کے بعد زرمبادلہ کے ذخائر بڑھنے سے روپیہ پر اعتماد بحال ہوا۔
بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کی ترسیلات زر کو قانونی چینل سے آمد بنانے کے حکومتی اقدامات سے انٹربینک میں ذرمبادلہ کی ڈیمانڈ سپلائی یکساں ہوئی جبکہ سعودی عرب کی تین ارب ڈالر کا قرض رول اوور کرنے اور پاکستان کی ادائیگیوں کی استعداد بڑھنے سے روپیہ تگڑا ہوا۔
آئی ایم ایف کا مزید 2.8ارب ڈالر کا قرض کے لیے سعودی حکام کے ساتھ ہونے والے اجلاس سے اعتماد بڑھا جبکہ خام تیل ودیگر کموڈٹیز کی عالمی قیمتیں گھٹنے سے درآمدی بل مزید گھٹنے کے توقعات سے بھی انٹربینک میں روپیہ مضبوط ہوا۔

33 کیٹگریز کے 860 اشیا کی درآمد پرپابندی ختم کرنے کی منظوری

123-153.jpg
 اسلام آباد(ویب ڈیسک) کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی نے 33 کیٹگریز کے 860 اشیا کی درآمدپرپابندی ختم کرنے کی منظوری دے دی۔
وفاقی وزیرخزانہ ومحصولات مفتاح اسماعیل کی زیرصدارت ہونے والے ای سی سی کے اجلاس کے شرکا کوبتایا گیا کہ ایل این کی درآمد کے ڈھانچہ کو متنوع بنانے اور نئے ایل این جی ٹرمینلز میں غیرملکی ونجی سرمایہ کاری کی حوصلہ افزائی کیلئے ایل این جی پالیسی 2011 کے آرٹیکل 6.2 اے میں ترمیم کرنے کی منظوری بھی دیدی گئی۔
اجلاس کوبتایا گیا کہ تجارتی شراکت داروں کی جانب سے اس پابندی پرسنجیدہ تحفظات کااظہارکیا گیا ہے جبکہ اس سے ملکی ریٹیل کی صنعت کو رسد کے حوالہ سے مسائل پیدا ہوئے ہیں ای سی سی نے ان تمام اشیاء سے پابندی ہٹانے کی منظوری دیدی ای سی سی نے 30 جون کے بعد اور31 جولائی تک روکے جانیوالی کنسائنمنٹس کو سرچارج کی ادائیگی کے ساتھ جاری کرنے کی سفارش بھی کی۔
اجلاس میں وزارت توانائی (پیٹرولیم ڈویڑن) کی جانب سے ایل این جی پالیسی 2011 کے تحت نئے ایل این جی ٹرمینلز کو تھرڈ پارٹی ایکسس سے استثنیٰ کیلئے ترامیم سے متعلق سمری پیش کی گئی۔  اجلاس کوبتایا گیا کہ ملک میں گیس کی طلب اوررسدمیں خلیج بڑھ رہاہے جس کی وجہ سے گیس کی لوڈمنیجمنٹ کی جارہی ہے۔
شرکا کو بتایا گیا کہ اس سے ملک میں اقتصادی سرگرمیوں پراثرات مرتب ہورہے ہیں، ای سی سی نے ان مقاصدکے حصول کیلئے ایل این جی پالیسی 2011 ل کے آرٹیکل 6.2 اے میں ترمیم کرنے کی منظوری دیدی۔ اجلاس میں وزارت قومی غذائی تحفظ وتحقیق کی جانب سے یوٹیلیٹی اسٹورز کارپوریشن کیلئے 3 لاکھ میٹرک ٹن گندم مختص کرنے سے متعلق سمری پیش کی گئی۔
ای سی سی نے وزارت قومی غذائی تحفظ وتحقیق کو انسیڈینٹل چارجز اوروزارت خزانہ سے رائے لینے کے بعد سمری دوبارہ پیش کرنے کی ہدایت کی۔

ڈالر اوپن مارکیٹ میں 218روپے کا ہوگیا

123-152.jpg
 کراچی(ویب ڈیسک)کاروباری ہفتے کے اختتام پر اوپن کرنسی مارکیٹ میں ڈالر کی قدر ایک روپے کی کمی سے 218روپے ہوگئی،انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر30پیسے کمی کے بعد 214.65روپے کا ہوگیا۔
 جمعہ کو دوبارہ ڈالر تنزلی سے دوچار ہوا جس سے ڈالر کا اوپن مارکیٹ ریٹ 219روپے سے نیچے آگیا۔ کاروبار کے بیشتر دورانئیے میں انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر کی قدر میں اضافہ دیکھا گیا اور ایک موقع پر ڈالر کے انٹربینک ریٹ بڑھکر 215.50روپے کی سطح پر بھی پہنچ گئے، تاہم کاروبار کے اختتام پر انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر کی قدر 30پیسے کی کمی سے 214.65روپے  اور اوپن کرنسی مارکیٹ میں  ڈالر کی قدر ایک روپے کی کمی سے 218روپے ہوگئی۔
ماہرین کا کہنا ہے کہ پاکستان کی جانب سے دیگر شرائط پوری کرنے کے ساتھ آئی ایم ایف کی جانب سے بھیجے گئے اظہار آمادگی کے خط پر دستخط کرکے واپس بھیجنے کے آخری مرحلے کے نتیجے میں رواں ماہ کے اختتام پر قسط جاری ہونے کی توقعات سے بھی روپیہ استحکام کی جانب گامزن ہے۔
اسٹیٹ بینک کی جانب سے ترسیلات زر کی بیرونی ممالک سے منگوانے کے لیے ایکس چینج کمپنیوں کو تجارتی بینکوں کے سب ایجنٹ بنانے کے احکامات سے ملک میں قانونی چینل سے ذرمبادلہ کی ترسیلات کی آمد بڑھنے کے امکانات اور حکومت کی پانچ سالہ مدت کے لیے گورنر اسٹیٹ بینک کی تقرری جیسے عوامل بھی ڈالر کی نسبت روپیہ کے استحکام کا باعث بنے۔

جمیل احمد بطور گورنر اسٹیٹ بینک آف پاکستان تعینات

123-151.jpg
 اسلام آباد(ویب ڈیسک) صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے جمیل احمد کی بطور گورنر اسٹیٹ بینک آف پاکستان تعیناتی کی منظوری دے دی۔
صدر مملکت نے یہ منظوری آئین کے آرٹیکل 48 ایک، اور اسٹیٹ بینک آف پاکستان ایکٹ کے سیکشن 11، اے، ایک کے تحت وزیراعظم کی ایڈوائس پر دی۔
وہ اس سے قبل مرکزی بینک کے ڈپٹی گورنر تھے۔
واضح رہے کہ رضا باقر کی مئی 2022 میں مدت ملازمت ختم ہوگئی تھی جس کے بعد مرتضیٰ سید نے قائم مقام گورنر کی حیثیت سے ذمہ داریاں سنبھالیں۔

جولائی میں 2.5 ارب ڈالر کی ترسیلات زر موصول

123-135.jpg

کراچی(ویب ڈیسک)جولائی 2022ء میں کارکنوں کی ترسیلات زر کی مد میں 2.5 ارب ڈالر کی رقوم موصول ہوئیں۔
اسٹیٹ بینک کے مطابق جولائی 2022ء میں کارکنوں کی ترسیلات زر کی مد میں 2.5 ارب ڈالر کی رقوم موصول ہوئیں۔ اس طرح ترسیلات زر نے مسلسل 26 مہینوں تک 2 ارب ڈالر سے زائد کی ریکارڈ آمد کا تسلسل برقرار رکھا ہے۔
نمو کے لحاظ سے جولائی 2022 ء کے دوران ترسیلات زر میں ماہ بہ ماہ بنیادوں پر 8.6 فیصد اور سال بسال بنیادوں پر 7.8 فیصد کمی ہوئی۔ یہ کمی بڑی حد تک جولائی میں عید کے سبب کاروباری دنوں کی کم تعداد کی عکاس ہے جو 17 رہے، جبکہ اس سے پچھلے مہینے میں کاروباری دنوں کی تعداد 22 دن اور جولائی 2021ء میں 18 رہی تھی۔
جولائی 2022 ء میں ترسیلات زر کی آمد کے اہم ذرائع میں سعودی عرب (580.6 ملین ڈالر)، متحدہ عرب امارات (456.2 ملین ڈالر)، برطانیہ (411.7 ملین ڈالر) اور امریکہ (254.3 ملین ڈالر ) شامل ہیں۔

Top