افغانستان میں خواتین پر پابندیاں؛ اقوام متحدہ نے متعدد امدادی سرگرمیاں معطل کردیں

123-137.jpg

واشنگٹن: اقوام متحدہ نے افغانستان میں طالبان کی جانب سے خواتین امدادی کارکنوں پر پابندی کے بعد متعدد امدادی سرگرمیاں عارضی طور پر بند کردیے۔ 

الجزیرہ کی رپورٹ کے مطابق اقوام متحدہ کے ایمرجنسی ریلیف کوآرڈینیٹر مارٹن گریفتھس کے ساتھ اقوام متحدہ کی اہم ایجنسیوں اور بین الاقوامی امدادی گروپوں کے سربراہوں نے طالبان سے مطالبہ کیا کہ وہ انسانی ہمدردی کے شعبے میں کام کرنے والی خواتین پر پابندی کو واپس لے اور “خواتین پراسکول، کالج، یونیورسٹی اور عوامی مقامات پر میں جانے پر پابندی لگانے والی تمام ہدایات کو کالعدم قرار دے۔

 جی سیون کا طالبان سے خواتین امدادی کارکنوں پر عائد پابندی فوری ہٹانے کا مطالبہ

 

اقوام متحدہ کے نمائندوں اور امدادی اداروں نے ایک مشترکہ بیان میں کہا کہ “خواتین عملہ افغانستان میں انسانی ہمدردی سے متعلق سرگرمیوں کے ہر پہلو کی کلید ہیں۔”

شیئر کریں

Top