ریسکیو1122نے ہزاروں قیمتی جانوں کوبچایا،ڈی جی

g4-19.jpg

گلگت(بادشمال نیوز)ڈائریکٹر جنرل گلگت بلتستان ایمرجنسی سروسز ریسکیو1122فداحسین نے ریڈیو پاکستان میں اپنے انٹریو میں کہا کہ قران مجید کی صورة المائدہ کی آیت نمبر 32جس کا ترجمہ ہے کہ جس نے ایک انسان کی زندگی بچائی گویا اس نے پوری انسانیت کی زندگی بچائی، گلگت بلتستان ایمرجنسی سروسز ریسکیو 1122کا مشن بھی یہی آیت ہے۔ ریسکیو 1122کا گلگت بلتستان میں قیام کے حوالے سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان پہاڑں ، دریاوں ، گلیشئرز کی سرزمین ہے اور شروع ہی سے یہاں بہت سے حادثات رونما ہوتے تھے مگر کوئی تربیت یافتہ عملہ نہ ہونے کی وجہ سے بہت سی قیمتی جانیں ضائع ہوجاتی تھی اور حادثات میں ذخمیوں کی غلط منتقلی کی وجہ سے بہت سے لوگ زندگی بھر کے لیے معزور ہوجاتے تھے جبکہ آگ بجھانے کے لیے بھی کوئی معقول نظام موجود نہ تھا جس کی وجہ سے لوگوں کی قیمتی املاک کو بہت زیادہ نقصان پہنچتاتھا۔ صوبہ پنجاب کی طرز پر2012میں گلگت اور سکردو میں گلگت بلتستان ایمرجنسی سروس ریسکیو 1122کا قیام عمل میں لایا گیا اور اسکے بعد اب الحمداللہ گلگت بلتستان ایمرجنسی سروسز ریسکیو 1122 گلگت بلتستان کے8 اضلاع گلگت،سکردو، چلاس ، گانچھے ، ہنزہ ،نگر ،استور اورغذرمیں فعال ہے جبکہ بہت جلد ضلع شگر اور کھرمنگ سمیت تحصیل کی سطح تک ریسکیو 1122کو وسعت دی جائیگی۔ گلگت بلتستان ایمرجنسی سروسز ریسکیو 1122کی بنیادی ایمرجنسی سہولیات میں ایمبولینس سروس، آگ بجھانے کی سروس، ریسکیو سروس اور کمیونٹی اوئرنس شامل ہیں۔ گلگت بلتستان ایمرجنسی سروسز ریسکیو 1122 کی کارکردگی کا زکر کرتے ہوئے ڈائریکٹر جنرل نے کہا کہ گلگت بلتستان ایمرجنسی سروسز ریسکیو1122نے 10 سا ل کے عرصے میں مختلف نوعیت کے50ہزار سے زائدا یمرجنسیزمیں ایمرجنسی سہولیات فراہم کیں اور لاکھوںقیمتی انسانی زندگیوں او ر اربوں روپوں کی مالیت کے املاک کو بچانے میں اہم کردار ادا کیا ۔

شیئر کریں

Top