لائبیریا کے چرچ میں ڈکیتوں کا حملہ؛ بھگدڑ مچنے سے 23 افراد ہلاک

1234-85.jpg

مغربی افریقی ملک لائبیریا میں چرچ کی دعائیہ تقریب کے دوران ڈکیتوں کے حملے میں بھگدڑ مچنے سے بچوں اور خواتین سمیت 26 افراد ہلاک ہوگئے ۔غیرملکی خبررساں ادارے اے ایف پی کے ہلاکتوں میں اضافے کا امکان ہے جبکہ واقعہ بدھ اور جمعرات کے درمیان رات کو پیش آیا۔مقامی پولیس کے ترجمان نے بتایا کہ واقعہ دارالحکومت منروویا میں دعائیہ اجتماع میں پیش آیا، متعدد افراد کی حالت تشویش ناک ہے اور ہلاک ہونے والوں میں بچے بھی شامل ہیں۔تقریب میں شریک ایک رہائشی نے بتایا کہ بھگدڑ اس وقت شروع ہوئی جب مسلح افراد کے ایک گروپ نے ڈکیتی کی کوشش میں ہجوم پر حملہ کیا۔موریاس نامی شخص نے بتایا کہ ہم نے ایک گروپ کو کٹ گلاسز اور دیگر ہتھیاروں کے ساتھ ہجوم کی جانب آتے دیکھا، دوڑنے کے دوران کچھ لوگ گر گئے۔خیال رہے کہ لائبیرین اسٹریٹ گینگز کے گروہ جو زوگوس کے نام سے مشہور ہیں، عام طور پر چاقو اور دیگر چھوٹے ہتھیاروں سے ڈکیتی کرتے ہیں۔پولیس کے ترجمان موسی کارٹر نے واقعے کی وجہ بتانے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ تحقیقات جاری ہیں۔ صدر جارج ویہ نے 3 روزہ قومی سوگ کا اعلان کیا اور کہا کہ لائبیرین ریڈ کراس اور ڈیزاسٹر مینجمنٹ ایجنسی کو متاثرین کی مدد کے لیے بلایا گیا ہے۔

شیئر کریں

Top