محکمہ اینٹی کرپشن کے ترجمان نے کہا کہ راولپنڈی رنگ روڈ سکینڈل کی انکوائری شروع کر دی

ring.jpg

انکوائری ٹیم میں قانونی ، تکنیکی اور معاشی ماہرین شامل ہیں ، تحقیقات کے بعد سکینڈل کے حقائق قوم کے سامنے رکھے جائیں گے
لاہور(آئی این پی) محکمہ اینٹی کرپشن کے ترجمان نے کہا کہ راولپنڈی رنگ روڈ سکینڈل کی انکوائری شروع کر دی‘ انکوائری ٹیم میں قانونی ، تکنیکی اور معاشی ماہرین شامل ہیں ، تحقیقات کے بعد سکینڈل کے حقائق قوم کے سامنے رکھے جائیں گے ۔اس سے قبل راولپنڈی رنگ روڈ سکینڈل کی تحقیقات کے لئے پنجاب حکومت نے 3 رکنی فیکٹ فائنڈنگ کمیٹی تشکیل دی تھی جو کمشنر راولپنڈی سید گلزار حسین شاہ، یڈیشنل کمشنر راولپنڈی جہانگیر احمد اور ڈپٹی کمشنر انوار الحق پر مشتمل تھی۔ سید گلزار حسین شاہ کمیٹی کا کنوینئر مقرر کیا گیا تھا۔کمیٹی کو 3 ٹی او آر کے تحت تحقیقات کرنا اور اس سلسلے میں 3 الگ الگ رپورٹس پیش کرنا تھی۔ پہلی رپورٹ میں کمیٹی کو منصوبے میں کمیشن اور رشوت خوری کے الزامات کو ثابت کرنا تھا۔ دوسری رپورٹ میں اس منصوبے میں کی گئی کرپشن کی وجہ بننے والی پالیسی سقم کی نشاندہی کرنا تھی جب کہ تیسری رپورٹ میں راولپنڈی کے لئے ترقیاتی منصوبوں کے حوالے سے تفصیلی تجاویز دینا تھی۔ کمیٹی نے اپنی پہلی رپورٹ تیار کی لیکن اس رپورٹ پر کمیٹی ہی کے ایک رکن سابق ڈپٹی کمشنر انوار الحق نے تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے دستخط سے انکار کردیا۔ جس پر حکومت نے انہیں ناصرف کمیٹی سے نکال دیا بلکہ ان کا تبادلہ بھی کردیا۔ انوار الحق کے تبادلے کے بعد فیکٹ فائنڈنگ کمیٹی عملی چور پر ٹوٹ گئی تھی۔

شیئر کریں

Top