گلگت ،ڈسٹرکٹ ہسپتال میں نر سنگ سٹاف کی غفلت ،مریضہ کی حالت نازک

لگت(سپیشل رپورٹر)ڈی ایچ کیو ہسپتال گلگت میں نرسنگ سٹاف کی مجرمانہ غفلت مریضہ کی حالت تشویش ناک ہوگئی گلاپور سے تعلق رکھنے والی خاتون مسما س کو گزشتہ دنوں زچگی کیس میں ہسپتال میں داخل کیا گیا جہاں پر زچگی کے بعد نرسنگ سٹاف کی طرف ڈرپ میں شامل کرکے لگنے والی انجیکشن کو ڈائریکٹ انجیکٹ کرنے پر مریضہ کی حالت تشویش ناک ہوگئی تین روز سے خاتون بیہوش ہے ورثا کی طرف سے وزیراعلی اور چیف سیکریٹری سے ہسپتال انتظامیہ اور ڈیوٹی سٹاف کی مجرمانہ غفلت پر نوٹس لینے کی اپیل کی ہے بادشمال سے بات کرتے ہوئے متاثرہ خاتون کے اہلخانہ نے بتایا کہ نرسنگ ستاف نے جب انجیکشن کو ڈائریکٹ انجیکٹ کیا تو مریض کے قلب کو شدید تکلیف پہنچنا شروع ہوئی اور چیخنیں کے باوجود انجیکشن لگایا گیاجس کے بعد سے اب تک خاتون بیہوش پڑی ہے انہوں نے بتایا کہ 23 تاریخ خاتون کی زچگی کے بعد ڈاکٹر نے جب ادویات فراہم کی اور ہسپتال ایڈمٹ مریضہ کو ہسپتال کے نرسنگ عملہ نے داکٹر کی طرف سے ایڈوائس کیگئی انجیکشن جو ڈرپ میں شامل کرکے لگائی جانے تھی کو براہ راست مریضہ پر انجیکٹ کیا گیا جس پر مریضہ کے قلب میں شدید تکلیف شروع ہونے پر چیخنے اور چلانے کے باوجود انجیکشن کو مکمل انجیکٹ کیا گیا جس کے بعد خاتون کی حالت غیر ہوگئی اور مریضہ تین روز سے بیہوش پڑی ہے اہلخانہ نے کہا کہ ہسپتال میں ٹریننگ کے لئے آئے ہوئے غیر تربیت یافتہ عملے کو مریضوں کی علاج معالجے پر معمور کیا گیا ہے جس کے باعث مریضوں کو جان کے لالے پڑے ہیں متاثرہ خاتون کیاہلخانہ نے صوبائی وزیر صحت سے انصاف کی فراہمی کا مطالبہ کیا ہے۔

شیئر کریں

Top