سونے کی قیمت ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی

2319054-gold-1651846471-409-640x480-1.jpg

کراچی: عالمی مارکیٹ میں سونے کی قیمت بڑھنے کے بعد پاکستان میں سونے کی قیمت ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی۔
ذرائعکے مطابق بین الاقوامی بلین مارکیٹ میں فی اونس سونے کی قیمت 34 ڈالر کے اضافے سے 1833 ڈالر کی سطح پر پہنچنے کے باعث مقامی صرافہ مارکیٹوں میں منگل کو فی تولہ اور 10 گرام سونے کی قیمتوں میں بالترتیب 1500 روپے اور 1286 روپے کا اضافہ ہوگیا۔
نتیجے میں مختلف شہروں میں فی تولہ سونے کی قیمت بڑھ کر ایک لاکھ 38 ہزار 100 روپے اور فی 10 گرام قیمت بڑھ کر ایک لاکھ 18 ہزار 398 روپے کی سطح پر آگئی۔ اس اضافے کے بعد سونے کی قیمت ایک بار پھر ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی۔
دریں اثنا فی تولہ چاندی کی قیمت 10 روپے بڑھ کر 1570 روپے اور دس گرام چاندی کی قیمت 8.58 روپے بڑھ کر 1346.02 روپے کی سطح پر آگئی۔

مقامی اور عالمی مارکیٹ میں سونے کی قیمت کم ہوگئی

gold-1.jpg

کراچی: کاروباری ہفتے کے آخری روز عالمی مارکیٹ میں سونے کی قمیت میں بڑی کمی واقع ہوگئی۔
بین الاقوامی بلین مارکیٹ میں فی اونس سونے کی قیمت 19 ڈالر کی کمی سے 1897 ڈالر کی سطح پر آگیا جس کے باعث مقامی صرافہ مارکیٹوں میں ہفتہ کو فی تولہ اور 10 گرام سونے کی قیمتوں میں بالترتیب 400 روپے اور 343 روپے کمی واقع ہوئی۔

جس کے نتیجے میں کراچی، حیدرآباد، سکھر، ملتان، لاہور، فیصل آباد، راولپنڈی، اسلام آباد، پشاور اور کوئٹہ کی صرافہ مارکیٹوں میں فی تولہ سونے کی قیمت بڑھ کر ایک لاکھ 32 ہزار روپے اور فی 10 گرام قیمت ایک لاکھ 13 ہزار 169 روپے کی سطح پر آگئی۔
اسی طرح فی تولہ چاندی کی قیمت میں 10 روپے کمی سے 1500 اور 10 گرام چاندی کی قیمت 8.58 روپے کم ہوئی۔

معیشت کی شرح نمو 4 فیصد ہوگئی، وزارت خزانہ

Ministryoffinance.jpg

اسلام آباد: وزارت خزانہ کا کہنا ہے کہ ملک کی معاشی نمو کی شرح 4 فیصد ہوگئی ہے کیونکہ اس وقت ملک کو افراط زر یعنی مہنگائی اور بیرونی شعبہ جات کے دباؤ کا سامنا ہے۔

وزارت خزانہ کے مشاروتی ونگ کی جانب سے جاری معیشت کے ماہانہ جائزہ رپورٹ کے مطابق اپریل کے دوران مہنگائی کی شرح 12 اعشاریہ 5 فیصد ریکارڈ کی گئی ہے اور یہی معیشت کی ترقی کی راہ میں رکاوٹ بن رہی ہے۔

رپورٹ کے مطابق گزشتہ دو ماہ سے معاشی نمو کی رفتار 4 فیصد کے لگ بھگ ہی ہے تاہم معاشی اشاریے اس وقت بھی کافی مضبوط نظر آرہے ہیں۔ وزارت کے مطابق عالمی مارکیٹ میں اشیا کی قیمتوں میں مزید اضافے کے خدشات ہیں جبکہ ملک میں درآمدی اشیا کے مہنگا ہونے اور تیل اور اشیائے خور و نوش کی قیمتوں میں اضافے کے باعث بھی معاشی عدم توازن پیدا ہورہا ہے۔
رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ اپریل کے دوران اشیا اور خدمات کی برآمدات میں اضافے کا رجحان برقرار رہنے کی توقع ہے جبکہ درآمدات اپنی موجودہ سطح پر برقرار رہیں گی جس کے باعث رواں ماہ کے دوران تجارتی خسارہ 3 ارب ڈالر رہنے کا امکان ہے۔

آؤٹ لک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ حالیہ روس یوکرین جنگ سمیت جیو پولیٹیکل کشیدگی بڑھ رہی ہے جس کے باعث تیل اور خوراک کی عالمی قیمتوں مییں پھر اضافہ شروع ہو گیا ہے تاہم رواں مالی سال 2021-22کے پہلے 9 ماہ میں ترسیلات زر 17.1 فیصد اضافے سے 23 ارب ڈالر ریکارڈ کی گئیں جبکہ ملکی برآمدات 26.6 فیصد اضافے سے 23.70 ارب ڈالر اور درآمدات 41.3 فیصد اضافے سے 53.80 ارب ڈالر کی سطح تک پہنچ گئی ہیں۔

اس حوالے سے وزارت خزانہ کی جانب سے جاری کردہ ماہانہ آو’ٹ لک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ رواں مالی سال پہلے 9 ماہ میں براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری 2 فیصد کمی سے 1.28 ارب ڈالر رہی۔ پورٹ فولیو سرمایہ کاری مثبت رجحان کے ساتھ 502 ملین ڈالر ہو گئی۔ مجموعی غیر ملکی سرمایہ کاری مثبت رجحان کے ساتھ 1446 ملین ڈالر تک پہنچ گئی۔زرمبادلہ ذخائر اپریل کے تیسرے ہفتے تک 16.57 ارب ڈالر رہے۔

اسٹیٹ بینک 10 ارب 54 کروڑ ڈالر، کمرشل بینکوں کے ذخائر 6.03 ارب ڈالر رہے۔ ڈالر کی شرح تبادلہ 185.63 روپے فی ڈالر کی سطح پر پہنچ گئی۔ 9 ماہ میں ٹیکس ریونیو 28.9 فیصد اضافے سے 4375 ارب روپے رہا۔ جولائی تا مارچ نان ٹیکس آمدنی 14.3 فیصد کمی سے 1052 ارب رہی۔ جولائی تا مارچ پی ایس ڈی پی کی مد میں 603 ارب روپے منظور کیے گئے۔

جولائی تا مارچ مالیاتی خسارہ بڑھ کر 2566 ارب روپے کی سطح تک پہنچ گیا جبکہ پہلے 9 ماہ میں زرعی قرضے 0.5 فیصد اضافے سے 958 ارب روپے کی سطح پر رہے۔ پہلے 9 ماہ میں مہنگائی کی سالانہ شرح 10.8 فیصد ریکارڈ کی گئی۔

بڑی صنعتوں کی شرح نمو فروری میں 8.6 فیصد رہی۔ بڑی صنعتوں کی شرح نمو جولائی سے فروری کے دوران 7.8 فیصد رہی۔ اسٹاک ایکسچینج انڈیکس 45 ہزار 871 پوائنٹس تک پہنچ گیاہے رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ زرمبادلہ کے ذخائر اپریل کے تیسرے ہفتے تک 16.57 ارب ڈالر رہے۔

حکومت نے سیلز ٹیکس ریفنڈز کی ادائیگی کا نیا طریقہ کار وضع کردیا

2316905-tax-1651259676-610-640x480-1.png

اسلام آباد: وفاقی حکومت نے رجسٹرڈ زرعی ٹریکٹر مینوفیکچررز کو سیلز ٹیکس ریفنڈز کی ادائیگی اور رعایتی سیلز ٹیکس کی سہولت کیلئے نیا میکنزم متعارف کروادیا ہے۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق ریفنڈز کیلئے اہل زرعی ٹریکٹر مینوفیکچررز سٹار اور ریفنڈ کلیمز پراسیسنگ سسٹم کے ذریعئے آن لائن ریفنڈ کلیم جمع کرواسکے گا اور متعلقہ کمشنر ان لینڈ ریونیو کو تمام مطلوبہ دستاویزات کے ہمراہ ریفنڈز کی درخواست جمع کروانا ہوگی۔

 جن ریفنڈ کیسوں میں پراسیسنگ آفیسر کو کسی قسم کا شک ہوگا تو وہ متعلقہ ایڈیشنل کمشنر ان لینڈ ریونیو سے منظوری لے کر ان ریفنڈ کلیمز کے درست

اور جنوئن ہونے کا پتہ چلانے کیلئے آڈٹ کرسکے گا اور  یہ آڈٹ تیس دن کے اندر اندر مکمل کرنا ہوگا۔

اس حوالے سے فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے نوٹیفکیشن جاری کردیا ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ سیلز ٹیکس ریفنڈ کلیم جمع ہونے کے بعد اگر پندرہ دن کے اندر اندر کوئی پری آڈٹ نہیں کیا جاتا تو ایسے کیسوں میں سیلز ٹیکس رولز کے رول 39 ایس کے تحت شروع کی جانیوالی کاروائی ہونے کے بعد سات دن کے اندر اندر اضافی ان پُٹ ٹیکس ریفنڈز کرنا ہوں گے۔

عالمی مارکیٹ میں سونے کی قیمت کم ہوگئی

gold.jpg

کراچی: بین الاقوامی بلین مارکیٹ میں فی اونس سونے کی قیمت 7 ڈالر کی کمی سے 1888 ڈالر کی سطح پر پہنچنے کے باوجود مقامی صرافہ مارکیٹوں میں سونے کی قیمت میں کوئی تبدیلی واقع نہیں ہوئی۔
نتیجے میں ملک کے مختلف شہروں میں سونے کی قیمت ایک لاکھ 32 ہزار روپے اور فی 10 گرام قیمت ایک لاکھ 13 ہزار 169 روپے کی سطح پر برقرار رہی۔
اسی طرح فی تولہ چاندی کی قیمت بغیر کسی تبدیلی کے 1510 روپے کی سطح پر مستحکم رہی۔

عید کی تعطیلات، بینک 4 روز بند رہیں گے

statebank.jpg

کراچی: عید کی تعطیلات میں بینکس اور مالیاتی ادارے 4 روز کے لیے بند رہیں گے۔
اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ ملک بھرمیں عید کی تعطیلات کے لیے بینکس اور مالیاتی ادارے 2 مئی سے 5 مئی تک بند رہیں گے۔
اسٹیٹ بینک نے بینکوں کو عید کی تعطیلات کے دوران آن لائن، موبائل بینکنگ اور اے ٹی ایم سروس کی 24 گھنٹے فراہمی کویقینی بنانے کی ہدایت کی ہے۔
بینکس اورمالیاتی ادارے عید کی چھٹیوں کے بعد جمعہ 6 مئی کو دوبارہ کھلیں گے۔

وفاقی شرعی عدالت کا سود سے پاک بینکاری نظام قائم کرنے کا حکم

ederalshariacourtx.png

اسلام آباد: وفاقی شرعی عدالت نے 19 سال بعد سود کے خلاف دائردرخواستوں کا فیصلہ سناتے ہوئے سود کے لئے سہولت کاری کرنے والے تمام قوانین اورشقوں کوغیرشرعی قراردے دیا۔

وفاقی شرعی عدالت نے 19 سال بعد سود کے نظام کے خلاف دائر درخواستوں کا فیصلہ سنا دیا۔عدالت نے سود کے لئے سہولت کاری کرنے والے تمام قوانین اورشقوں کوغیرشرعی قراردیتے ہوئے حکومت کو سودی نظام کے مکمل خاتمے کیلئے 5 سال کی مہلت دے دی۔

عدالت نے فیصلے میں 31 دسمبر2027 تک تمام قوانین کو اسلامی اور سود سے پاک اصولوں میں ڈھالنے کا حکم دیا۔شرعی عدالت نے انٹرسٹ ایکٹ 1839 اور یکم جون 2022 سے سود سے متعلق تمام شقوں کوغیرشرعی قراردے دیا۔
عدالت نے فیصلے میں کہا کہ معاشی نظام سے سود کا خاتمہ شرعی اورقانونی ذمہ داری ہے۔ ملک سے ربا کا ہرصورت میں خاتمہ کرنا ہوگا۔ ربا کا خاتمہ اسلام کے بنیادی اصولوں میں سے ہے۔

شرعی عدالت کے جسٹس سید محمد انورنے فیصلے میں کہا کہ بینکوں کا قرض کی رقم سے زیادہ وصول کرنا ربا کے زمرے میں آتا ہے۔قرض کسی بھی مد میں لیا گیا ہو اس پر لاگو انٹرسٹ ربا کہلائے گا۔ بینکوں کا ہر قسم کا انٹرسٹ ربا ہی کہلاتا ہے۔ ربا مکمل طور پراور ہر صورت میں غلط ہے۔

عدالت کا کہنا تھا کہ 2 دہائیاں گزرنے کے بعد بھی سود سے پاک معاشی نظام کیلئے حکومت کا وقت مانگنا سمجھ سے بالاتر ہے۔ وفاقی حکومت کی جانب سے سود سے پاک بینکنگ کے منفی اثرات سے متفق نہیں۔سمجھتے ہیں کہ معاشی نظام کو سود سے پاک کرنے میں وقت لگے گا۔

وفاقی شرعی عدالت نے فیصلے میں کہا کہ چین بھی سی پیک کے لئے اسلامی بینکاری نظام کا خواہاں ہے۔ ربا سے پاک نظام زیادہ فائدہ مند ہوگا۔اسلامی بینکاری نظام رسک سے پاک اوراستحصال کے خلاف ہے۔سود سے پاک بینکاری دنیا بھرمیں ممکن ہے۔

عدالت نے حکومت کو اندرونی اوربیرونی قرض سود سے پاک نظام کے تحت لینے کی ہدایت کی اورکہا کہ ڈیپازٹ کو فوری طور پر ربا سے پاک کیا جا سکتا ہے۔ چیف جسٹس وفاقی شرعی عدالت کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے سود کے خلاف جماعت اسلامی اوردیگر کی درخواستوں کی سماعت کے بعد فیصلہ سنایا۔

وزیراعظم نے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کی سمری مسترد کردی

petroل.jpg

سلام آباد: وزیراعظم شہباز شریف نے ملک میں پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کی سمری مسترد کر دی۔
ذرائع کے مطابق وزیراعظم شہباز شریف کو اوگرا کی جانب سے پیٹرولیم مصنوعات میں اضافے کی سمری موصول ہوئی تاہم انہوں نے اسے منظور کرنے کے بجائے مسترد کرتے ہوئے قیمتیں برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔
اس حوالے سے وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ پچھلی حکومت کی نالائقی، نااہلی اور غلطیوں کی سزا عوام کو نہیں دے سکتے، مہنگائی سے پریشان عوام پر مزید بوجھ نہیں ڈال سکتے۔
واضح رہے کہ وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل کی آئی ایم ایف سے ملاقات کے بعد پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا امکان ظاہر کیا جا رہا تھا تاہم وزیراعظم نے اضافے کی سمری مسترد کر دی ہے۔

ملک میں اس وقت پیٹرول 150 روپے فی لیٹر کی قیمت میں فروخت کیا جا رہا ہے جب کہ عالمی منڈی کے تناسب سے پیٹرول کی قیمتیں کہیں زیادہ ہیں۔

عمرہ زائرین کیلئے 60 سے زائد داخلی اور خارجی راستے بنادیئے

12345-231.jpg

ریاض(ویب ڈیسک)سعودی حکومت نے رمضان المبارک میں مسجد الحرام اور نبوی کی توسیع کرتے ہوئے عمرہ زائرین کے لیے 60 سے زائد داخلی اور خارجی راستے بنادیئے۔
مسجد نبوی کے امور کے لیے جنرل پریزیڈنسی کا کہنا ہے کہ رمضان المبارک میں عمرے کے دوران زائرین کو مشکل سے بچانے کے لیے 61 داخلی اور خارجی راستے بنائے گئے ہیں، جن میں 17 تیسری بار مسجد کی توسیع کے لیے بنائے گئے تھے، 23 شاہ فہد اور 7 الماسہ کے علاقے میں اور اجیاد پل گیٹ کی جگہ شامل ہیں۔
جنرل پریزیڈنسی نے ہنگامی انتظامات کے لیے 4 جبکہ دیگر خدمات کیلئے بھی 10 دروازے مختص کیے گئے ہیں۔
تقریبا 330 ملازمین مخصوص دروازوں سے نمازیوں کے داخلے اور باہر نکلنے کے انتظام میں حصہ لیں گے تاکہ نقل و حمل کو یقینی بنایا جاسکے۔ اس کے علاوہ مردوں کے لیے 35 اور خواتین کے لیے 30 نمازی جگہیں تیار کی گئی ہیں۔
مساجد کے امور کے لیے جنرل پریزیڈنسی کے صدر شیخ ڈاکٹر عبدالرحمن السدیس کا کہنا ہے کہ رمضان کے مقدس مہینے کے لیے ایک منصوبے کے تحت نمازیوں اور عمرہ ادا کرنے والوں کے لیے تمام ضروری خدمات فراہم کی جاسکیں۔

سونے کی قیمت میں معمولی اضافہ

12345-229.jpg

کراچی(ویب ڈیسک) سونے کی نرخوں میں کاروباری ہفتے کے چوتھے روز عالمی مارکیٹ میں سونے کی قیمت میں اضافہ ہوا، جس کے باعث مقامی صرافہ بازاروں میں بھی فی تولہ اور دس گرام کے ریٹ میں معمولی اضافہ ہوا۔
بین الاقوامی بلین مارکیٹ میں فی اونس سونے کی قیمت 1 ڈالر کے اضافے سے 1978 ڈالر کی سطح پر پر پہنچنے کے باعث مقامی صرافہ مارکیٹوں میں جمعرات کو بھی سونے کی فی تولہ اور دس گرام کی قیمتوں میں باالترتیب 350روپے اور 300روپے کا اضافہ ہوگیا۔
کراچی، حیدرآباد، سکھر، ملتان، لاہور، فیصل آباد، راولپنڈی، اسلام آباد، پشاور اور کوئٹہ کی صرافہ مارکیٹوں میں فی تولہ سونے فی تولہ سونے کی قیمت بڑھ کر 130700 روپے اور فی دس گرام سونے کی قیمت گھٹ کر 112054 روپے کی سطح پر آگئی۔
دوسری جانب اس کے برعکس فی تولہ چاندی کی قیمت بغیر کسی تبدیلی کے 1520 روپے فی تولہ پر مستحکم رہی اور 10 گرام چاندی کی قیمت بھی بغیر کسی تبدیلی کے 1303.15 روپے کی سطح پر مستحکم رہی۔

Top